Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں وبائی امراض ، موسم کی تبدیلیوں کا اثر

شہر میں وبائی امراض ، موسم کی تبدیلیوں کا اثر

مریضوں کی کثرت ، مچھروں اور کچرے کے ڈھیر اصل سبب ، بلدیہ خواب غفلت میں
حیدرآباد ۔ /5 نومبر (سیاست نیوز) شہر میں وبائی امراض بالخصوص وائرل فیور کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ ماہر اطباء کا کہنا ہے کہ موسم میں آرہی تبدیلیوں کے باعث وبائی امراض پھیل رہے ہیں ۔ ان وبائی امراض کی روک تھام کیلئے یہ ضروری ہے کہ عوام موسم کی تیز رفتار تبدیلیوں کے اثرات سے بچنے کے اقدامات کوئی یقینی بنائیں ۔ بالخصوص پینے کے پانی کے استعمال اور اشیائے خوردونوش کے استعمال میں احتیاط کی جائے ۔ شہر میں کھانسی ، بخار ، حلق میں درد و جلن ، اعضاء شکنی ، زکام ، سردرد جیسے وبائی امراض کی شکایات کے ساتھ لوگ دواخانوں سے رجوع ہورہے ہیں ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں مچھروں کی بہتات سے بھی عوام میں کافی تشویش پائی جاتی ہے ۔ سابق میں شہر کے مخصوص علاقوں میں مچھروں کی افزائش سے مکینوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا تھا لیکن حالیہ عرصہ یہ دیکھا جارہا ہے کہ شہر کے تقریباً ہر محلہ میں رات کے اوقات میں مچھر اور باریک کیڑوں کی بہتات پائی جارہی ہے ۔ عوام کا الزام ہے کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے کچرے کی بروقت عدم نکاسی کے سبب یہ صورتحال پیدا ہورہی ہے جبکہ بلدی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ وبائی امراض کے پھیلنے کی بنیادی وجوہات موسم میں آرہی تبدیلی ہے ۔ ڈاکٹرس کی جانب سے ان امراض کے متعلق یہ واضح کیا جارہا ہے کہ موسمی تبدیلی کے سبب آرہے بخار کے تعلق سے عوام کو تشویش کا شکار ہونے کی ضرورت نہیں ہے چونکہ یہ وبائی امراض اکثر موسم کی تبدیلی کے سبب پھیلتے ہیں لیکن چند ماہ قبل شہر میں سوائن فلو اور ڈینگو کی وبا کے باعث عوام میں پیدا شدہ تشویش کی وجہ سے اب جو وبائی امراض نظر آرہے ہیں ان کی علامات سے بھی عوام میں خوف کا ماحول پایا جارہا ہے جبکہ ان وبائی امراض کا ڈینگو اور سوائن فلو جیسی خطرناک بیماریوں سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ یہ وبائی امراض موسمی بیماریاں ہیں جو موسمی تبدیلی کے سبب پھیلتی ہیں ۔ ان امراض سے بچوں کو محفوظ رکھنے کیلئے خصوصی اقدامات کئے جانے چاہئیے چونکہ ان امراض کے اثرات بچوں پر بہت جلد ہوا کرتے ہیں ۔ ہلکے اور شدید بخار کی صورت میں فوری طور پر ڈاکٹرس سے رجوع کرنے کی ضرورت ہے جبکہ کھانسی ، سردی ، نزلہ اور اعضاء شکنی کی شکایات پر بھی ماہر اطباء سے مشورہ کے بعد ہی ادویات کا استعمال کیا جانا چاہئیے ۔

TOPPOPULARRECENT