Sunday , August 19 2018
Home / شہر کی خبریں / شہروں کی سرسبز و شادابی میں کمی

شہروں کی سرسبز و شادابی میں کمی

تعمیرات میں تیزی سے اضافہ ، درختوں کو بے دردی سے کاٹا جارہا ہے
حیدرآباد ۔ 13 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : شہری علاقے بڑی سرعت کے ساتھ وسیع و عریض ہوتے جارہے ہیں اور دیہات شہروں میں تبدیل ہورہے ہیں ۔ ترقی کے نام پر درختوں کو بڑی بے دردی سے کاٹا جارہا ہے ۔ آئی آئی ایس سی ادارے نے شہروں کی سرسبز و شادابی اور درختوں سے متعلق ایک سروے کیا ہے ۔ اس جائزہ میں جن انکشافات کا اظہار ہوا ہے وہ قابل تشویش ہیں شہر حیدرآباد کا دیگر شہروں سے موازنہ کرنے سے پتہ چلتا ہے کہ کسی مسائل میں ہم دیگر شہروں کے مقابلہ کافی پیچھے ہیں ۔ قواعد و ضوابط کے مطابق ہر میٹرو شہر میں 16 فیصد سرسبز و شادابی کا ہونا لازمی ہے مگر حیدرآباد میں یہ صرف 4 ۔ 5 فیصد ہی ہے اور دن بہ دن اس میں کمی واقع ہورہی ہے ۔ شہری علاقوں کی وسعت میں روزانہ درختوں کی کمی ہوتی جارہی ہے ۔ 20 برس کے اندر ہی 2.71 سے 1.66 فیصد تک کمی ریکارڈ کی گئی ہے ۔ 2024 تک 1.84 فیصد تک پہونچنے کا اندیشہ ظاہر کیا گیا ہے ۔ 2009-1999 کی درمیانی مدت میں تعمیراتی علاقوں میں 400 فیصد اضافہ سروے میں ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ تعمیراتی علاقے 1999 میں 2.5 فیصد تھا جو 2009 تک 13.55 فیصد تک پہونچ گیا ہے ۔ 2030 تک تعمیراتی علاقوں کا فیصد 51.27 فیصد تک پہونچنے کے امکانات ہیں ۔ جس کا مطلب یہ ہوا کہ شہری وسعت میں نصف تعمیراتی علاقے ہی ہوں گے ۔ ماہرین ماحولیات کا کہنا ہے کہ ایک درخت اپنے اطراف و اکناف میں دو ڈگری گرمی کم کرتا ہے اور اتنا ہی نہیں وہ درخت سورج کی کرنوں کو زمین پر پڑنے سے بھی روکتا ہے اور ہوا میں مسلسل نمی پیدا کرتے ہوئے ماحولیات کی صفائی کرتا ہے ، علاوہ ازیں شہری علاقوں کی آب و ہوا کو زہریلی ہونے سے بھی بچاتا ہے اور کار بن ڈائی آکسائیڈ کو جذب کر کے آکسیجن کو خارج کرتا ہے جس کی وجہ سے ہم صاف و شفاف ہوا میں سانس لے سکتے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT