Friday , April 20 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر حیدرآباد میں انٹلی جنٹ ٹریفک منیجمنٹ سسٹم متعارف

شہر حیدرآباد میں انٹلی جنٹ ٹریفک منیجمنٹ سسٹم متعارف

شہریوں کی رفتار و گفتار ریکارڈ ہوگی ، اڈوانسڈ ٹکنالوجی کا شہر میں جال
حیدرآباد /16 نومبر ( سیاست نیوز ) شہریاں حیدرآباد کو اب رفتار کے ساتھ ساتھ اپنی گفتار پر بھی قابو رکھنا پڑے گا ۔ چونکہ انٹلی جنٹ ٹرافک منیجیمنٹ سسٹم کے ذریعہ شہریوں کی رفتار ہی نہیں بلکہ گفتار بھی ریکارڈ کی جائے گی ۔ اس سسٹم کے آغاز سے شہر حیدرآباد اس سسٹم کو رائج کرنے والا ملک کا پہلا شہر بن جائے گا ۔ جہاں شہر بھر میں اڈوانس ٹکنالوجی سے مربوط کیمروں کا جال رہے گا ۔ امکان ہے کہ جاریہ ماہ کے اختتام تک یا پھر ماہ ڈسمبر میں اس نئے سسٹم کو باضابطہ طور پر عمل میں لایا جائے گا ۔ جس کیلئے تجرباتی عمل بھی مکمل کرلیا گیا ہے اور کیمروں کی کارکردگی کیلئے آزمائشی جانچ بھی کرلی گئی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ شہر حیدرآباد کو خوبصورت اور محفوظ بین الاقوامی طرز کا شہر بنانے کی تیاریوں کا ابتدائی مرحلہ تکمیل کو پہونچ چکا ہے ۔ شہر کو بین الاقوامی طرز کا شہر بنانے کی کوششوں میں سڑکوں ، بنیادی سہولیات اسکائی ویز ،بڑے ٹرافک جنکشن و دیگر انفراسٹرکچر سے قبل حفاظتی اقدامات کو اہمیت دی گئی ۔ ان کیمروں کی تنصیب عمل میں آچکی ہے ۔ ان سسٹم سے شہریوں کی حفاظتی اقدامات کو جہاں غیر معمولی اہمیت حاصل رہے گی وہیں قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے شہریوں کو بھاری جرمانوں کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ ایسے مقامات جہاں ٹریفک عملہ متحرک نہ ہوں یا پھر موجود ہی نہ ہو ایسے مقامات پر کسی بھی قسم کی خلاف ورزی بہت مہنگی ثابت ہوگی ۔ اس سسٹم کی مدت سے جرائم کے انسداد کے علاوہ جرائم پیشہ افراد پر قابو پانے اور جرائم کو حل کرنے میں کافی مدد ملیگی ۔ اس کے علاوہ سیف اینڈ اسمارٹ سٹی کے تحت آٹومیٹک ٹریفک کاونٹر کم کلاسیفکیشن کی مدد سے ہر گاڑی کی رفتار اور گرفتار کا بہ آسانی اندازہ لگایا جائے گا ۔ انٹیلجنٹ ٹریفک منیجمنٹ سسٹم کے بعد شہر حیدرآباد ایشیائی کے چنندہ شہروں میں شامل ہوجائے گا ۔ اس طرح کی ٹکنالوجی بڑے شہروں میں استعمال کی جارہی ہے ۔ اس سلسلہ میں ٹریفک پولیس کمانڈ کنٹرول کے انسپکٹر مسٹر نرسنگ راؤ نے بتایا کہ شہر کے سبھی بڑے جنکٹشوں پر ان کیمروں کی تنصیب عمل میں لائی جاچکی ہے ۔ جو گاڑیوں کی رفتار اور اس کی گفتار کے علاوہ ٹریفک کی رہنمائی بھی کریں گے ۔ ان کیمروں کو شہر میں موجود ڈیجیٹل سائڈ بورڈ سے مربوط کیا جائے گا ۔ جو آگے والے ٹریفک جنکشن اور راستے پر ٹریفک کی تفصیلات کو راست فراہم کرتے ہوئے شہریوں کو متبادل راستے اختیار کرنے رہنمائی بھی کریں گے ۔ اس کے علاوہ یہ کیمرے کمانڈ کنٹرول روم سے جڑے ہوئے رہیں گے جو ہر وقت پل پل کی اطلاع کمانڈ کنٹرول کو پہونچاتے رہیں گے ۔ گاڑیوں کی رفتار اور ان کی آواز کے علاوہ شہریوں کی آواز کو بھی سن سکتے ہیں ۔ تاحال 3 ہزار کیمروں کی تنصیب عمل میں لائی جاچکی ہے اور سیف اینڈ اسمارٹ سٹی کے تحت 10 ہزار کیمروں کی تنصیب کا نشانہ مقرر کیا گیا ہے ۔ شہر حیدرآباد کے بڑے ٹریفک جنکشنوں میں فی الحال 3 سو کیمرے تھے ۔ ان کیمروں کی تنصیب انٹلیجنٹ ٹریفک منیجمنٹ سسٹم کیلئے سال 2016 میں ٹنڈر طلب کیا گیا تھا اور یہ کام بھی معروف کمپنی ایل اینڈ ٹی نے انجام دیا اور اس کی تخمینہ لاگت تقریباً 100 کروڑ روپئے بتائی گئی ہے ۔ جبکہ دوسرا بڑا پراجکٹ 600 کروڑ روپئے کا ہے ۔ اس پر اجکٹ کا آئندہ ماہ سے آغاز متوقع ہے ۔

TOPPOPULARRECENT