Thursday , November 22 2018
Home / Top Stories / صحت بخش لیکن ڈیزا ئنرانڈوں کی جلد مارکٹ میں آمد متوقع

صحت بخش لیکن ڈیزا ئنرانڈوں کی جلد مارکٹ میں آمد متوقع

حیدرآباد۔22جون(سیاست ڈاٹ کام) ڈیزائنرکرتے، شرٹ یا ڈیزائنر ساڑیاں آج سب میں مقبول ہیں لیکن آج تک کسی نے یہ تصورنہیں کیا ہے کہ مرغی کے انڈے بھی ڈیزائنر انڈے کہلائیں گے؟ یا پھر انڈے بھی ڈائٹ ایگ (تغذیہ بخش انڈے) سے موسوم ہوں گے؟ اب مرغی کے انڈے نہ صرف ڈیزائنر ہوں گے بلکہ مخصوص تغذیائی خوبیوں کے حامل ہوں گے اور وہ ڈائٹ ایگ کہلائیں گے۔ سائنسدانوں اور کسانوں نے یہ نتیجہ اخذکیا ہے کہ مرغیوں کی غذاء میں تبدیلی سے ان کے انڈوں کی تغذیائی خوبیوں کو تبدیل کیا جاسکتا ہے جو صارفین کے لئے پرکشش ہونے کے علاوہ صحت بخش بھی ہوں گے۔ سائنس کی اس ترقی سے ہم یہ امید کرسکتے ہیں کہ ایک دن وہ بھی آئے گا کہ ہم ایسی کئی بیماریوں کا تدارک بھی انڈوں سے کرسکیں گے جن کے لئے ہمیں ایک سے زائد ادویات استعمال کرنا پڑتا ہے اور مختلف پیشوں سے وابستہ افراد کو درکار تغذیہ کے حامل مختلف نوعیت کے انڈے بھی مارکٹ میں دستیاب ہوں گے۔کھلاڑیوں، اتھیلیٹس، فٹبالرس کے لئے مخصوص صفات کے حامل انڈے اور آئی ٹی شعبہ سے وابستہ یا ذہنی کام کرنے والوں کے لئے الگ انڈے طلبہ کے لئے الگ انڈے اور حاملہ خواتین کے لئے الگ انڈے ہونے کا امکان روشن ہوگیا ہے۔ انڈوں کی زردی جو اس کے پیلے رنگ کے باعث ہی زردی کہلاتی ہے اب صرف پیلے رنگ کی نہیں ہوگی بلکہ وہ ایک سے زائد رنگوں میں نظر آئے گی۔ یہی نہیں بلکہ اب انڈے، اپنی مخصوص بو سے بھی پاک ہوں گے، سخت چھلکے والے اور نامیاتی انڈے بھی ہوں گے۔ ایسے مختلف قسم وانواع کے انڈے دسترخوان کی زینت و سجاوٹ بننے جارہے ہیں اور دوسری نوعیت کے انڈے صحت کے معاملہ میں نہایت ہی حساس رہنے والوں میں بہت جلد مقبول ہوجائیں گے۔ پولٹری صنعت صارفین کو راغب کرنے ڈیزائنر ایگس پیش کرنے لگی ہے۔ اب انڈوں کی زردی صرف زرد رنگ کی ہی نہیں ہوگی بلکہ یہ روشن زرد کے علاوہ ہلکے سرخ رنگ کی بھی ہوں گی۔ پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ زولوجی نے خفیف کولیسٹرول کے حامل ڈیزائنر ایگس کامیابی سے پیدا کیا ہے جسے ایسے افراد استعمال کرسکتے ہیں جو اونچی سطح کے کولیسٹرول کا شکار ہیں۔ مرغیوں کو دی جانے والی غذائی اجزاء میں تبدیلی یا اضافہ سے مطلوب خوبیوں کے انڈے حاصل کئے جاسکتے ہیں۔ اگر چاہتے ہیں کہ مرغی کے انڈے کی زردی چمکدار زرد رنگ کی ہو تو مرغی کو دی جانے والی غذائی اجزاء میں گل مریم (گیند) کے پھول کی پتیاں اور مکئی کا نشاستہ شامل کیا جائے۔ ہلکے سرخ کی زردی کے لئے مرغی کی غذاء میں سرخ مرچ ( ہلکے سرخ مصالحے) بھی شامل کئے جائیں۔ بو سے پاک انڈوں کے حصول کے لئے مرغی کی غذاء میں تمام نامیاتی اجزاء کے ساتھ السی کے بیجوں کا تیل ملایا جائے۔ اگر چاہتے ہیں کہ سخت چھلکے والے انڈے حاصل ہوں تو غذاء میں چونے کا پاؤڈر، چونے کے پتھر کے تکڑے، صدف کے خول کا سنگ ریزہ، فاسفورس اور وٹامن ڈی 3 شامل کرنا ہوگا۔ اسی طرح پروٹین اور وٹامن سے پر انڈوں کے لئے مرغیوں کی غذاء میں سویابین، مونگ پھلی، سورج مکھی کا عرق، سپاری اور سیلینیم اور وٹامنس شامل کئے جائیں۔ خفیف کولیسٹرول انڈوں کے لئے مرغی کی غذاء میں ترکاری پر مشتمل غذاء (مکئی، سویابین)، کیسئن کو شامل کیا جائے۔ اومیگا 3 فیاٹی ایسیڈ کی خوبیوں کے حامل انڈوں کے لئے سن کے بیج یا دیگر غیر جانوروںکی چربیاں، اجناس اور سبزیاں شامل کی جائیں۔ ہندستان میں اب ان اقسام کے انڈوں کی پیداوار کا آغاز ہوچکا ہے اور مختلف پولٹری فارمرس اور ہاچریز اس کی تیاریوں میں لگے ہوئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT