Friday , November 16 2018
Home / شہر کی خبریں / شہر کے چاروں سمت آئی ٹی کمپنیوں کو توسیع دینے اقدامات

شہر کے چاروں سمت آئی ٹی کمپنیوں کو توسیع دینے اقدامات

شہر میں آئی ٹی کمپنیوں کے قیام کی شرح قومی شرح سے زیادہ ۔ وزیر آئی ٹی کے ٹی آر کا ادعا
حیدرآباد 10 جولائی (سیاست نیوز) وزیر آئی ٹی کے ٹی آر نے شہر کے چاروں سمت آئی ٹی کمپنیوں کو توسیع دینے حکومت کی جانب سے وسیع تر اقدامات کا دعویٰ کیا۔ آج بیگم پیٹ کیمپ آفس پر مختلف محکمہ جات کے اعلیٰ عہدیداروں کا جائزہ اجلاس طلب کیا۔ مستقبل کی حکمت عملی پر تفصیلی غور و خوض کیا گیا۔ موجودہ آئی ٹی گلسٹرس کے علاوہ اُپل، ناگول، صنعت نگر، میرچل، کومپلی جیسے مقامات پر آئی ٹی کمپنیوں کو فروغ دینے کی پیشرفت کا جائزہ لیا۔ انھوں نے علیحدہ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد حیدرآباد میں آئی ٹی کمپنیوں کے قیام کی شرح قومی شرح سے زیادہ ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہاکہ بہت جلد شہر میں آئی ٹی درآمد کی قدر لاکھوں کروڑ روپیوں میں پہونچ جائے گی۔ آئی ٹی کمپنیوں کے فروغ کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومت بنیادی سہولتوں پر توجہ دے رہی ہے۔ اجلاس میں پولیس، ٹریفک، برقی، محکمہ عمارات و شوارع، جی ایچ ایم سی، میٹرو ریل، ایچ ایم ڈی اے کی جانب سے کئے جانے والے کاموں کا بھی جائزہ لیا گیا۔ گچی باؤلی اور فینانشیل ڈسٹرکٹ جیسے علاقوں میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کیلئے منصوبہ بندی تیار کرنے عہدیداروں کو ہدایت دی۔ وزیر آئی ٹی نے کہاکہ راجندر نگر اور بدویل میں نئے آئی ٹی کلسٹرس قائم ہورہے ہیں۔ ابھی سے ان علاقوں میں بنیادی سہولتیں فراہم کرنے، سڑکوں کی توسیع کرنے، ڈرینج سسٹم کو باقاعدہ بنانے، پانی اور برقی کی سربراہی پر خاص توجہ دینے کے احکامات جاری کئے۔ کے ٹی آر نے کہاکہ حکومت کی نئی صنعتی پالیسی سے متاثر ہوکر کارپوریٹ ادارے اپنی کمپنیاں قائم کرنے دلچسپی دکھارہے ہیں۔ آئندہ 5 سال میں لاکھوں نوجوانوں کو آئی ٹی سیکٹر میں ملازمتیں فراہم ہونگی۔ اس لئے ترقی کو شہر کے ایک حصہ تک محدود رکھنے کے بجائے چاروں طرف ترقی دینے کی ضرورت ہے۔ مستقبل میں ٹریفک مسائل بھی پیدا ہوسکتے ہیں اس کو حل کرنے کام کیا جارہا ہے۔ ان ترقیاتی کاموں کے پیش نظر ضرورت کے مطابق پولیس اسٹیشنس، فائر انجن مراکز، فیزبلیٹی ہونے والے مقامات پر میٹرو اور ایم ایم ٹی ایس اسٹیشنس کے قیام کیلئے تیار رہنے کی عہدیداروں کو ہدایت دی۔ راجندر نگر و دیگر مقامات پر حصول اراضیات کے معاملے میں محکمہ مال، ٹی ایس آئی آئی سی، ضلع رنگاریڈی نظم و نسق اور دوسرے محکمہ جات کا اجلاس طلب کرکے مشاورت کا مشورہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT