Thursday , June 21 2018
Home / شہر کی خبریں / شکاگو میں اردو کلاسیس، عوام کی غیر معمولی دلچسپی

شکاگو میں اردو کلاسیس، عوام کی غیر معمولی دلچسپی

اوورسیز فرینڈس آف حیدرآباد فورم کی کامیاب کوشش۔ نئی نسل کو حیدرآبادی تہذیب سے واقف کروانا اہم مقصد

اوورسیز فرینڈس آف حیدرآباد فورم کی کامیاب کوشش۔ نئی نسل کو حیدرآبادی تہذیب سے واقف کروانا اہم مقصد
حیدرآباد ۔ 6 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : دنیا بھر میں اردو کے چاہنے ، اس کے پڑھنے سننے اور کہنے والوں کی کوئی کمی نہیں ۔ اردو کا شمار دنیا کی پانچ سرفہرست زبانوں میں ہوتا ہے ۔ کبھی نظموں کی شکل میں یہ عوام کے دل جیت لیتی ہے تو کبھی غزلوں کے سانچے میں ڈھل کر بلا لحاظ مذہب و ملت ذات پات رنگ و نسل ہر کسی کو سماعت کرتے ہوئے محظوظ ہونے کا موقع فراہم کرتی ہے اسی طرح نغموں کے ذریعہ لوگوں کے ذہن و قلب پر راج کرتی ہے ۔ اردو کی ان خوبیوں کے باوجود ہندوستان میں اردو کے ساتھ تعصب برتا جاتا ہے ۔ دنیا میں اگر کوئی مظلوم زبان ہے تو وہ اردو ہے جو بہت ہی خاموش مسکراہٹ کے ساتھ ہرنا انصافی ہر تعصب اور ظلم کو سہہ لیتی ہے وہ اپنی خاموشی کے ذریعہ دشمنوں کویہ پیام دیتی ہے کہ تم چاہے کچھ بھی کرلو میں تمہارے ذہن و قلب پر چھائی رہوں گی ۔ تم جتنا دور کروگے میں اتنی ہی قریب آؤں گی ۔ قارئین اردو کے ساتھ جہاں ہمارے اپنے ملک میں امتیازی سلوک روا رکھاجارہا ہے وہیں ۔ دنیا کے دیگر ممالک بالخصوص امریکہ میں اردو تیزی کے ساتھ مقبولیت حاصل کرتی جارہی ہے ۔ فروغ اردو کے لیے وہاں کئی ادبی انجمنیں کام کررہی ہیں ۔ ہماری ملاقات فرینڈز آف حیدرآباد فورم شکاگو کے صدر جناب میر سعادت علی خاں سے ہوئی وہ فی الوقت اپنے آبائی شہر حیدرآباد آئے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے امریکہ خاص کر شکاگو میں اردو کے حوالے سے بتایا کہ فرینڈز آف حیدرآباد نے امریکہ میں فروغ اردو کا بیڑا اٹھایا ہے اور اسے اپنی کوششوں میں کامیابی حاصل ہورہی ہے ۔ فورم نے باضابطہ ہفتہ اور اتوار کو سہ پہر 2 بجے تا 4 بجے آئی سی سی مسجد شکاگو اور ایم ای سی مسجد مارٹن گرو میں اردو کلاسیس منعقد کی جاتی ہیں جس میں اردو لکھنے پڑھنے اور بولنے کے خواہاں افراد بشمول خواتین کی اچھی خاصی تعداد شریک رہتی ہے ۔ جناب سعادت علی خاں نے جو امریکہ میں حیدرآباد تہذیب کی ایک نمائندہ شخصیت ہیں یہ بھی بتایا کہ فرینڈز آف حیدرآباد فورم شکاگو کے چیرمین جناب افتخار شریف ہیں جب کہ پروفیسر عطا اللہ خاں نئی نسل میں اردو کو عام کرنے نمایاںکردار ادا کررہے ہیں وہ خود اردو کی کلاسیس لیتے ہیں جس کے باعث پروفیسر عطا اللہ خاں کو شکاگو میں اردوکا بے غرض محسن سمجھا جاتا ہے ۔ انہوں نے اردو کے فروغ میں مسلم ایجوکیشن سنٹر کے رول کی بھی ستائش کرتے ہوئے بتایا کہ امریکہ میں اردو کو فروغ دینے محبان اردو آگے آرہے ہیں وہاں پاکستانیوں کی گہوارہ ادب ، علیگڑھ یو پی سے تعلق رکھنے والے اردو داں حضرات کی کئی انجمنیں کام کررہی ہیں ۔ جناب سعادت علی خاں کے مطابق جناب حسن چشتی نے امریکہ میں فروغ اردو کے لیے کوئی کسر باقی نہیں رکھی اب بھی وہ اردو کے لیے کام کرنے والوں کی حوصلہ افزائی کرتے رہتے ہیں ۔ شکاگو میں اردو کے حوالے سے صدر فرینڈس آف حیدرآباد فورم نے بتایا کہ امریکہ میں عالمی زبانوں کی حکومتی سطح پر حوصلہ افزائی کی جاتی ہے ۔ خود شکاگو کے قریب ایک ایسی لائبریری ہے جہاں اردو کی پانچ ہزار کتابیں موجود ہیں اس کتب خانہ میں روزنامہ سیاست بھی پابندی سے آتا ہے ۔ تقریبا 25 برسوں تک سعودی عرب میں قیام کے بعد امریکہ منتقل ہونے والے جناب سعادت علی خاں نے جو دوہری شہریت کے حامل ہیں بتایا کہ فورم اردو ہال مغل پورہ کی طرز پر شکاگو میں ایک اردو ہال ایک وسیع و عریض لائبریری اور کلچرل سنٹر قائم کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے ۔ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ امریکی حکومت کمیونٹی کے تصور کی حامی ہے اور کمیونٹی کی بہبود کے لیے کئے جانے والے اقدامات میں اس کا بھر پور تعاون و اشتراک شامل رہتا ہے ۔ کمیونٹی تعلیمی پروگرام کے تحت ہی اردو سیکھئے پروگرام شروع کیا گیا ۔ جب کہ نگہداشت صحت ، اور فزیکل فٹ نس کی کلاسیس بھی شروع کی جائیںگی ۔ ان کے خیال میں اوورسیز فرینڈس آف حیدرآباد فورم شکاگو کے اغراض و مقاصد میں نئی نسل کو حیدرآبادی آداب ، تہذیب و تمدن سے کماحقہ واقف کروانا ہے ۔ انہوں نے یہ بھی انکشاف کیا کہ بعد رمضان شکاگو میں جہاں 30 تا 40 ہزار حیدرآبادی مقیم ہیں حیدرآبادی کلچر پروگرام منعقد کیا جائے گا ۔ جس میں حیدرآبادی فن کار اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے ۔ اس کے علاوہ شام غزل کا اہتمام بھی کیا جائے گا اور اس پروگرام میں گلوکار حیدرآبادی شعراء کا کلام پیش کرے گے ۔ جناب سعادت علی خاں کے مطابق ہندوستانی قونصل جنرل ڈاکٹر اوصاف سعید بھی امریکہ میں حیدرآبادی تہذیب کو فروغ دینے کے خواہاں ہیں ۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اوورسیز فرینڈز آف حیدرآباد نے رکن سازی بھی شروع کی ہے اور تاحال اس کے 400 ارکان بن چکے ہیں مزید 1000 افراد کی رکنیت کو یقینی بنانے کا منصوبہ ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT