Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / شہرکی کئی مساجد میں پہلی نماز تراویح تاریکی میں ادا کی گئی

شہرکی کئی مساجد میں پہلی نماز تراویح تاریکی میں ادا کی گئی

مکہ مسجد میں دو مرتبہ برقی مسدود‘ لاؤڈ اسپیکر ناکارہ ‘ حکومت کے وعدے غلط ثابت ہوگئے
حیدرآباد ۔6جون ( سیاست نیوز) رمضان المبارک کے موقع پر حیدرآباد کی تاریخی مکہ مسجد اور دیگر بڑی مساجد کے علاوہ شہر کے تمام مسلم اکثریتی علاقوں میں برقی ‘ آبرسانی اور بلدیہ کے موثر انتظامات کے بارے میں حکومت تلنگانہ کیطرف کئے گئے تمام وعدے آج عملی طور پر کھوکھلے اور غلط ثابت ہوئے ۔ رویت ہلال کمیٹی کی جانب سے آج شب ماہ صیام رمضان المبارک کا چاند نظر آنے کی اطلاع کے ساتھ ہی تمام تراویح کی ادائیگی اور سحر کیلئے اشیائے خوردو نوش کی خریدی کیلئے دونوں شہروں میں خواتین اور بچوں کی کثیر تعداد نے تیاریوں کا آغاز کردیا گیا ۔ اس موقع پر سڑکوں پر ٹریفک میں اضآفہ ہوگیا اور بازاروں میں زبردست گھما گھمی دیکھی گئی ۔ اس دوران مسلمانوں کی کثیر تعداد پورے خشوع و خضوع کے ساتھ نماز تراویح کیلئے مساجد پہنچ گئی ۔ مکہ مسجد ‘ مسجد چوک ‘ مسجد فتح دروازہ ‘ مسجد دارالشفاء ‘ مسجد باغ عامہ کے علاوہ بہادر پورہ ‘ چارمینار ‘ مغلپور ‘ بارکس ‘ سنتوش نگر ‘ سعیدآباد ‘ یاقوت پورہ ‘ دبیرپورہ ‘ چنچل گوڑہ ‘ ملک پیٹ ‘ اعظم پورہ ‘ چادر گھاٹ ‘ کاچیگوڑہ ‘ مشیرآباد ‘ ٹولیچوکی ‘ مہدی پٹنم ‘ مانصاحب ٹینک ‘ بنجارہ ہلز ‘ خیریت آباد وغیرہ جیسے کئی علاقوں کی مساجد مصلیوں کی کثیر تعداد نے چاند رات کو نماز تراویح ادا کی ۔ تاہم کئی مساجد میںدوران کئی مرتبہ برقی سربراہی مسدود ہوجانے کے سبب مصلیوں کو شدید دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا ۔ شہرکی سب سے بڑی مکہ مسجد میں برقی کے موثر انتظامات سے متعلق حکومت اور ریاستی وزراء کے وعدے غلط ثابت ہوئے جہاں حکومت کے ذمہ داروں نے خود کار جنریٹر نصب کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے برخلاف ایسا کوئی انتظام نہیں ہوسکا ۔ بارش کے آغاز کے ساتھ ہی برقی مسدود ہوگئی اور پہلے سے ناکارہ مائک سسٹم بھی پوری طرح بند ہوگیا ۔ برقی شارٹ سرکٹ کے سبب مکہ مسجد کا ایک برقی فیان جل اٹھا اور مسجد میںمعمولی دھواں جمع ہوگیا ۔ دو مرتبہ برقی سلسلہ منقطع ہونے کے سبب مصلیان مکہ مسجد کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔ حافظ و قاری محمد رضوان قریشی مکہ مسجد میں قرآن مجید کے روزانہ تین پارے سنارہے ہیں ۔ پرانا شہر کے کئی علاقوں میں تین تا چار گھنٹے برقی مسدود رہی ۔ بعض مساجد میں وضو کیلئے پانی کی قلت کی شکایات بھی عام رہیں ۔ علاوہ ازیں ڈرینج کے غیر موثر انتظامات کیلئے بارش کے سبب کئی سڑکوں پر پانی جمع ہوگیا تھا اور کئی سڑکوں پر خطرناک کھڈ کے سبب جہاں دن میں ہی چلنا دشوار ہے رات کے دوران اندھیرے میںیہ سڑـیں راہگیروں کی آمد  ورفت کیلئے مزید دشوار گذار ہوگئیں ۔ بالخصوص رمضان کے دوران پرانا شہر میں بلدی‘ برقی و آبرسانی کے ناقص انتظامات پر شہریوں نے سخت احتجاج و برہمی کا اظہار کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT