شمال مشرق کے طلبا کا دہلی میں احتجاج جاری

نئی دہلی 3 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) شمال مشرق کی مختلف طلبا تنظیموں کے نمائندوں نے آج چیف منسٹر دہلی مسٹر ارون کجریوال سے ملاقات کرتے ہوئے اروناچل پردیش کے طالب علم نیڈو ٹانیہ کیلئے تیز رفتار انصاف کیلئے زور دیا جو کچھ دوکانداروں کے حملہ میں ہلاک ہوگئے تھے ۔ طلبا تنظیموں کے وفد نے مرکزی مسنٹر آف اسٹیٹ اقلیتی امور نینونگ ایرنگ کے ساتھ

نئی دہلی 3 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) شمال مشرق کی مختلف طلبا تنظیموں کے نمائندوں نے آج چیف منسٹر دہلی مسٹر ارون کجریوال سے ملاقات کرتے ہوئے اروناچل پردیش کے طالب علم نیڈو ٹانیہ کیلئے تیز رفتار انصاف کیلئے زور دیا جو کچھ دوکانداروں کے حملہ میں ہلاک ہوگئے تھے ۔ طلبا تنظیموں کے وفد نے مرکزی مسنٹر آف اسٹیٹ اقلیتی امور نینونگ ایرنگ کے ساتھ چیف منسٹر دہلی کو اس سلسلہ میں ایک یادداشت پیش کی ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت دہلی کی ایک کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے شمال مشرق سے تعلق رکھنے والے افراد کے خلاف نسلی امتیاز کے واقعات کی تحقیقات کروائی جائیں۔ ملاقات کے بعد سماجی کارکن بینا لکشمی نیپرام نے کہا کہ چیف منسٹر نے انہیں تیقن دیا ہے کہ وہ یہ مسئلہ فوری پولیس کارروائی کیلئے دہلی کے لیفٹننٹ گورنر سے رجوع کرینگے ۔ طلبا یونینوں کے نمائندوں نے کہا کہ وہ آج سے جنتر منتر پر غیر معینہ مدت کا دھرنا منظم کرینگے ۔ نیپرام نے کہا کہ خود کجریوال نے انہیں تیقن دیا ہے کہ وہ طلبا کے دھرنے میںشرکت کرینگے ۔

انہوں نے کہا کہ تین دن گذرنے کے بعد بھی پولیس کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے ۔ اس دوران کانگریس کے جنرل سکریٹری مسٹر راہول گاندھی نے آج شام طلبا سے جنتر منتر پر ملاقات کی جہاں موم بتیوں کے ساتھ مظاہرہ کیا جارہا تھا ۔ راہول نے ان سے کہا کہ ان کا دل اور روح ان طلبا کے ساتھ ہے ۔ انہوں نے طلبا سے اظہار یگانگت کرتے ہوئے کہا کہ اس قتل کے ذمہ دار افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی ۔ راہول گاندھی نے کہا کہ وہ صرف ایسے ہندوستان کے خواہش مند ہیں جہاں سب کے ساتھ انصاف کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جو کچھ بھی ہوا ہے وہ ناقابل قبول ہے ۔ اس دوران پولیس نے کہا کہ اروناچل طالب علم کے قتل کے سلسلہ میں تین افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ تین افراد فرمان ‘ سندر اور پون کو پولیس کی ٹیموں نے گرفتار کیا ہے اور مزید تین افراد کی اتر پردیش ‘ ہریانہ و پنجاب میں تلاش کی جا رہی ہے ۔ بہت جلد انہیں گرفتار کرلیا جائیگا۔

TOPPOPULARRECENT