Wednesday , December 12 2018

شیوسینا کو غیرمسلمہ قرار دینے کا مطالبہ

نئی دہلی ۔ /12 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی نے آج شیوسینا اور اس کے ترجمان اخبار سامنا کے ایڈیٹر سنجے راوت کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔ شیوسینا نے مسلمانوں کے حق ووٹ کو چھین لینے کی تجویز پیش کی ہے ۔ عام آدمی پارٹی نے الزام عائد کیا کہ یہ آرٹیکل گھٹیا سیاست کا ثبوت ہے ۔ دو طبقات کے درمیان نفرت پھیلانے کی کوشش کی

نئی دہلی ۔ /12 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی نے آج شیوسینا اور اس کے ترجمان اخبار سامنا کے ایڈیٹر سنجے راوت کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔ شیوسینا نے مسلمانوں کے حق ووٹ کو چھین لینے کی تجویز پیش کی ہے ۔ عام آدمی پارٹی نے الزام عائد کیا کہ یہ آرٹیکل گھٹیا سیاست کا ثبوت ہے ۔ دو طبقات کے درمیان نفرت پھیلانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ عام آدمی پارٹی سنجے راوت کو فوری گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتی ہے ۔ شیوسینا کو غیرمسلمہ قرار دیا جائے ۔ بی جے پی زیرقیادت مہاراشٹرا حکومت کی جانب سے سنجے راوت اور شیوسینا کی پشت پناہی کی جارہی ہے ۔ عام آدمی پارٹی نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ الیکشن کمیشن کو قانون عوامی نمائندگان کے دفعات کے تحت شیوسینا کے خلاف کارروائی کی جانی چاہئیے اور اس پارٹی کو غیرمسلمہ قرار دیا جائے ۔

عام آدمی پارٹی نے بی جے پی پر بھی تنقید کی اور کہا کہ زعفرانی پارٹی کے قائدین اور ارکان پارلیمنٹ ملک میں فرقہ وارانہ فسادات پھیلانے اور عوام کو فرقہ وارانہ خطوط پر منقسم کرنے کیلئے کوشاں ہیں ۔ مسلم پرسنل لا بورڈ کے رکن کمال فاروقی نے سنجے رات کے بیان کی شدید مذمت کی اور کہا کہ یہ بیان بدبختانہ و قانون کے مغائر ہے ۔ کانگریس لیڈر ابھیشیک مانو سنگھوی نے راوت پر تنقید کی اور کہا کہ اس طرح کے ریمارکس جمہوری ہندوستان میں ناقابل قبول ہیں ۔

اقلیتی قومی کمیشن نے دہلی کے ایک وکیل اور شہری حقوق کے کارکن شہزاد پونا والا نے شکایت درج کرائی ہے اور شیوسینا ایم پی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ۔ پونا والا نے کہا کہ سنجے راوت مسلمانوں کو تمام اختیارات سے محروم کرنا چاہتے ہیں اور یہ دستور کی جانب سے دی گئی ضمانت کے مغائر ہے ۔ سماج وادی پارٹی لیڈر کمال فاروقی نے مزید کہا کہ دستور نے ہندوستان کے ہر شہری کو یکساں حقوق دیئے ہیں ۔ ذات پات رنگ و نسل یا مذہب کی تفریق کے بغیر شہریوں کو یکساں حقوق حاصل ہیں ۔ مسلمان بھی دستور کے دیئے گئے حقوق کے مطابق ووٹ دینے کا حق رکھتے ہیں ۔ بی جے پی لیڈر سائنا نے کہا کہ اخبار سامنا کے اداریہ کا خیال اس کی اپنی آزادانہ رائے ہے ۔ اس طرح کی تحریر کا مقصد صرف سنجے راوت ہی جانتے ہیں ۔ بی جے پی بھی کسی بھی قسم کی دلجوئی کی پالیسی کی مخالف ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ وہ ہر شہری کے ساتھ انصاف کی پالیسی سے بھی وابستہ ہے ۔

TOPPOPULARRECENT