Sunday , June 24 2018
Home / ہندوستان / شوپیان کے 2009 کیس کی دوبارہ تحقیقات ناممکن : ہائی کورٹ

شوپیان کے 2009 کیس کی دوبارہ تحقیقات ناممکن : ہائی کورٹ

سرینگر ۔ 16 جولائی۔ (سیاست ڈاٹ کام) جموںو کشمیر کے ضلع شوپیان میں 2009 ء میں دو خواتین کی موت کی وجوہات کی دوبارہ تحقیقات کئے جانے کے مطالبہ کو جموںو کشمیر ہائی کورٹ نے مسترد کردیا ۔ ہائی کورٹ کا استدلال ہے کہ صرف فرد واحد پر مشتمل جوڈیشیل کمیشن کی رپورٹ کی بنیاد پر شوپیان معاملہ کی دوبارہ تحقیقات کا حکم صادر نہیں کیاجاسکتا ۔ چیف جسٹس ا

سرینگر ۔ 16 جولائی۔ (سیاست ڈاٹ کام) جموںو کشمیر کے ضلع شوپیان میں 2009 ء میں دو خواتین کی موت کی وجوہات کی دوبارہ تحقیقات کئے جانے کے مطالبہ کو جموںو کشمیر ہائی کورٹ نے مسترد کردیا ۔ ہائی کورٹ کا استدلال ہے کہ صرف فرد واحد پر مشتمل جوڈیشیل کمیشن کی رپورٹ کی بنیاد پر شوپیان معاملہ کی دوبارہ تحقیقات کا حکم صادر نہیں کیاجاسکتا ۔ چیف جسٹس ایم ایم کمار اور جسٹس ڈی سی ٹھاکر پر مشتمل ایک ڈیویژن بنچ نے کل رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ جن کمیشن جسے تحقیقاتی کمیشن کا درجہ حاصل نہیں ہے ، کی رپورٹ مختلف شہادتوں پر مشتمل ہے لیکن وہ شہادتیں سی بی آئی کی جانب سے کی گئی تحقیقات سے مماثلت نہیں رکھتی ۔ یاد رہے کہ 22 سالہ نیلوفر اور 17 سالہ آسیہ شوپیان ڈسٹرکٹ میں 30 مئی 2009 ء کو نمبیارا جھرنے کے قریب مُردہ پائی گئی تھیں جس کیلئے سکیورٹی فورسیس پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ دونوں کی عصمت ریزی کے بعد انھیں قتل کردیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT