Wednesday , December 19 2018

شہر میں قومی پرندہ ’’ مور ‘‘ کی تعداد گھٹ رہی ہے

جنگلات میں کمی اور آبادی میں اضافہ اصل سبب ، پانی کی قلت اہم وجہ

جنگلات میں کمی اور آبادی میں اضافہ اصل سبب ، پانی کی قلت اہم وجہ
حیدرآباد۔/19ڈسمبر، ( سیاست نیوز) شہر میں قومی پرندہ ’’مور‘‘ کی تعداد بتدریج گھٹتی جارہی ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق 2011میں حیدرآباد و اطراف کے اضلاع کے حدود میں 3575 مور ہوا کرتے تھے لیکن ان کی تعداد گزشتہ تین برسوں کے دوران گھٹتے ہوئے 3196 ہوگئی ہے جس کی بنیادی وجہ شہر میں وافر مقدار میں پانی کی عدم سہولت کے علاوہ بتدریج جنگلات کی کمی اور زہریلے تخم کا استعمال تصورکی جارہی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ پانچ سال قبل حیدرآباد میں شمارکنندگان نے 4600مور موجود رہنے کی رپورٹ تیار کی تھی لیکن اب فی الحال شہر میں صرف 3196 مور پائے جاتے ہیں۔2005ء میں شائع شدہ ایک رپورٹ میں اس بات کی مثبت اطلاع شائع ہوئی تھی کہ حیدرآباد میں سالانہ موروں کی تعداد میں 10فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا جاسکتا ہے لیکن بتدریج یہ تعداد گھٹتی جارہی ہے۔ کے بی آر پارک میں 2011میں ریکارڈ تعداد کے مطابق 650 مور ہوا کرتے تھے لیکن اب صرف 456 مور پائے جاتے ہیں۔ اسی طرح ونستھلی پورم میں واقع ہرینی میں 450 مور پائے جاتے تھے مگر یہاں موروں کی تعداد میں کچھ اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور فی الحال 550 مور ہرینی میں موجود ہیں۔ چلکورو پارک معین آباد روڈ میں 375 مور 2011میں ریکارڈ کئے گئے تھے لیکن اب صرف 210مور پائے جاتے ہیں۔ ٹٹی انارم میں 2011کے اعداد و شمار کے مطابق 155مور تھے لیکن اب صرف 150ہیں۔ جامعہ عثمانیہ کے حدود میں 5موروں کی تخفیف ریکارڈ کی گئی ہے اور 2011 میں شمار کئے گئے 450 مور تھے لیکن اب صرف 445مور ریکارڈ کئے گئے ہیں۔ اوپل کے نواحی علاقوں میں 2011میں 150مور ریکارڈ کئے گئے تھے اب صرف 148 باقی رہ گئے ہیں۔ یونیورسٹی آف حیدرآباد میں بھی 3 قومی پرندوں کی تخفیف ریکارڈ کی گئی ہے۔ فی الحال یونیورسٹی آف حیدرآباد میں 247مور موجود ہیں جبکہ 2011میں 250مور شمار کئے گئے تھے۔ نہرو زوالوجیکل پارک میں فی الحال 42مور پائے جاتے ہیں جبکہ 2011میں یہ تعداد 45ہوا کرتی تھی۔ شمس آباد کے علاقوں میں موجود زرعی کھیتوں میں 500مور پائے جاتے ہیں۔ سابق میں یہ تعداد 550سے تجاوز کرگئی تھی۔ راموجی فلم سٹی میں بتایا جاتا ہے کہ 448 مور شمار کئے گئے ہیں جبکہ سابق میں یہ تعداد 500 ہوا کرتی تھی۔ شہری علاقوں میں قومی پرندہ کی تعداد گھٹنے کی وجوہات کے متعلق ماہرین کا کہنا ہے کہ جنگلات میں تیزی سے ہورہی کمی اور آبادیوں میں اضافہ کے باعث قومی پرندے نقل مکانی کررہے ہیں۔ علاوہ ازیں آلودگی کے سبب ان کی اموات کی شرح میں بھی اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT