Monday , February 26 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر کی تجارتی برادری ، کاروبار میں ’’مندی‘‘ سے پریشان

شہر کی تجارتی برادری ، کاروبار میں ’’مندی‘‘ سے پریشان

جی ایس ٹی کے نفاذ سے مارکٹ میں خرید و فروخت سست روی کا شکار
حیدرآباد۔13فروری (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد کی تجارتی برادری میں مندی کے سبب پائی جانے والی پریشانی کو دیکھتے ہوئے مایوسی پیدا ہونے لگی ہے اور کہا جا رہاہے کہ آئندہ دنوں میں بازار میں جاری مندی کا اگر خاتمہ نہیں ہوتا ہے تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہو سکتے ہیں۔ تجارتی مندی صرف حیدرآباد میں نہیں بلکہ ملک کی بیشتر تمام ریاستوں میں دیکھی جانے لگی ہے اور عوام کی قوت خرید میں کمی آتی جا رہی ہے جس کے سبب صورتحال بتدریج ابتر ہوتی جا رہی ہے ۔ حکومت کی جانب سے جی ایس ٹی کے نفاذ کے بعد حالات میں تبدیلی کی توقع کی جا رہی تھی لیکن بجٹ کے بعد بھی حالات میں کوئی تبدیلی رونما نہ ہونے کے باعث صورتحال ابتر ہوتی جارہی ہے ۔ تاجرین کا کہناہے کہ ڈیزل کے داموں میں روز افزوں ہو رہے اضافہ کا اثر بازار میں موجود اشیاء پر ہونے لگا ہے اور ان کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہورہا ہے لیکن اس پر کنٹرول کا میکانزم نہ ہونے کے سبب بازاروں میں مندی دیکھی جانے لگی ہے اور عوام میں اشیاء ضروریہ کے علاوہ دیگر اشیاء کی خریداری کا رجحان نہیں دیکھا جا رہاہے ۔ حکومت کی جانب سے تجارتی برادری کو نظر انداز کرنے کی پالیسی ملک میں بیروزگاری کے خاتمہ کے بجائے اضافہ کا سبب بن سکتی ہے کیونکہ معمولی تجارتی اداروں میں بھی ملازمین کی تخفیف کی جانے لگی ہے اور کہا جا رہا ہے کہ آئندہ چند ماہ کے دوران بازار کی صورتحال میں کوئی بہتری کے آثار نہیں ہیں جس کے سبب تاجرین ملازمین کی تخفیف کرنے پر مجبور ہوتے جا رہے ہیں۔ حکومت ہند نے اقتدار حاصل کرنے سے قبل ملازمتوں کی فراہمی کے سلسلہ میں جو اعلانات کئے تھے ان پر عمل آوری تو نہیں ہوئی لیکن تجارتی برادری کی حالت جس رفتار سے ابتری کا شکارہورہی ہے اسے دیکھتے ہوئے یہ کہا جانے لگا ہے کہ اب بیروزگاروں کی تعداد میں اضافہ ہونے لگے گا۔ حیدرآباد کے تاجرین پارچہ‘ ریستوراں مالکین کا کہناہے کہ گذشتہ 6ماہ کے دوران تجارتی مندی کا جائزہ لیا جائے تو 35تا40 فیصد گراوٹ ریکارڈ کی جا رہی ہے اور اسی طرح دیگر تجارتی اداروں کی صورتحال بھی انتہائی ابتر ہوتی جا رہی ہے کیونکہ انہیں بھی گاہک کی قلت کا شدت کے ساتھ احساس ہونے لگا ہے ۔ تاجرین کا کہناہے کہ تجارتی مندی کی بنیادی وجہ عوام کی قوت خرید میں آنے والی کمی ہے اور اس کمی کا سلسلہ کرنسی تنسیخ سے ہی شروع ہوچکا تھا لیکن اب جبکہ حالات کو بہتر بنانے کے اقدامات کے اعلانا ت کئے جا رہے ہیں ایسے میں عالمی بازار میں تیل کی قیمت میں ہونے والے اضافہ کے اثرات سے ہندستانی بازار وں میں مہنگائی بڑھنے لگی ہے جو کہ صورتحال کو مزید ابتر بنا رہی ہے۔ عوام کے اخراجات میں کمی اور ضرورت کے مطابق خرید و فروخت کے رجحان کے سبب تجارتی مندی میں اضافہ ریکارڈ کیا جانے لگا ہے۔

TOPPOPULARRECENT