Thursday , December 13 2018

شہر کے بیشتر امیدوار خود اپنے لئے ووٹ نہیں دے سکتے

ایک حلقہ میں قیام اور کسی اور حلقے سے مقابلہ ۔ مقامی امیدواروں کو نامزذ کرنے عوام کی رائے

ایک حلقہ میں قیام اور کسی اور حلقے سے مقابلہ ۔ مقامی امیدواروں کو نامزذ کرنے عوام کی رائے
حیدرآباد۔/15اپریل، ( سیاست نیوز) انتخابات میں خود کیلئے ووٹ حاصل کرنے امیدوار رائے دہندوں کو منانے کا کوئی موقع ہاتھ سے گنوانا نہیں چاہتے۔ انتخابی مہم کے دوران امیدواروںکو بزرگ رائے دہندوں کی دعائیں اور آشیرواد حاصل کرنے اور ان کے آگے ہاتھ جوڑے ہوئے دیکھا جاتا ہے لیکن بعض امیدوار ایسے بھی ہیں جو خود اپنے لئے ووٹ نہیں لے سکتے۔ امیدوار ہی نہیں بلکہ ان کے افراد خاندان بھی انہیں اس لئے ووٹ نہیں دے سکتے کیونکہ ان کا تعلق دوسرے حلقہ سے ہوتا ہے۔حیدرآباد میں ایسے امیدواروں کی کمی نہیں جو خود اپنے آپ کو ووٹ نہیں دے پائیں گے۔ اکثر یہ بھی دیکھا گیا ہے کہ رائے دہی کے دن امیدوار اپنے حلقہ میں اس قدر مصروف ہوتا ہے کہ اسے اپنے ووٹ کا حق استعمال کرنے کا موقع نہیں ملتا کیونکہ اس کے لئے اسے دوسرے حلقہ کا رُخ کرنا ضروری ہوتا ہے۔ حیدرآباد اور سکندرآباد لوک سبھا حلقوں کے موجودہ ارکان پارلیمنٹ اپنے اپنے حلقوں کیلئے غیر مقامی ہیں۔ حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ کا ووٹ سکندرآباد لوک سبھا حلقہ کے تحت خیریت آباد اسمبلی حلقہ میں ہے جبکہ سکندرآباد کے رکن پارلیمنٹ انجن کمار یادو کا ووٹ حلقہ لوک سبھا حیدرآباد کے چارمینار اسمبلی حلقہ میں ہے۔ اس کے علاوہ پرانے شہر سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی بھی اپنے حلقوں کیلئے غیر مقامی ہیں۔ چندرائن گٹہ اسمبلی حلقہ کے دو اہم امیدواروں کا تعلق اس حلقہ سے نہیں ہے۔ موجودہ رکن اسمبلی حلقہ اسمبلی جوبلی ہلز کے رائے دہندہ ہیں۔ تلگودیشم کے ٹی سرینواس یادو جو صنعت نگر اسمبلی حلقہ سے مقابلہ کررہے ہیں تاہم وہ سکندرآباد کنٹونمنٹ کے امیدوار ہیں۔ صنعت نگر اسمبلی حلقہ کے موجودہ رکن اسمبلی ایم ششی دھر ریڈی سکندرآباد اسمبلی حلقہ کے رائے دہندہ ہیں۔ الیکشن کمیشن کے ذرائع نے بتایا کہ پرانے شہر کے اسمبلی حلقوں کی نمائندگی کرنے والے بیشتر نمائندوں کے مکانات دوسرے اسمبلی حلقوں میں ہیں۔ اسی طرح ان حلقوں سے مقابلہ کرنے والے کئی امیدوار دوسرے حلقوں کے ووٹر ہیں۔ غیر مقامی امیدواروں کو میدان میں اُتارنے کا رجحان تقریباً ہر پارٹی میں ہے۔ ریاستی اور قومی سطح پر بھی اس طرح کی کئی مثالیں دیکھنے کو ملیں گی۔ آندھرا پردیش کی دو اہم شخصیتیں سابق کرکٹر محمد اظہر الدین اور فلم اسٹار جیہ پردا راجستھان اور اتر پردیش سے مقابلہ کررہے ہیں۔ غیرمقامی امیدواروں سے عوام کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے کیونکہ وہ عوامی مسائل کی یکسوئی کیلئے فوری دستیاب نہیں ہوتے اور عوام کو ان سے ملاقات کیلئے دوسرے علاقوں کو جانا پڑتا ہے۔ رائے دہندوں کا یہ احساس ہے کہ مقامی امیدوار کو ٹکٹ دیا جانا چاہیئے کیونکہ وہ مقامی مسائل سے بخوبی واقف ہوتا ہے اور منتخب ہونے کی صورت میں عوام کی بہتر خدمت کے امکانات رہتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT