Tuesday , June 19 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر میں خودکشی، خودسوزی کے واقعات میں اضافہ، معمولی بات پر انتہائی اقدام

شہر میں خودکشی، خودسوزی کے واقعات میں اضافہ، معمولی بات پر انتہائی اقدام

حیدرآباد ۔ 15 مارچ ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں حالیہ عرصہ کے دوران خودکشی کے واقعات میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے۔ سال 2014ء کے آغاز سے اب تک یعنی 75 یوم کے دوران 108 افراد نے مختلف مسائل کا شکار ہوکر اپنی زندگیوں کا خاتمہ کرلیا۔ خودکشی اور خودسوزی واقعات کے ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی کہ معمولی باتوں پر بھی مرد و خواتین نے خودکش

حیدرآباد ۔ 15 مارچ ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں حالیہ عرصہ کے دوران خودکشی کے واقعات میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے۔ سال 2014ء کے آغاز سے اب تک یعنی 75 یوم کے دوران 108 افراد نے مختلف مسائل کا شکار ہوکر اپنی زندگیوں کا خاتمہ کرلیا۔ خودکشی اور خودسوزی واقعات کے ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی کہ معمولی باتوں پر بھی مرد و خواتین نے خودکشی کرلی۔ اس بات کا انکشاف بھی ہوا کہ ایک نوجوان داماد نے صرف اس بناء پر اپنے ہی ہاتھوں اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا کیونکہ خسر نے حالت برہمی میں اسے طمانچہ رسید کردیا تھا۔ پکوان لذیذ نہ بنانے پر شوہر کی ڈانٹ اور مارپیٹ سے تنگ آ کر خواتین کی خودکشی یا خودسوزی کرلینے کے واقعات بھی سامنے آئے ہیں۔

کچھ نوجوانوں نے کاروبار میں نقصان اور قرضداروں کی جانب سے رقم کی واپسی کے اصرار پر تو کچھ نے رشتہ داروں و پولیس کی ہراسانی سے عاجز آ کر اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا۔ معاشی تنگی، شوہر کے ظلم، میاں بیوی کے جھگڑے، عاشقی میں ناکامی، اولاد کے نہ ہونے، شوہر کے دوسری شادی کرلینے وغیرہ ایسی وجوہات ہیں جو معاشرہ میں خودکشیوں اور خودسوزیوں کے واقعات میں اضافہ کا باعث بن رہے ہیں۔ 2014ء کے آغاز کے تیسرے دن ہی ایک حاملہ خاتون کو زندہ جلادیا گیا یا سسرالی رشتہ داروں کا خودسوزی کرلی ہے۔ سروے کے دوران ایک ایسا واقعہ بھی منظرعام پر آیا جس میں ایک خاتون نے ملازمت کرنے کی اجازت دینے سے شوہر کے انکار پر حالت برہمی میں خودکشی کرلی۔ بہرحال ایسا محسوس ہوتا ہیکہ ہمارے سماج میں خودکشیوں کا رجحان بڑھتا جارہا ہے اور حیرت اس بات کی ہیکہ اس خطرناک رجحان نے مسلم معاشرہ کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا حالانکہ ہمارے دین اسلام میں خودکشی کو حرام قرار دیا گیا ہے۔ اس ضمن میں نماز جمعہ کے خطبات میں آئمہ مساجد عوام میں شعور بیدار کرسکتے ہیں۔ [email protected]

TOPPOPULARRECENT