Wednesday , December 13 2017
Home / اضلاع کی خبریں / صحافیوں کا 22 اگست کو ’’چلو کلکٹریٹ‘‘ احتجاجی پروگرام

صحافیوں کا 22 اگست کو ’’چلو کلکٹریٹ‘‘ احتجاجی پروگرام

سنگاریڈی میں پوسٹرس کا رسم اجراء ، ایم اے قادر فیصل ریاستی سیکریٹری ٹی یو ڈبلیو جے کا خطاب
سنگاریڈی۔16اگسٹ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) تشکیل تلنگانہ میں اہم رول ادا کرنے والے صحافیوں کے سا تھ ٹی آر ایس حکومت کا گذشتہ دو سال سے سوتیلا سلوک ہو رہا ہے ۔ اس خصوص میں ٹی یو ڈبلیو جے  ( آئی جے یو ) کی جانب سے 22 اگسٹ کو ’’ چلو کلکٹریٹ سنگاریڈی ‘‘  احتجاجی پروگرام کا انعقاد عمل میں لا یا جا رہا ہے ۔اس ضمن میں آج آئی بی گیسٹ ہائوز سنگاریڈی میں ریاستی سکریٹری ٹی یو ڈبلیو جے ( آئی جے یو) محمد عبدالقادر فیصل کے ہا تھوں پو سٹرس کی رسم اجرائی عمل میں آئی ۔اس موقع پر  اسٹاف رپورٹرس مسعود امتیاز احمد خان سہارا ‘ حافظ محمد عبدالقیوم اعتماد ‘ حافظ شیخ عارف رہنمائے دکن ‘ ایم اے متین صحافی دکن ‘ عبدالرحمن اکمل ملنگی نمائندہ 4tv  ‘محمد حاجی صدر پریس کلب سدا سیو پیٹ ‘ محمد عارف صدر ضلع فوٹو گرافر اسو سی ایشن ‘ محمد ستار خان ایس چیانل ‘ محمد عامر آر ایس این چیانل ‘ سرینواس صدرضلع الکٹرانک میڈیا موجود تھے۔بعد ازاں محمد عبد القادر فیصل ریاستی سکریٹری ٹی یو ڈبلیو جے نے پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ گذشتہ دو سال سے ٹی آر ایس حکومت اقتدار میں آنے کے بعد میں کئی ایک فلاحی اسکیمات سے عوام استفادہ کر رہی ہے لیکن بڑے ہی افسوس کی بات ہیکہ تشکیل تلنگانہ میں اہم رول ادا کر نے والے صحافیوں کے مسائل کو برفدان کی نذر کر دیا گیا ہے ۔حتی کہ تشکیل تلنگانہ کے بعد میں دو سال کا عرصہ گذر جانے کے باوجود بھی ریاستی تلنگانہ کا اکریڈیشن کارڈ حاصل کرنے میں ہنوز صحافتی برادری ناکام ہے اور آندھرا پردیش کے اکریڈیشن کارڈ پر ہی اکتفا ء کرنا پڑ رہا ہے اس کے علاوہ حکومت کی جانب سے صحافیوں کیلئے خوش کن اعلانات کئے جا رہے ہیں لیکن عمل آوری ند ا ردہے پہلے تو ہیلتھ کارڈ جاری نہیں کئے جارہے ہیں چند ایک صحافیوں کو ہیلت کارڈس کی اجرائی عمل میں آئی لیکن کسی بھی کارپوریٹ ہا سپٹل میں یہ ہیلت کار ڈ پر علاج و معالجہ کیلئے قبول نہیں کیا جا رہا ہے ۔جس کی وجہ سے ریاستی سطح پر 350 صحافیوں کی موت واقع ہو چکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت صحافیوں کو ڈبل بیڈ روم مکانات دینے کے بلند دعوے کر رہی ہے لیکن دو سال کے عرصہ میں کسی بھی صحافی کو ایک بھی ڈبل بیڈ روم کی منظور عمل میں آئی اور نہ ہی پلاٹس کی منظوری عمل میں آئی ۔صحافیوں کو ہیلت انشورنش اسکیم دینے کا وعدہ کیا گیا لیکن آج تک اس پر عمل نہ ہوسکا۔انہوں نے ریاستی حکومت سے مطالبہ کیا کہ تمام صحافیوں کو ریاست تلنگانہ کا اکریڈ یشن فوری جاری کریں اور 239 جی او میں ترمیم کر تے ہوئے ریاست تلنگانہ کا نیا اکریڈیشن کارڈ جاری کریں۔ مستحق تمام صحافیوں کو ہیلت کارڈ س جاری کر تے ہوئے تمام کارپوریٹ ہا سپٹلس میں جر نلسٹ ہیلت انشو رنس اسکیم پر عمل آوری کو یقینی بنانے کی ہد ایت دی جائے ۔ریاست کے صدر مقام حیدرآباد کے بشمول ریاست تلنگانہ کے تمام مستحق صحافیوں کو ڈبل بیڈ روم اسکیم منظور کی جائے اور سب ایڈ یٹرس کو فوری اکریڈ یشن کارڈس جاری کر تے ہوئے جرنلسٹوں کے تمام فوائد سے ان کو مستفید کر نے کی ہدایت دی جائے ۔ ٹی آر ایس حکومت کے انتخابی منشور میں شامل صحافیوں کے تمام مسائل کی فوری عا جلانہ یکسوئی کا مطا لبہ کیا ۔ انہوں نے ضلع میدک کے تمام پرنٹ اور الیکٹرانک صحافیوں سے اپیل کی کہ وہ 22 اگسٹ کو منعقد شد نی چلو کلکٹریٹ سنگاریڈی احتجاجی پروگرام میں زیادہ سے زیادہ تعداد میں شرکت کر تے ہوئے کامیا بی سے ہمکنا ر کریں۔اس موقع پر سرینواس ایکسپریس ٹی وی ‘ رمیش این ٹی وی اور میگا راج نائیک ‘ می ٹی وی و دیگر صحافی برادران موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT