Monday , September 24 2018
Home / دنیا / شمالی کیرولینا کے مسلم خاندان کے مکان پر فائرنگ

شمالی کیرولینا کے مسلم خاندان کے مکان پر فائرنگ

شمالی کیرولینا ۔ 19مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) ایک امریکی مسلمان کے مکان پر منگل کے روز فائرنگ کی گئی جس میں ایک خاتون زخمی ہوئی جس کے بعد وہاں موجود خاندان کے دیگر افراد شدید طورپر خوفزدہ ہوگئے کیونکہ اس واقعہ نے انھیں یہ سوچنے پر مجبورکردیا ہے کہ کیا وہ اپنے مکان میں بھی محفوظ ہیں یا نہیں؟

شمالی کیرولینا ۔ 19مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) ایک امریکی مسلمان کے مکان پر منگل کے روز فائرنگ کی گئی جس میں ایک خاتون زخمی ہوئی جس کے بعد وہاں موجود خاندان کے دیگر افراد شدید طورپر خوفزدہ ہوگئے کیونکہ اس واقعہ نے انھیں یہ سوچنے پر مجبورکردیا ہے کہ کیا وہ اپنے مکان میں بھی محفوظ ہیں یا نہیں؟ اخبار چار لوٹ آبزرور کے مطابق حملہ مشرقی میکلنبرگ کاؤنٹی میں رونما ہوا ۔ عبدل نامی شخص جس کے مکان پر حملہ ہوا ، اُس نے بتایا کہ رات ایک بجے کے قریب فائرنگ کے واقعہ نے اُسے اور اُس کے ارکان خاندان کو خوفزدہ کردیا ۔ فائرنگ کے ذریعہ 18 گولیاں چلائی گئیں۔ تمام گولیاں مکان کی فصیل سے ٹکرائیں تاہم ایک گولی اُس کی خواب گاہ کے شیشے چکنا چور کرتے ہوئے اُس کی اہلیہ کے پیر میں لگی ۔ وہ اُس وقت محو خواب تھی اور چیخ مارکر اُٹھ بیٹھی اُس کے پیر سے خون بہہ رہا تھا اور اُسے فوری قریبی ہاسپٹل میں شریک کیا گیا ۔ آئی سی یو میں فی الحال اُس کی سرجری کی جانے والی ہے ۔ دیگر ارکان خاندان بشمول عبدل ، اُس کی والدہ اور اُس کے دو بچے محفوظ ہیں۔ اُس نے ایک بار پھر سوال کیا کہ آخر ہمارے مکان پر حملہ کیوں کیا گیا ؟ آس پاس دوسرے مکانات بھی ہیں تاہم ایسا لگتا ہے کہ ہمارے مکان پر منصوبہ بند طریقہ سے حملہ کیا گیا ۔ ڈبلیو بی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے اُس نے یہ بات کہی ۔ ہم سب بیحد خوفزدہ ہیں اور یہ سوچ رہے ہیں کہ آخر ہم پر حملہ کرنے والے کون ہوسکتے ہیں۔ اُس نے ایک اہم بات کہی کہ اُس کا خاندان مسلمان ہے ۔ تین ہفتہ قبل جب چیاپل ہل میں فائرنگ ہوئی تھی تو لوگوں نے اُس سے یہی کہا تھا کہ اب اُس کے مکان کو بھی نشانہ بنایا جاسکتا ہے ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اسے منافرت پر مبنی فائرنگ سے تعبیر کیا جائے یا نہیں ، اس کا فیصلہ اُس وقت تک نہیں کیا جاسکتا جب تک حملہ آوروں میں سے کسی ایک کو بھی گرفتار نہ کرلیا جائے ۔ شمالی کیرولینا کے چیاپل ہلز میں تقریباً ایک ماہ قبل تین مسلمان امریکی طلباء کو گولی مارکر ہلاک کردیا گیا تھا۔ ایک حالیہ معاشی سروے میں امریکی شہریوں کا یہ ماننا ہے کہ حالیہ حملوں کے ذریعہ امریکی مسلمانوں کے ساتھ متعصبانہ رویہ اختیار کرتے ہوئے مسلم برداری کو نشانہ بنایا جارہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT