Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر حیدرآباد میں ہر دن 700 نئی گاڑیوں کا اضافہ

شہر حیدرآباد میں ہر دن 700 نئی گاڑیوں کا اضافہ

تلنگانہ کے بڑے شہروں میں پارکنگ مسئلہ کو حل کرنے نئی پالیسی ، کے ٹی آر کا جائزہ اجلاس
حیدرآباد ۔ 10اکٹوبر ( سیاست نیوز) ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر نے شہر حیدرآباد کے بشمول ریاست کے تمام بلدیات میں پارکنگ مسائل کو حل کرنے کیلئے نئی پارکنگ پالیسی متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے ۔ کے ٹی آر نے کل بیگم پیٹ کیمپ آفس میں جی ایچ ایم سی کے عہدیدار میٹرو ٹرین کے ایم ڈی اور شہر کے پولیس کمشنرس کے ساتھ اجلاس طلب کرتے ہوئے پارکنگ مسائل کا جائزہ لیا ۔ ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق نے کہا کہ ہر دن شہر حیدرآباد کی سڑکوں پر 700 نئی گاڑیاں پہنچ رہی ہیں ‘ گاڑیوں کی پارکنگ کیلئے پیدا ہونے والے مسائل کا جائزہ لینے کے بعد نئی پالیسی متعارف کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ عہدیداروں نے ملک کے مختلف شہروں اور بیرون ممالک کے پارکنگ سسٹم کا جائزہ لینے کے بعد نئی پالیسی تیار کی ہے ۔ شہر حیدرآباد کے علاوہ ریاست کے دوسرے بلدیات میں پارکنگ کے مسئلہ کو حل کرنے کیلئے نئی پالیسی معاون و مددگار ثابت ہوگی ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ مختلف محکمہ جات کے تال میل اور تعاون و اشتراک کو خصوصی اہمیت دی گئی ۔ پہلے مرحلے میں شہر حیدرآباد کے تین پولیس کمشنریٹس میں جہاں کی آبادی زیادہ ہے وہاں تجربہ کے طور پر نئی پالیسی پر عمل آوری کی جائے گی ۔ جاریہ سال کے اوآخر سے پالیسی پر عمل کیا جائے گا ۔ محکمہ بلدی نظم و نسق کی جانب سے شروع کی گئی ۔ ای ۔ پارکنگ پالیسی کو ریاست کے تمام شہروں میں متعارف کیا جائے گا ۔ ای پارکنگ پر کامیابی سے عمل آوری کیلئے مختلف محکمہ جات میں تال میل پیدا کرنے کیلئے ابھی تک کئی اجلاس منعقد کئے گئے ہیں ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ جب نئی پالیسی پر عمل کا آغاز ہوگا اس وقت تک ایک خصوصی موبائیل ایپ تیار کرتے ہوئے پارکنگ مقامات کی نشاندہی کی جائے گی ۔ نئی پارکنگ پالیسی کی تیاری میں کئی اہم اُمور بالخصوص ان اسٹریٹ پارکنگ شارٹ اسٹے اپرکنگ‘ گھریلو عمارتوں میں پارکنگ سرکاری دفاتر ‘ عام مقامات کی پارکنگ ‘ بس ریلوے اسٹیشن ‘ ایم ایم ٹی ایس اسٹیشن میں پارکنگ ‘ خالی اراضیات ( اوپن پلان پارکنگ) کو ترجیح دیتے ہوئے رہنمایانہ اُصول تیار کئے گئے ہیں ۔ ان اسٹریٹ پارکنگ کے زمرے میں بڑی بڑی سڑـکوںکے مقامات پر جہاں 12 میٹر سے زیادہ چوڑی سڑک رہے گی وہاں پارکنگ کی اجازت دی جائے گی ۔ تھوڑی دیر ٹھہرنے والی گاڑیوں کی پارکنگ مثلاً بینک ‘ دکانات وغیرہ پر پارکنگ کا علحدہ انتظام کیا جائے گا ۔ ایسے مقامات پر ای پارکنگ کی سہولتیں فراہم کی جائیں گی ۔ دکانداروں کی جانب سے بھی صبح سے شام تک گاڑیاں ٹھہرائی جارہی ہیں ‘ پارکنگ فیس کا تعین کرتے ہوئے اس کا بھی خاتمہ کیا جائے گا ۔ گھروں کی تعمیرات کے دوران پارکنگ کے جو قواعد ہے اس میں مزید سختی لانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ نئے مکانات کی تعمیرات کے دوران پارکنگ کیلئے تعمیر کئے جانے والے فلور کو ٹیکس سے استثنیٰ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔نئی پارکنگ پالیسی میں مختلف محکمہ جات اور اداروں کو ڈیمانڈ کے مطابق پارکنگ کی سہولت فراہم کرنے کے اختیارات دیئے جارہے ہیں ۔ سڑکوں پر لاریوں کی پارکنگ کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے لاریوں کی پارکنگ کیلئے خصوصی مقامات کی نشاندہی کی جائے گی ۔

TOPPOPULARRECENT