Saturday , December 15 2018

شہر میں ایک اور حوالہ ریاکٹ بے نقاب 97 لاکھ روپئے ضبط

کالے پتھر کے ایجنٹ کے ذریعہ رقم کی منتقلی کے دوران آر پی روڈ سکندرآباد پر پولیس کی کارروائی ، دو گرفتار
حیدرآباد /23 نومبر (سیاست نیوز ) شہر میں حوالہ کے ایک اور ریاکٹ کو بے نقاب کرتے ہوئے ٹاسک فورس پولیس نے پرانے شہر کے ساکنان دو افراد کو گرفتار کرلیا اور ان کے قبضہ سے 97 لاکھ روپئے ایک موٹر سائیکل اور تین سیل فون ضبط کرلئے ۔ تلنگانہ میں اسمبلی انتخابات کے دوران پولیس کی چوکسی کے بعد اب تک حوالہ کے کاروبار کے ذریعہ روانہ کی جانے والی کثیر رقم کو ضبط کرلیا گیا ہے ۔ گذشتہ ماہ ہی پولیس 59 لاکھ روپئے ضبط کئے تھے ۔ اس سے قبل فروری میں بھی حوالہ ریاکٹ کو بے نقاب کرتے ہوئے 1.4 کروڑ روپئے ضبط کرکے 6 افراد کو گرفتار کیاگیا تھا ۔ پولیس کی چوکسی اور بھاری رقومات کی ضبطی کے باوجود اس کاروبار میں ملوث افراد کے حوصلے پست نہیں ہوئے ہیں۔ تازہ واقعہ میں کمشنر ٹاسک فورس نارتھ زون کی ٹیم نے مہانکالی پولیس کے ساتھ مشترکہ کارروائی میں ان دو افراد 40 سالہ محمد صدیق احمد ساکن کالاپتھر جو حوالہ کی رقم کا ایجنٹ بتایا گیا ہے کہ ساتھ 40 سالہ محمد منیر ساکن شاہ گنج جو پیشہ سے عربی ٹیوشن پڑھاتا ہے کو گرفتار کرلیا ۔ منیر ، صدیق احمد کا ساتھی بتایا گیا ہے ۔ ایک اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے ٹاسک فورس پولیس نے آر پی روڈ چوراہے پر ہونڈا ایکٹوا گاڑی کو روک لیا جس میں مذکورہ گرفتار افراد حوالہ کی غیر قانونی رقم کو منتقل کر رہے تھے ۔ پولیس کے مطابق صدیق احمد حسینی علم کے علاقہ میں احمد ٹورس اینڈ ٹراویلز کے نام سے کاروبار کرتا ہے اور ویسٹرن یونین بھی چلاتا ہے اور یہ شخص حوالے کی رقم کمیشن کی بنیاد پر منتقل کرتا تھا ۔ ویسٹرن یونین کی آڑ میں یہ شخص حوالہ کا کاروبار کر رہا تھا ۔ پولیس کے مطابق صدیق یہ کام فہیم نامی حوالہ ایجنٹ کے اشارے پر کرتا تھا اور صدیق کے ساتھ منیر اس غیر قانونی حوالہ رقم منتقلی کے ریاکٹ میں شامل ہوگیا ۔ 5 ماہ قبل یہ دونوں فہیم سے رابطہ میں آئے اور ان کے درمیان دوستی گہری ہوگئی ۔ فہیم رئیل اسٹیٹ کا تاجر اور حسین علم کا ساکن بتایا گیا ہے ۔ ان دونوں نے 0.6 اور 0.8 فیصد کمیشن کی بنیاد حوالہ کی رقم منتقل کرنے کا فیصلہ کیا اور کام کرنے لگے اور دیگر ریاستوں بالخصوص میٹرو شہروں میں موجود دیگر حوالہ بروکرس سے رابطہ قائم کرنے لگے ۔ حوالہ کے غیر قانونی ریاکٹ کا یہ کاروبار واٹس ایپ کے ذریعہ چلایا جارہا ہے ۔ ان کے درمیان رابطہ خصوصی کوڈ ورڈ رہتا ہے جو ان کی شناخت ظاہر کرتا ہے جس کے ذریعہ آپسی رابطہ اور لین دین کیا جاتا ہے ۔ کرنسی نوٹ پر موجودہ نمبرس کے ذریعہ کوڈ ورڈ مقرر کیا جاتا ہے ۔ فہیم ان سب کارروائیوں کو انجام دینے کے بعد صدیق کو فون پر ہدایات دیتا تھا کہ اس مقام سے رقم کو حاصل کرو اور دوسرے مقام پر پہونچادیں ۔ حالیہ دنوں صدیق نے سب ایجنٹ کی طرز پر منیر کو ساتھ لے لیا ۔ گذشتہ روز فہیم کی ہدایت پر صدیق نے حوالہ کی رقم راجیش جو کہ ایس پی روڈ کا ساکن ہے حاصل کی اور واپس ہو رہے تھے کہ پولیس نے انہیں گرفتار کرلیا اور ضبط شدہ اشیاء کے ساتھ مزید کارروائی کیلئے انہیں مہانکالی پولیس کے حوالے کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT