Monday , May 21 2018
Home / Top Stories / شمالی کوریا کا مزید نیوکلیر یا میزائیل تجربات نہ کرنے کا وعدہ

شمالی کوریا کا مزید نیوکلیر یا میزائیل تجربات نہ کرنے کا وعدہ

صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ سے کم جونگ ان کی مجوزہ بات چیت سے قبل اعلان
سیول ۔ 21 اپریل ۔(سیاست ڈاٹ کام) صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ سے بات چیت سے قبل شمالی کوریا نے اب مزید نیوکلیر یا میزائیل تجربات نہ کرنے کا وعدہ کیا ہے۔ شمالی کوریا کے صدر کم جونگ اِن نے کہاکہ وہ اپنے نیوکلیر تجربات کو روک دیں گے اور انٹر کانٹی نینٹل میزائیل کے تجربے بھی نہیں کریں گے ۔ واشنگٹن نے پیانگ یانگ کی جانب سے اس طرح کے اعلان کی دیرینہ خواہش ظاہر کی تھی ۔ اس طرح شمالی کوریا کا یہ اہم قدم سفارتی تعلقات کی راہ کو مضبوط بناسکتا ہے۔ ایک چوٹی کانفرنس میں جنوبی کوریا کے صدر مون جئے ان سے شمالی کوریائی لیڈر کی ملاقات سے زائد از ایک ہفتہ قبل ہی نیوکلیر تجربات نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ شمالی کوریا کی سرکاری نیوز ایجنسی کے سی این اے کی رپورٹ کے مطابق شمالی کوریا کے لیڈر کم جونگ اَن کا کہنا تھا کہ وہ آج سے ہی اپنے نیوکلیئر تجربات درمیانے فاصلے تک اور بین البراعظمی بالسٹک میزائیل کے تجربات انجام نہیں دیں گے ۔ اس کے علاوہ نیوکلیر مقامات کو بھی بند کردیا جائے گا ۔ کم جونگ ان کے اس فیصلہ کی عالمی برادری نے ستائش کی ہے۔ خاص کر صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا کہ یہ ایک مثبت قدم ہے ۔ امریکی صدر نے مزید کہا کہ شمالی کوریا نے اپنے تمام نیوکلیر تجربات کو ختم کرنے اور اپنے نیوکلیر پلانٹ کو بند کرنے پر رضامندی کا اظہار کیا ہے ۔ ایک ٹویٹ پیام میں ٹرمپ نے لکھا کہ یہ فیصلہ خود شمالی کوریا اور ساری دنیا کے لئے اچھی خبر ہے اور یہاں پیشرفت یہ ہے کہ وہ بہت جلد شمالی کوریا کے لیڈر کے ساتھ چوٹی ملاقات کے خواہاں ہیں۔ یہ فیصلہ خوش آئند ہے کیوں کہ دونوں ممالک شمالی کوریا اور امریکہ کے درمیان چوٹی کانفرنس منعقد کی جانے و الی ہے ۔ سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ واشنگٹن کئی عرصہ سے پیانگ یانگ کے اس اعلان کا خواہاں تھا کہ جزیرہ نما کوریا کے موقف میں تبدیلی آجائے ۔ اس سے سفارتی تعلقات میں اہم پیشرفت ہوگی ۔ چین نے بھی شمالی کوریا کے اس اعلان کا خیرمقدم کیا ہے ۔وزارت خارجہ چین کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے نیوکلیئر تنازعہ کاحل نکالنے کا فیصلہ معیشت کو بہتر بنانے میں معاون ثابت ہوگا ۔ وزیردفاع جاپان نے شمالی کوریا کے اس بیان پر شبہ ظاہر کیا اور کہا کہ انھیں اس بات کا یقین نہیں ہے کیوں کہ کم جونگ ان نے کم فاصلے اور درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے بیالسٹک میزائیلوں کو ختم کرنے کا اعلان نہیں کیا ہے البتہ وزیراعظم جاپان شینزو ابے نے اس فیصلہ کا محتاط طریقہ سے خیرمقدم کیا ۔

TOPPOPULARRECENT