Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / شیوسینا کارکن بی سی سی آئی ہیڈکوارٹر میں گھس پڑے

شیوسینا کارکن بی سی سی آئی ہیڈکوارٹر میں گھس پڑے

صدرنشین پاکستان کرکٹ بورڈ شہر یار خان سے ششنک منوہر کی بات چیت پر اعتراض

ممبئی ۔ 19 اکٹوبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستانی شخصیتوں کے خلاف اپنی جارحانہ مہم جاری رکھتے ہوئے شیوسینا کارکن آج انڈین کرکٹ بورڈ ہیڈکوارٹرس میں گھس پڑے جہاں اُنھوں نے پاکستان کرکٹ بورڈ ( پی سی بی ) سربراہ شہر یار خان کیخلاف نعرے لگائے ۔ اس کی وجہ سے دونوں ممالک کے مابین کرکٹ روابط کی بحالی کے مقصد سے طئے شدہ بات چیت منسوخ کرنی پڑی  ۔ مجوزہ باہمی سیریز کے سلسلے میں بات چیت دہلی میں کل منعقد ہوگی ۔ اس حملے کے بعد این ڈی اے پارٹنرس میں بڑھتے اختلافات بھی عیاں ہوگئے ہیں۔ صدر ریاستی بی جے پی راؤ صاحب دانوے نے کہاکہ اُن کی پارٹی شیوسینا کی اس طرح کی حرکتوں سے اتفاق نہیں کرتی اور اگر یہاں میچ منعقد کیا جائے تو پاکستانی ٹیم کو تحفظ فراہم کرے گی ۔ شیوسینا کے 10 کارکنوں کو پولیس کمشنر کے احکامات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے جمع ہونے پر گرفتار کرلیا گیا۔ ایک سینئر پولیس عہدیدار نے بتایا کہ ان تمام کی بعد ازاں مقامی عدالت میں 2000 روپئے کے شخصی مچلکہ پر ضمانت منظوری کرلی گئی ۔ بورٖڈ آف کنٹرول فار کرکٹ انڈیا ( بی سی سی آئی ) ہیڈکوارٹر کے باہر ہزاروں شیوسینا کارکن پلے کارڈس تھامے نعرے بازی کررہے تھے اور اُنھوں نے صدر بی سی سی آئی ششنک منوہر کا گھیراؤ کیا جس کی وجہ سے اُن کی شہریارخان کے ساتھ منعقد شدنی بات چیت منسوخ کردی گئی ۔ صدرنشین آئی پی ایل اور سینئر بورڈ عہدیدار راجیو شکلا نے کہاکہ مذاکرات کو ختم نہیں کیاگیا ہے بلکہ یہ جاری رہیں گے ۔ انھوں نے بتایا کہ ششنک منوہر اور شہریارخان آج رات یا کل دہلی آرہے ہیں جہاں مذاکرات کا دوسرا دور ہوگا ۔ پاکستان اور پی سی بی صدرنشین کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے شیوسینا کارکن ششنک منوہر سے اُلجھ گئے اور کہا کہ اُنھیں پڑوسی ملک کے ساتھ کسی طرح کے روابط استوار کرنا نہیں چاہئے کیونکہ وہ دہشت گردی کی سرپرستی کررہا ہے ۔ یہ کارکن سیاہ اور زعفرانی پرچم لئے منوہر سے بار بار یہ سوال کررہے تھے کہ کیا وہ پی سی بی سربراہ سے ملاقات کریں گے ۔ سینا وبھاگ پرموک پانڈو رنگ سکپال نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اُن کی پارٹی کا یہ موقف ہے کہ دونوں پڑوسی ممالک کے مابین کرکٹ میچس نہیں ہونے چاہئے ۔ آج کئے گئے اس حملے کی شیوسینا کی حلیف بی جے پی نے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ غنڈہ گردی کیلئے کوئی جگہ نہیں ہے جبکہ کانگریس نے اسے ناقابل معافی قرار دیاہے۔

TOPPOPULARRECENT