Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر کے بلدی مسائل کی جنگی خطوط پر یکسوئی کی ہدایت

شہر کے بلدی مسائل کی جنگی خطوط پر یکسوئی کی ہدایت

عوام کو بہتر بلدی سہولتوں کی فراہمی کا فیصلہ، حکومت کے پاس فنڈس کی کوئی کمی نہیں، چیف منسٹر کے سی آر کا جائزہ اجلاس سے خطاب

عوام کو بہتر بلدی سہولتوں کی فراہمی کا فیصلہ، حکومت کے پاس فنڈس کی کوئی کمی نہیں، چیف منسٹر کے سی آر کا جائزہ اجلاس سے خطاب

حیدرآباد 3 جون (سیاست نیوز) تلنگانہ کے چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے شہر حیدرآباد میں سڑکوں اور ڈرینج کی ابتر صورتحال پر سخت افسوس اور برہمی کا اظہار کرتے ہوئے گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن (جی ایچ ایم سی) حکام کو ہدایت کی کہ وہ شہریوں کو مؤثر انداز میں تمام بنیادی بلدی سہولتوں کی فراہمی کے لئے فی الفور اقدامات کریں۔ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے جن کے پاس بلدی نظم و نسق کا قلمدان بھی موجود ہے، سکریٹریٹ میں واقع اپنے چیمبرس میں جی ایچ ایم سی کمشنر اور دیگر عہدیداروں کا اہم جائزہ اجلاس طلب کیا تھا۔ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ (کے سی آر) نے بلدی حکام سے کہاکہ عوام کو بلدی سہولتوں کی فراہمی کے معاملہ میں ان کی حکومت کے پاس فنڈس کی کوئی کمی نہیں ہے اور بنیادی عوامی مقصد کے لئے ریاستی ٹی آر ایس حکومت خاطر خواہ فنڈس فراہم کرنے تیار ہے۔ کے سی آر نے جو نئی ریاست تلنگانہ کے پہلے چیف منسٹر کی حیثیت سے کل حلف برداری کے بعد جائزہ لیا ہے، شہر حیدرآباد کے برینڈ امیج کو بہتر بنانے پر اپنی توجہ مرکوز کی ہے۔ اس اجلاس میں تاریخی شہر حیدرآباد میں درپیش اہم ترین مسائل جیسے پینے کے پانی کی سربراہی، ڈرینج، سڑکیں اور ٹریفک کی یکسوئی کے لئے بنیادی سہولتوں کی فراہمی و ترقی کے لئے انجام دیئے جانے والے اقدامات پر اندرون پندرہ یوم میں ایک جامع ایکشن پلان و منصوبہ پر مبنی تفصیلی رپورٹ رتب کرنے کی گریٹر حیدرآباد میونسپل کمشنر سومیش کمار کو چیف منسٹر چندرشیکھر راؤ نے ضروری ہدایات دیں اور آئندہ 40 سال تک اس تاریخی شہر حیدرآباد میں پینے کے پانی، ڈرینج و دیگر مسائل درپیش نہ ہونے کے لئے دور اندیشی کے ساتھ اقدامات کرتے ہوئے ترقیاتی کام انجام دینے کی عہدیداران جی ایچ ایم سی کو مشورہ دیا اور کہاکہ وقتی طور پر مسائل کی یکسوئی کے لئے اقدامات سے گریز کرتے ہوئے طویل مدت کے لئے اقدامات کئے جانے چاہئے۔ وہ عالمی سطح کے ترقی یافتہ شہروں کے طرز پر تاریخی شہر حیدرآباد کو ترقی دینے کے لئے خواہ کتنی ہی رقومات خرچ کیوں نہ ہوں، وہ (حکومت) برداشت کرنے کے لئے تیار ہے۔ انھوں نے کہاکہ شہر حیدرآباد کے لئے بہت جلد آئی ٹی آئی آر آرہا ہے جس کی وجہ سے بھاری صنعتوں کے قیام کے زبردست مواقع فراہم ہوں گے لہذا ان ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے تیز رفتاری کے ساتھ کام انجام دیئے جانے چاہئے۔ کے سی آر نے کہاکہ شہر حیدرآباد میں ابھی تک نظام دور حکومت میں تعمیر کردہ ڈرینج سسٹم و پانی کے بہاؤ کی موریاں و نالے موجود ہیں، اس مسئلہ پر سابقہ کوئی حکومت نے اپنی دلچسپی کا اظہار نہیں کیا۔ جس کے نتیجہ میں کوئی بھی عہدیدار شہر حیدرآباد میں ڈرینج نظام و پانی کے بہاؤ کی موریوں کو وسعت دینے پر توجہ نہ دینے کے باعث شہر حیدرآباد میں ڈرینج اور بارش کے پانی کی نکاسی کا مسئلہ سنگین شکل اختیار کرچکا ہے۔ بارش کے موسم کو پیش نظر رکھتے ہوئے شہر حیدرآباد میں تمام تر احتیاطی اقدامات جنگی خطوط پر اقدامات کرنے کی کمشنر جی ایچ ایم سی مسٹر سومیش کمار کو چیف منسٹر نے ہدایات دیں۔ کمشنر جی ایچ ایم سی نے چیف منسٹر کو واقف کروایا کہ میٹرو واٹرورکس کے ساتھ نئی پائپ لائنوں کی تنصیب عمل میں لانے کا جی ایچ ایم سی نے ایک جامع منصوبہ مرتب کیا ہے اور اس منصوبہ پر عمل کرتے ہوئے کاموں کی تکمیل کرنے پر پینے کے پانی کا مسئلہ حل ہونے کی قوی توقع کا اظہار کیا۔ آج منعقدہ پہلے جائزہ اجلاس میں ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر محمد محمود علی، وزراء مسرس این نرسمہا ریڈی، وزیرداخلہ پدما راؤ، وزیر نشہ بندی و آبکاری، چیف سکریٹری مسٹر راجیو شرما کے علاوہ محکمہ بلدی نظم و نسق کے عہدیدار و چیف منسٹر سکریٹریٹ کے عہدیدار بھی شریک تھے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT