Wednesday , December 13 2017
Home / جرائم و حادثات / شمس آباد تالاب میں ہوئے قتل کا معمہ حل، 4 افراد گرفتار

شمس آباد تالاب میں ہوئے قتل کا معمہ حل، 4 افراد گرفتار

شادی خانہ کے مسئلہ پر قتل کا انکشاف : شمس آباد اے سی پی
شمس آباد۔ 26 اکتوبر (سیاست نیوز) شمس آباد تالاب میں 18 اکتوبر کی شام قتل کی واردات پیش آئی تھی جس کے معمہ کو شمس آباد پولیس نے حل کرلیا۔ شمس آباد اے سی پی سدرشن نے بتایا کہ 18 اکتوبر کو شمس آباد تالاب میں قتل کی اطلاع پر پولیس نے مقام کا معائنہ کیا اور مقام واردات سے 2 چاقو اور سیل فون کے علاوہ مچھلی پکڑنے کے راڈس کو برآمد کرلیا تھا اور نعش کی تلاشی لی، لیکن نعش برآمد نہیں ہوئی۔ دوسرے دن ایک شخص نے پولیس اسٹیشن پہنچ کر قتل کی تفصیل بتائی جس کے بعد شمس آباد تالاب سے ماہر تیراک کی مدد سے نعش کو برآمد کرلیا گیا۔ اے سی پی نے مزید بتایا کہ آشا ٹاکیز شاہ علی بنڈہ کے قریب واقع محبوب فنکشن ہال کو لے کر مقتول اور ان کے سوتیلے بھائیوں میں مبینہ طور پر جھگڑے چل رہے تھے۔ مقتول کے سوتیلے بھائی محمد مرتضی علی شاکر 34 سالہ اور بھانجہ محمد خضر 23 سالہ نے ان کے دو ساتھیوں محسن اللہ خاں 40 سالہ اور جہانگیر خاں 24 سالہ کو روزانہ شراب نوشی کیلئے مبینہ طور پر رقم دیا کرتے تھے۔ محمد مجتبیٰ علی علی کو قتل کرنے کیلئے منصوبہ تیار کرتے ہوئے تقریباً 2 لاکھ روپئے دینے کا وعدہ کیا۔ منصوبہ کے تحت 18 اکتوبر کو محسن اللہ خاں، جہانگیر خان اور شہباز تینوں مل کر شمس آباد میں مچھلی کے شکار کے لئے مقتول کو لے گئے اور محمد مرتضیٰ علی شاکر اور محمد خضر کو اس کی اطلاع دے دی۔ مچھلی کے شکار کے دوران سب نے مل کر شراب نوشی کی۔ اتنے میں پیچھے سے مقتول کا سوتیلے بھائی اور بھانجہ دونوں خنجروں کے ساتھ آئے اور مقتول کے پیٹ، پیٹھ اور گلے پر وار کرکے مبینہ طور پر قتل کردیا اور نعش کو شمس آباد تالاب میں پھینک کر روانہ ہوگئے۔ اس واقعہ سے شہباز ناواقف تھا۔ اس نے قتل ہوتا دیکھ کر وہاں سے فرار ہوگیا اور بعد میں پولیس اسٹیشن پہنچ کر تمام تفصیل بیان کئے۔ محسن اللہ خان چادر گھاٹ اور رین بازار پولیس حدود میں قتل کی وارداتوں کے علاوہ شاہ علی بنڈہ پولیس اسٹیشن میں آر سی ایکٹ اور دیگر کیسوں میں جیل جاچکا ہے اور جہانگیر خان کے خلاف فلک نما پولیس اسٹیشن میں مختلف مقدمات میں سزا کاٹ چکا ہے۔ ان دونوں کے خلاف پی ڈی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرنے کی سفارش کرنے کا اعلان کیا۔ چاروں قاتلوں کے خلاف مقدمہ درج کرتے ہوئے قتل میں استعمال شدہ ہتھیار اور سیل فون کو ضبط کرلیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT