Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر کے غیر مجاز ہورڈنگس پر جی ایچ ایم سی کی معنیٰ خیزخاموشی

شہر کے غیر مجاز ہورڈنگس پر جی ایچ ایم سی کی معنیٰ خیزخاموشی

پراپرٹی ٹیکس کی حصولی میں آگے، مزید آمدنی کے ذرائع نظرانداز، بلدیہ کی ناقص کارکردگی سے عوام سخت برہم

پراپرٹی ٹیکس کی حصولی میں آگے، مزید آمدنی کے ذرائع نظرانداز، بلدیہ کی ناقص کارکردگی سے عوام سخت برہم
حیدرآباد 22 مارچ (سیاست نیوز) دونوں شہروں میں غیر مجاز ہورڈنگس کے متعلق بلدی عہدیداروں کی جانب سے اختیار کردہ خاموشی سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ بلدی عہدیدار غیر مجاز ہورڈنگس کے اس اسکام میں راست یا بالواسطہ طور پر ملوث ہیں اسی لئے ان غیر مجاز ہورڈنگس کے متعلق کارروائی سے اجتناب کیا جاتا ہے۔ حکومت کی جانب سے بلدی فنڈس کے استعمال کی شکایات تو عام ہیں اور منتخبہ بلدی نمائندے متعدد مرتبہ اس مسئلہ پر توجہ مبذول کرواچکے ہیں لیکن اس کے باوجود نہ بلدی عہدیدار اس مسئلہ پر کوئی سخت موقف اختیار کرنے تیار ہیں اور نہ ہی حکومت کی جانب سے بلدی فنڈس کے استعمال کا سلسلہ بند ہوتا نظر آتا ہے۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد آمدنی نہ ہونے کا سبب بتاتے ہوئے عوام پر پراپرٹی ٹیکس کا بوجھ عائد کررہی ہے لیکن بلدیہ کو جن ذرائع سے آمدنی حاصل ہوسکتی ہے ان پر توجہ نہیں دی جارہی ہے۔ جس سے یہ بات واضح ہوتی ہے کہ بلدی عہدیدار ہورڈنگس سے ہونے والی آمدنی پر توجہ دینے سے زیادہ عوام پر مظالم کے ذریعہ دولت اکٹھا کرنے میں مصروف ہے۔ باوثوق ذرائع کے بموجب شہر حیدرآباد میں جملہ 30 ہزار سے زائد غیر مجاز ہورڈنگس موجود ہیں لیکن بلدی عہدیدار اِن ہورڈنگس کے متعلق انجان بنے ہوئے ہیں۔ چند برسوں قبل ایک کارپوریٹر کی جانب سے اس مسئلہ کو اُٹھائے جانے کے بعد مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے شہر کے مختلف مقامات پر غیر مجاز ہورڈنگس کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی کی گئی لیکن اچانک کارروائی بند کردی گئی اور پھر ہورڈنگس جوں کے توں برقرار ہیں۔ کارپوریشن میں موجود عہدیداروں کا خیال ہے کہ اگر پراپرٹی ٹیکس کے بجائے ہورڈنگس سے کرایہ اور غیر مجاز ہورڈنگس پر جرمانے عائد کئے جانے لگیں تو دونوں شہروں میں کروڑہا روپئے وصول کئے جاسکتے ہیں۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے حالیہ عرصہ میں اشتہاری کمپنیوں کے ٹیکس میں اضافہ کا فیصلہ کیا ہے لیکن بلدی عہدیدار خود اس موقف میں نہیں ہیں کہ وہ یہ بتاسکیں کہ دونوں شہروں میں کتنے غیر مجاز ہورڈنگس ہیں اور ان ہورڈنگس کا کون استعمال کررہا ہے۔ شہر میں تشہیری مقاصد کے تحت نصب کئے جانے والے ان ہورڈنگس کی آمدنی بلدیہ کو بہت بڑا سہارا دے سکتی ہے تاکہ شہر کی ترقی میں کسی قسم کی کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہونے پائے لیکن یہ اسی وقت ممکن ہے جب مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے اعلیٰ عہدیدار جو اس طرح کے اسکامس سے ناواقف ہیں وہ شہر کی اہم شاہراہوں پر نصب کردہ ہورڈنگس کا سروے کرواتے ہوئے اس بات کا پتہ چلائیں کہ شہر کا کونسا ہورڈنگ کس ایجنسی کو الاٹ کیا گیا ہے اور جو بے نامی ہورڈنگس ہیں انھیں کون چلارہا ہے؟ بلدی عہدیدار اگر ان تفصیلات کو اکٹھا کرتے ہوئے کارروائی کا آغاز کرتے ہیں تو بلدیہ کی آمدنی میں اضافہ کے علاوہ شہر کی ہیئت بھی تبدیل کی جاسکتی ہے۔ ٹیکس کی شرحوں میں اضافہ یا تشہیری ٹیکس کے لئے قوانین و ضوابط کے اطلاق سے قبل مجلس بلدیہ عظیم ترحیدرآباد کو دونوں شہروں کے ہورڈنگس اور فلیکس کا جائزہ لینا چاہئے۔ چونکہ حالیہ دنوں میں یہ ہورڈنگس اور فلیکس سیاسی قائدین کی تصاویر سے سجے نظر آرہے ہیں۔ بلدیہ کے بعض عہدیداروں کا کہنا ہے کہ سیاسی مداخلت کے باعث بھی غیر مجاز ہورڈنگس کے معاملہ میں کارروائی دشواریوں کا سبب بنتی ہے اور سیاسی قائدین اس تشہیری مواد کو برقرار رکھنے پر دباؤ ڈالتے ہیں جس کے سبب عہدیدار غیر مجاز ہورڈنگس کو نکالنے یا اس پر تشہیری مواد دینے والی کمپنیوں کے خلاف کارروائی سے اجتناب کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT