شکست کے اندیشوں سے بی جے پی بدترین خوف و ہراسانی کی شکار

رابرٹ وڈرا کے ساتھیوں کیخلاف ای ڈی دھاوؤں کی مذمت ، ابھیشیک مانو سنگھوی
نئی دہلی ۔ /8 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) رابرٹ وڈرا کے رفقاء کیخلاف انفو رسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ( ای ڈی) کے دھاوؤں کے ضمن میں حکومت کی سخت مذمت کرتے ہوئے کانگریس نے الزام عائد کیا کہ مودی انتظامیہ انتخابی شکست کے اندیشوں کو محسوس کرتے ہوئے بدترین سنسنی کا شکار ہوگیا ہے اور عوام کو ڈرانے دھمکانے کے لئے ظلم و جبر کے حربے استعمال کررہا ہے ۔ کانگریس کے ایک ترجمان ابھیشیک مانو سنگھوی نے آج یہاں اے آئی سی سی ہیڈکوارٹرس میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران یہ الزام بھی عائد کیا کہ ہندوستان میں دستوری حکمرانی کے دوران ملک نے اس حد تک ’دہشت گر دی کا راج ‘ پہلے کبھی نہیں دیکھا ۔ سنگھوی نے کہا کہ ’ ہم برطانوی راج سے بھی لڑچکے ہیں اور بی جے پی کو یہ اچھی طرح جان لینا چاہئیے کہ اب اس کا ’یوم الحساب‘ آرہا ہے ۔ واضح رہے کہ یو پی اے کی صدرنشین سونیا گاندھی کے داماد رابرٹ وڈرا کے تین رفقاء کے احاطوں کی ای ڈی کی طرف سے جمعہ کو تلاشی لی گئی تھی ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ’ وہ ( بی جے پی / مودی حکومت) کانگریس اور اس کے اقدار سے خوفزدہ ہیں اور چنانچہ وہ ہمارے قائدین یا ان کے رشتہ داروں سے ربط رکھنے والے افراد کو جبر و استبداد کے حربے استعمال کرتے ہوئے ڈرانے دھمکانے کی کوشش کررہے ہیں ۔

کانگریس کے لیڈر نے کہا کہ ’ آپ کے پاس ثبوت اور حقائق نہ رہنے کے باوجود کی جانے والی اس قسم کی کارروائیوں کو کردار کشی ہی کہا جاسکتا ہے ‘ ۔ سنگھوی نے کہا کہ انتخابات میں عوام کی طرف سے مسترد کئے جانے کے احساس سے بی جے پی اب بدترین قسم کی سنسنی کی شکار ہوگئی ہے ۔ سنگھوی نے کہا کہ ’ خوف و سنسنی ‘ کا لفظ بی جے پی کی پریشانی و مایوسی کی اصل حالت کی ترجمانی کیلئے ناکافی ہے ۔ مختلف افراد کے خلاف اس قسم کے تمام دھاوے اور تلاشیاں دراصل حقیقی مسائل اور بی جے پی کی ناکامیوں سے عوام کی توجہ ہٹانے کے حربے کے سواء اور کچھ نہیں ہے ۔ عہدیداروں نے جمعہ کو کہا تھا کہ دفاعی معاملتوں میں بعض مشتبہ افراد کی طرف سے کمیشن کی مبینہ وصولی اور غیرقانونی طور پر بیرونی ممالک میں رقومات پوشیدہ رکھنے کی تحقیقات کے ضمن میں ای ڈی کی طرف سے تین افراد کے خلاف دھاوے کئے گئے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT