Wednesday , July 18 2018
Home / دنیا / شمالی کوریا نے بین شدہ مصنوعات فروخت کیں: اقوام متحدہ

شمالی کوریا نے بین شدہ مصنوعات فروخت کیں: اقوام متحدہ

نیویارک۔ 3 فروری (سیاست ڈاٹ کام)اقوام متحدہ کی ایک خفیہ رپورٹ کے مطابق شمالی کوریا نے ’گمراہ کن طریقوں‘ سے کام لیتے ہوئے سلامتی کونسل کی جانب سے عائد کردہ پابندیوں کے باوجود مختلف ممالک کو اپنی مصنوعات بر آمد کی ہیں۔عالمی مبصرین نے رپورٹ میں کہا ہے کہ شمالی کوریا نے متعدد ممالک کو کوئلہ، اسٹیل، لوہا اور پٹرولیم مصنوعات فروخت کیں، جن پر اقوام متحدہ نے پابندی لگا رکھی تھی۔ علاوہ ازیں میانمار اور شام کی حکومتوں کو ہتھیار بھی فروخت کیے گئے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ان مصنوعات کی برآمد سے پیونگ یونگ حکومت نے 2017 میں 200 ملین ڈالر کا کاروبار کیا۔متعدد خبر رساں اداروں کی نظروں سے گزری 213 صفحات پر مشتمل اس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شمالی کوریا نے کئی ممالک کو کوئلہ فروخت کرتے ہوئے جعلی کاغذات کا استعمال کیا تاکہ اْس کا نام ظاہر نہ ہو سکے۔ ان ممالک میں روس، چین، ویت نام، جنوبی کوریا اور ملائیشیا شامل ہیں۔اقوام متحدہ کے مبصرین کے مطابق شمالی کوریا ’گمراہ کن طریقوں ‘ سے کام لیتے ہوئے وسیع پیمانے پر روایتی ہتھیاروں کی خرید وفروخت کے معاہدوں اور عسکری رازوں کی چوری کی غرض سے سائبر کارروائیوں میں بھی ملوث رہا ہے۔اقوام متحدہ کی اس خفیہ دستاویز میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے ایسی کوئی سیاسی آمادگی دیکھنے میں نہیں آئی جس سے پتہ چلتا کہ پیونگ یانگ حکومت عالمی اقتصادی پابندیوں کو مکمل طور پر پورا کرنے میں سنجیدہ ہے۔عالمی مبصرین کا کہنا ہے کہ میانمار اور شام کے ساتھ مل کر بیلسٹک میزائل تیارکرنے میں بھی شمالی کوریا کے تعاون کے شواہد ملے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT