Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں نمس کے طرز پر مزید دو دواخانوں کی تعمیر کا اعلان

شہر میں نمس کے طرز پر مزید دو دواخانوں کی تعمیر کا اعلان

اسسٹنٹ ‘ اسوسی ایٹ و پروفیسرس کی سبکدوشی کی عمر 65 سال کرنے جائزہ لیا جائیگا ۔ چیف منسٹر کے سی آر کا جائزہ اجلاس
حیدرآباد 21 اکٹوبر ( سیاست نیوز ) چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ سرکاری ہاسپٹلس اور ڈاکٹرس پر عوام کا اعتماد و احترام دونوں بڑھا ہے ۔ شہر میں نمس کے طرز پر مزید 2 سرکاری ہاسپٹلس تعمیر کرنے کا اعلان کیا ۔ اسسٹنٹ پروفیسرس ، اسوسی ایٹ پروفیسرس اور پروفیسرس کے ریٹائرمنٹ کی حد عمر 65 سال کرنے کا جائزہ لینے عہدیداروں کو ہدایت دی ۔ چیف منسٹر نے آج پرگتی بھون میں محکمہ صحت کے عہدیداروں کا اجلاس طلب کیا ۔ اس موقع پر کے سی آر کٹ اسکیم متعارف کرانے کے بعد کام کے بوجھ میں اضافہ ہوجانے کے باوجود صبر و تحمل اور ذمہ داری سے خدمات انجام دینے والے ڈاکٹرس کو نقد ترغیبی انعام دینے کی فائیل پر دستخط کی ۔ چیف منسٹر نے عہدیداروں سے کہا کہ کے سی آر کٹ اسکیم کے روشناس کے علاوہ حکومت کی جانب سے سرکاری ہاسپٹلس میں بنیادی سہولتوں کو یقینی بنانے پر عوام کا سرکاری ہاسپٹلس پر اعتماد بڑھ گیا ہے ۔ عوامی بھروسے کو قائم رکھنے ڈاکٹرس ، طبی عملہ اور محکمہ صحت کے عہدیدار مزید ذمہ داری سے خدمات انجام دیں ۔ مستقبل میں تلنگانہ کو صحت مند اسٹیٹ میں تبدیل کرنے چیف منسٹر نے عہدیداروں کو ہیلت میاپ تیار کرنے کا مشورہ دیا ۔ انہوں نے تسلیم کیا کہ کے سی آر کٹ کی اسکیم سے سرکاری ہاسپٹلس میں کام کا بوجھ بڑھ گیا ہے ۔ پی ایچ سی سے ٹیچنگ ہاسپٹلس تک مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوگیا ہے ۔ سرکاری ہاسپٹلس میں مختص بیڈس سے زیادہ مریض علاج کیلئے پہونچنے کے باوجود ڈاکٹرس اور طبی عملہ غریب عوام کے ساتھ جس طرح حسن سلوک سے پیش آرہے ہیں وہ ناقابل فراموش ہے وہ اس جذبہ کو سلام کرتے ہیں ۔ ہاسپٹلس میں مریضوں کی تعداد بڑھ جانے کے بعد ڈاکٹرس اور عملہ اوور ٹائم کام میں خدمات انجام دے رہے ہیں جس پر چیف منسٹر نے ڈاکٹرس اور طبی عملے سے اظہار تشکر کیا ہے ۔

زچگی کیلئے حاملہ خواتین کے سرکاری ہاسپٹلس پہونچنے سے غیر ضروری آپریشن کے واقعات میں کافی کمی آئی ۔ حاملہ خواتین کے سرکاری ہاسپٹلس میں مرحلہ واری چک اپ کرانے سے بچہ اور زچہ دونوں صحت مند رہ پارہے ہیں اور نومولود کی شرح اموات بھی بڑی حد تک گھٹ گئی ہے ۔ ان اقدامات سے ریاست میں صحت مند نسل پروان چڑھ رہی ہے ۔ غریب عوام پر نا صرف مالی بوجھ کم ہوا ہے بلکہ سرکاری ہاسپٹلس میں زچگی کرانے سے حکومت انہیں 15 ہزار روپئے تک معاوضہ ادا کر رہی ہے ۔ چیف منسٹر نے سرکاری ہاسپٹلس میں ضرورت کے مطابق طبی عملے کے تقررات کی عہدیداروں کو ہدایت دی ہے ۔ انہوں نے محکمہ صحت کو فنڈز کی اجرائی میں کبھی تاخیر نہ ہونے کا تیقن دیا ۔ کے سی آر نے کہا کہ ہر سال موسم برسات میں ضلع عادل آباد کے علاوہ دوسرے ایجنسی علاقوں میں متعدی بیماریوں سے کئی افراد کی اموات ہوا کرتی تھی تاہم محکمہ صحت کے خصوصی اقدامات سے جاریہ سال متعدی بیماری اور اموات پر بڑی تک قابو پایا گیا ہے ۔ چیف منسٹر نے اسسٹنٹ پروفیسرس ، اسوسی ایٹ پروفیسرس اور پروفیسرس کی ملازمت سے سبکدوشی کی عمر کو 58 سال سے بڑھا کر 65 سال تک کرنے کا جائزہ لینے کی عہدیداروں کو ہدایت دی ۔ اضلاع عادل آباد ، محبوب نگر ، سدی پیٹ کے علاوہ نلگنڈہ سوریہ پیٹ میں قائم ہونے والے میڈیکل کالجس و ٹیچنگ ڈاکٹرس کے ریٹائرمنٹ کی حد عمر 58 سے بڑھاکر 65 سال کرنے کی عہدیداروں نے تجویز پیش کی جس پر چیف منسٹر نے ردعمل کا اظہار کیا ۔ اضلاع نلگنڈہ اور سوریہ پیٹ میں میڈیکل کالجس کے قیام کیلئے میڈیکل کونسل آف انڈیا کے قواعد کے مطابق کالجس میں سہولتیں فراہم کرنے پر زور دیا ۔ مستحق ڈاکٹرس کو بغیر کسی تاخیر کے ترقی دینے ، ریجنسی اور دور دراز علاقوں میں خدمات انجام دینے والے ڈاکٹرس کو وہیں قیام کرنے کے قواعد میں ترمیم کرتے ہوئے انہیں قریبی شہروں میں قیام کرنے کی اجازت دینے کی ہدایت دی ۔ سرکاری ہاسپٹلس کی قدیم عمارتوں کی جگہ نئی تعمیرات کرنے تجاویز حکومت کو روانہ کرنے کا مشورہ دیا ۔ ڈاکٹرس کے علاوہ طبی عملے کیلئے کوارٹرس تعمیر کرنے بڑے ہاسپٹلس کے احاطے میں غریب مریضوں کے رشتہ داروں کے قیام کیلئے شلٹرس تعمیر کرنے اور اس میں بنیادی سہولتیں فراہم کرنے کی بھی احکامات جاری کئے ۔ شہر کی بڑھتی آبادی کے پیش نظر نمس کے طرز پر حیدرآباد کے او آر آر کے قریب مزید دو بڑے ہاسپٹلس تعمیر کرنے ورنگل کے راستے میں بی بی نگر ایمس قائم ہورہا ہے ۔ دیگر مقامات پر اراضی حاصل کرنے پر زور دیا ۔ میٹرنیٹی ہاسپٹلس کی تعداد میں مزید اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا ۔

TOPPOPULARRECENT