Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / شہر میں تیز ہواؤں کیساتھ طوفانی بارش، درخت گرگئے، 2 ہلاک

شہر میں تیز ہواؤں کیساتھ طوفانی بارش، درخت گرگئے، 2 ہلاک

ہورڈنگس، برقی کھمبے، دیواریں گر گئیں،اسبسطاس چھت اُڑ گئے، متعدد زخمی، کئی موٹر گاڑیوں کو نقصان

حیدرآباد۔20مئی( سیاست نیوز) شہر میں تیز ہواؤں کے ساتھ طوفانی بارش کے سبب تباہی مچ گئی۔ بارش میں ہوئی تباہی میں 2ہلاکتیں ہوئیں جبکہ دیوار اور درخت گرنے سے کئی لوگوں کے زخمی ہو گئے۔ مختلف مقامات پر ہورڈنگس‘ برقی کھمبے‘ درخت اور بجلی کے تار گرنے کے سبب کئی گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔ نصف گھنٹے کی تیز ہواؤں کے ساتھ بارش نے شہر کو تاریکی میں ڈبو دیااور زائد از 6 گھنٹے کئی علاقوں میں برقی سربراہی منقطع رہی۔ جوبلی ہلز پر لگائے گئے بڑے ہورڈنگ کا کھمبا گر جانے سے کئی گاڑیاں زد میں آگئیں اور اس مصروف ترین سڑک پر کئی گھنٹوں تک ٹریفک جام رہی۔ پرانے شہر کے علاقہ تالاب کٹہ میں 32سالہ نوجوان احمد بن ابراہیم کی موت واقع ہو گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ مکان پر موجودپانی ٹانکی گرنے سے نوجوان کی موت واقع ہوئی جبکہ ان کے بڑے بھائی خلیل بن ابراہیم شدید زخمی ہیں۔ اسی طرح راجندر نگر عطاپور چوراہے پردیوار گرنے سے ایک شخص ا یلیا کی موت وا قع ہوگئی۔ لکشمی نگر علاقہ میں دیوار منہدم ہونے کے سبب 3لوگ زخمی ہوگئے۔ لنگر حوض ہاشم نگر میں ہاسٹل کی دیوار منہدم ہونے کے باعث چند نوجوان لڑکے زخمی ہوئے ہیں۔

شہر کے کئی علاقوں میں برقی کھمبے گرنے اور ٹرانسفارمرس میں خرابی پیدا ہو جانے کی شکایات ملی ہیں۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے فراہم کردہ اطلاع کے مطابق رات 8بجے تک 208شکایات موصول ہوئی ہیں جن میں 197درخت گرنے کے علاوہ برقی کھمبوں کے گرنے کی شکایات شامل ہیں۔ شہر حیدرآباد کے علاوہ سکندرآباد اور نواحی علاقوں میں صرف 20منٹ کی بارش سے نشیبی علاقے زیر آب آگئے ۔ بارش کے آغاز کے ساتھ ہی بلدیہ کی جانب سے عملہ کو متحرک کردیا گیا تا کہ بارش کے پانی کو جمع ہونے سے روکا جا سکے۔ قلعہ گولکنڈہ کے علاقہ میں ایک مکان کی اسبسطاس شیٹ گرنے سے گھریلو سامسان کو نقصان پہنچا اور ایک خاتون کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ جوبلی ہلز ‘ بنجارہ ہلز‘ پنجہ گٹہ ‘ امیر پیٹ ‘ سوماجی گوڑہ اور دیگر علاقوں میں تیز ہواؤں کے سبب سائن بورڈ ہواؤں میں جھولتے دیکھے گئے۔

اسی طرح پرانے شہر کے کئی علاقوں میں دکانات پر لگائے گئے بورڈ ہوا میں اڑ گئے۔ محکمہ برقی کے عہدیداروں کے بموجب شہر کے کئی حصوں میں برقی کھمبے گر پڑنے کے سبب سربراہی میں مسائل پیدا ہوئے ہیں اور ان کے حل کیلئے مسلسل کوششیں جاری ہیں۔ میلار دیو پلی میں واقع ٹرانسکو پمپ میں خرابی کے سبب نصف شہر میں برقی سربراہی متاثر ہوئی جس کے سبب مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عملہ کو درختوں کو ہٹانے اور کاٹنے میں دشواریاں پیش آرہی تھیں۔رات دیر گئے اچانک دوبارہ بوندا باندی کے آغاز نے محکمہ برقی کی جانب سے برقی سربراہی کے اقدامات میں رکاوٹ پیدا کی۔ تیز ہواؤں کے ساتھ بارش کے دوران 67ٹرانسفارمرس اور زائد از 200برقی کھمبوں اور متعدد 33kvسب اسٹیشنس کو نقصان پہنچا ہے۔ چنچل گوڑہ جیل کوارٹرس میں برقی کھمبے کے گرنے کے سبب جیل کے علاوہ اطراف و اکناف کے علاقوں میں برقی سربراہی منقطع رہی اور کئی گھنٹوں تک برقی بحال نہیں کی جا سکی۔بلدیہ کی جانب سے گزشتہ یوم شروع کردہ ایمرجنسی ہیلپ لائن پر مسلسل فون کالں موصول ہوتے رہے۔ کمشنر جی ایچ ایم سی ڈاکٹر جناردھن ریڈی نے تمام زونل کمشنر و ماتحتوں کو ہدایات جاری کی کہ وہ کسی بھی طرح کی ہنگامی صورتحال کیلئے تیار رہیں۔  بلدیہ کی جانب سے دونوں شہروں میں 25کرین اور خصوصی ٹیموں کی تعیناتی کے ذریعہ گرے ہوئے درختوں کو ہٹایا جا رہا ہے جبکہ محکمہ برقی کی جانب سے ہر زون میں 3خصوصی کرین اور عہدیداروں کی تعیناتی کے ذریعہ برقی سربراہی بحال کرنے کے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ رات دیر گئے کمشنر مجلس بلدیہ نے عہدیداروں کے ہمراہ بات چیت کرتے ہوئے راحت کاری کاموں کا جائزہ لیا۔ طوفان روانو سے پیدا ہونے والی امکانی صورتحال سے نمٹنے نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس 3 ٹیمیں کمانڈنٹ بہاری سنگھ کی قیادت میں شہر میں چوکسی اختیار کئے ہوئے ہے۔

TOPPOPULARRECENT