Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر کے بیشتر اے ٹی ایم میں کرنسی کی قلت

شہر کے بیشتر اے ٹی ایم میں کرنسی کی قلت

عوام کو شدید تکلیف کا سامنا، مسئلہ کو حل کرنے کوئی بھی اقدامات کرنے سے قاصر
حیدرآباد۔15اپریل(سیاست نیوز) شہر کے اے ٹی ایم میں اب تک کرنسی قلت کے سبب عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے لیکن کوئی اس مسئلہ کے حل کیلئے اقدامات یا نمائندگی کیلئے تیار نہیں ہے اور پرانے شہر کے 99فیصد اے ٹی ایم مراکز میں نقد رقم کی عدم موجودگی اور تجارتی اداروں کی جانب سے کارڈ کے ذریعہ ادائیگی قبول نہ کئے جانے کے سبب عوام کو شدید تکالیف کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور منتخبہ عوامی نمائندوں کی جانب سے بینکوں سے اس سلسلہ میں نمائندگی کے معاملہ میں اختیار کردہ خاموشی سے عوام میں شدید برہمی پائی جاتی ہے۔کرنسی تنسیخ کے بعد جو صورتحال پیدا ہوئی تھی اب تک بھی شہر کے کئی اے ٹی ایم مراکز اسی صورتحال سے گذر رہے ہیں اور اس کا نقصان عوام کو برداشت کرنا پڑ رہا ہے ۔تجارتی علاقوں میں موجود اے ٹی ایم مراکز کے متعلق عوام کی شکایت ہے کہ ان مراکز سے تاجرین رقومات منہاء کر رہے ہیں اور تاجرین کا کہناہے کہ اے ٹی ایم مراکز میں نقد رقومات نہ ہونے کے سبب تجارتی بازاروں میں مندی ریکارڈ کی جا رہی ہے ۔ بینک عہدیداروں کی شکایات ہیں کہ کھاتہ داروں کی جانب سے کھاتوں میں رقومات جمع نہ کروائے جانے کے سبب وہ اے ٹی ایم مراکز میں نقد رقومات جمع کرنے سے قاصر ہیں۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق حکومت اور ریزرو بینک آف انڈیاکی پالیسی کے تحت اے ٹی ایم مراکز میں محدود نقد رقومات رکھی جا رہی ہیں اور حکومت کی جانب سے کارڈ اور الکٹرانک ادائیگی کو فروغ دینے کی کوشش کی جا رہی ہے لیکن پرانے شہر میں موجود تجارتی علاقو ںمیں 60 فیصد سے زیادہ تجارت نقد رقم پر ہوا کرتی ہے اسی لئے پرانے شہر میں نقد کی قلت سے صارفین اور تاجرین دونو ںکو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ اے ٹی ایم مراکز میں محدود رقومات کے سبب عوام کو ہونے والی مشکلات کو دور کرنے کے سلسلہ میں مختلف بینکوں کی شاخوں کی جانب سے ریجنل آفس کو متوجہ کروائے جانے پر واضح طور پر یہ کہا جا رہا ہے کہ وہ اس مسئلہ پر توجہ وہ دیں کیونکہ بینکوں کی جانب سے اے ٹی ایم میں نقد نہ رکھنے یا محدود رکھنے کا فیصلہ حکومت اور ریزرو بینک کی پالیسی کے مطابق کیا گیا ہے اور اس فیصلہ کے خلاف کو ئی بھی کاروائی کے کے امکانات نہیں ہیں۔ ریاستی حکومت کی جانب سے بھی اے ٹی ایم میں نقد رقومات نہ ہونے کی شکایات کی گئی لیکن اس کے باوجود اس مسئلہ کو حل کرنے کی سمت کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔

TOPPOPULARRECENT