Wednesday , December 12 2018

شہر میں آلودگی میں اضافہ ‘ گاڑیاں اور میٹرو ریل کا کام اصل وجہ

مدینہ بلڈنگ ‘ معظم جاہی مارکٹ ‘ لکڑی کا پل ‘ دلسکھ نگر اور چادر گھاٹ سب سے زیادہ متاثر

مدینہ بلڈنگ ‘ معظم جاہی مارکٹ ‘ لکڑی کا پل ‘ دلسکھ نگر اور چادر گھاٹ سب سے زیادہ متاثر
حیدرآباد 16 فبروری ( سیاست نیوز ) گاڑیوں سے نکلنے والے دھویں کی وجہ سے حیدرآباد کی فضا انتہائی آلودہ ہوگئی ہے ۔ انڈین انسٹی ٹیوٹ آف سائینس بنگلورو کے ایک حالیہ مطالعہ میں یہ بات سامنے آئی ہے ۔ یہ سروے سینئر سائینسداں ڈاکٹر ٹی وی رامچندرا کی قیادت میں کیا گیا ۔ اس میں کہا گیا ہے کہ حیدرآباد کو جو آلودگی ہے اس سے پتہ چلتا ہے کہ 57 فیصد آلودگی گاڑیوں سے نکلنے والے دھویں کی وجہ سے ہے ۔ اس سروے کے مطابق 32 فیصد ٹریفک پولیس معلہ در اصل پھیپھڑوں کے عارضہ جیسے سانس لینے میں تکلیف ‘ پھیپھڑوں کے انفیکشن وغیرہ سے متاثر ہے جبکہ 25 فیصد عملہ کو سماعت کے مسائل کا سامنا ہے ۔ سات فیصد عملہ کو بصارت ( دیکھنے ) میں دھول اور فضائی آلودگی کی وجہ سے مسائل پیدا ہو رہے ہیں۔ اے پی پولیوشن کنٹرول بورڈ کے عہدیداروں کے بموجب گاڑیوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ کے علاوہ اب میٹرو ریل کے تعمیراتی کاموں کی وجہ سے بھی آلودگی پیدا ہورہی ہے جو صحت کیلئے مضر ہے ۔ شہر کے انتہائی آلودگی والے علاقوں میں مدینہ بلڈنگ ‘ معظم جاہی مارکٹ ‘ لکڑی کا پل ‘ سنجیوا ریڈی نگر ‘ دلسکھ نگر ‘ اور چادر گھاٹ کے علاقے شامل ہیں۔ کچھ ایسے علاقے ہیں جہاں آلودگی کی شرح اوسط درجہ تک ہے ۔

TOPPOPULARRECENT