Saturday , May 26 2018
Home / ہندوستان / شمالی ہند میں سردی کی لہر ، ہریانہ میں ایک موت

شمالی ہند میں سردی کی لہر ، ہریانہ میں ایک موت

نئی دہلی ۔ 15 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) شمالی ہند کے کئی علاقے گہری دھند کی گرفت میں ہیں۔ پنجاب، یوپی، راجستھان، ہماچل پردیش اور دہلی میں اقل ترین درجہ حرارت کم ہوچکا ہے۔ ہریانہ میں ایک شخص کی موت واقع ہوئی جو شبہ کیا جاتا ہیکہ سردی میں اضافہ کا نتیجہ تھی۔ نئی دہلی میں سخت سردی تھی۔ درجہ حرارت 7.3 درجہ سلسیس درج کیا گیا جو جاریہ موسم سرما کا اقل ترین درجہ حرارت تھا۔ اعظم ترین درجہ حرارت 19.5 درجہ سلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ کئی مقامات پر ہلکی کہر کی وجہ سے صبح کے اوقات میں حدبصارت متاثر ہوئی۔ نمی 95 اور 93 فیصد کے درمیان تھی۔ مغربی یوپی میں ہلکی بارش اور بعض علاقوں میں کہر کی وجہ سے ریاستی حکومت گورکھپور، فیض آباد، مرادآباد ڈیویژنوں میں سردی کی لہر کا اعلان کرنے پر مجبور ہوگئی۔ مشرقی یوپی علیگڑھ اور مظفرنگر میں موسم خوش تھا۔ اقل ترین درجہ حرارت 7.4 رہا۔ چندی گڑھ میں درجہ حرارت 13 درجہ سلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ شملہ میں اور پڑوسی ریاست ہماچل پردیش کے اکثر مقامات پر شدید سردی تھی۔ ایک نامعلوم شخص جو پولیس کے خیال میں بھکاری تھا، شدید سردی کی وجہ سے امبالا میں فوت ہوگیا۔ اس کی نعش رام باغ شیور مندر کے روبرو آج صبح دستیاب ہوئی۔ شدید سردی پنجاب کے شہروں امرتسر، لدھیانہ، پٹیالہ میں بھی محسوس کی گئی۔ دھند بھرے موسم کی وجہ سے چندی گڑھ انٹرنیشنل ایرپورٹ پر پروازیں گذشتہ 3 دن سے مسلسل یا تو منسوخ کی جارہی ہیں یا تاخیر سے روانہ ہورہی ہیں۔ حد بصارت میں کمی کی وجہ سے پنجاب اور ہریانہ سے گذرنے والی ٹرینس کی خدمات بھی متاثر ہوئیں۔ راجستھان میں اقل ترین درجہ حرارت گذشتہ کی بنسبت ایک تا چار درجہ سلسیس کم ہوگیا۔ سری گنگا نگر راجستھان کا سرد ترین مقام تھا جہاں درجہ حرارت 3.3 ریکارڈ کیا گیا۔ ہماچل پردیش میں پہاڑیاں اور وادیاں نقطہ انجماد سے نیچے درجہ حرارت پہنچ جانے کی وجہ سے سردی سے کپکپاتی رہیں۔ سردی کی لہر آبی ذخائر جیسے جھیلوں، چشموں، ندیوں اور معاون ندیوں میں جہاں برف پگھل کر پانی آتا ہے، پانی کی قلت کی وجہ سے برقی پیداوار کے متاثر ہونے کی وجہ بن گئے۔

TOPPOPULARRECENT