Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / شہر میں 61ملی میٹر بارش،گرمی میںعارضی راحت

شہر میں 61ملی میٹر بارش،گرمی میںعارضی راحت

ریاست تلنگانہ میں آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید بارش کا امکان
حیدرآباد۔/10مئی، ( سیاست نیوز) حیدرآباد میں کل رات ہوئی بارش کے بعد عوام الناس کو شدید گرمی سے عارضی راحت نصیب ہوئی ہے۔ ریاست تلنگانہ کے مختلف علاقوں میں بھی کل اوسط درجہ کی بارش ریکارڈ کی گئی۔ طوفانی ہواؤں کے ساتھ ژالہ باری کے باوجود درجہ حرارت 40 ڈگری سے زائد ہونے کی پیش قیاسی کی گئی ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق خلیج بنگال اور بحیرہ عرب سے آنے والی ہواؤں کا رُخ بتارہا ہے کہ ملک کے وسط علاقوں سے موسمی تبدیلی وقوع ہونے کا امکان ہے۔ کل رات دیر گئے شدید بارش کے بعد گرمی کی شدت میں کمی محسوس کی گئی۔ تلنگانہ کے تمام اضلاع میں آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران کہیں تیز اور کہیں اوسط درجہ کی بارش کا امکان ہے۔ اگرچیکہ ساحلی آندھرا پردیش سے جنوبی ٹاملناڈو کی جانب ہوا کے دباؤ میں کمی کی وجہ سے یہاں پر فی گھنٹہ 1.5 اور 3.6کلو میٹر کی رفتار سے ہوائیں چل رہی ہیں۔ اوسط درجہ کی بارش یا ژالہ باری کا امکان ہے۔ حیدرآباد اور اطراف و اکناف کے علاقوں میں مطلع جزوی طور پر ابرآلود رہے گا۔ صبح کے اوقات میں بارش کی پیش قیاسی کی گئی ہے۔ شدید بارش کے باوجود درجہ حرارت 40 ڈگری سیلسیس اور 25 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا جائے گا۔قبل ازیں محکمہ موسمیات نے یہ پیش گوئی کی تھی کہ شہر حیدرآباد میں بارش ہوگی ۔ دن میں زبردست گرمی کی تمازت کو محسوس کیا گیا اور درجہ حرارت بھی زیادہ تھا جس سے سڑکیں سنسان تھی ۔ رات میں بارش کے بعد موسم تبدیل ہوگیا اور سرد ہوائیں چلنے لگی جس سے شہریوں نے گرمی سے راحت کی سانس لی ۔ کل رات ہوئی بارش کے سبب ضلع کھمم کے اینوکور منڈل میں ژالہ باری اور تیز طوفانی ہوائیں دیکھی گئیں جس سے بڑے درخت سڑکوں پر گر گئے ۔ساتھ ہی مارکٹ یارڈ میں رکھی تیار فصلوں کے تھیلوں کو بھی شدید نقصان پہنچا کیونکہ یہ تھیلے گیلے ہوگئے ۔ تھیلوں کے گیلے ہونے پر کسانوں نے شدید مایوسی کا اظہار کیا۔ ان کسانوں نے تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ پہلے ہی وہ کئی مسائل سے دوچار ہیں ، ایسے میں اچانک بے موسم ہوئی بارش نے ان کی فصلوں کو نقصان پہنچایا ہے ۔کھمم کے کوتہ گوڑم کی اہم شاہراہ پر کئی درخت گر گئے جس سے ٹریفک میں مشکلات پیش آئیں۔کئی مقامات پر بجلی کے کھمبے بھی گر گئے جس سے بجلی کی سپلائی متاثر ہوئی ۔اس اچانک ہوئی بارش سے آم کی فصلوں کو بھی نقصان پہنچا اور کئی کچے آم نیچے گر گئے ۔

TOPPOPULARRECENT