Monday , July 16 2018
Home / شہر کی خبریں / صحت و صفائی میں حیدرآباد کو ملک میں نمایاں مقام:کے ٹی آر

صحت و صفائی میں حیدرآباد کو ملک میں نمایاں مقام:کے ٹی آر

پندرہ ہزار طلبہ نے سڑک کی صفائی کی، گنیز بک ریکارڈ میں درج
حیدرآباد۔12۔ فروری (سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ سوچھ حیدرآباد تحریک پر عمل آوری کے ذریعہ عوام کے مستقبل کو تابناک بنایا جاسکتا ہے۔ صحت و صفائی کے ذریعہ کسی بھی معاشرہ کی ترقی ممکن ہے۔ حکومت نے سوچھ حیدرآباد مہم کے تحت صفائی کا نظام بڑے پیمانہ پر شروع کیا ہے اور اس کی کامیابی کے لئے عوامی تعاون ضروری ہے۔ وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی نے آج حیدرآباد کے رام نگر ڈیویژن میں سوچھ حیدرآباد سے متعلق پروگرام میں حصہ لیا، جس میں 15320 طلبہ نے بیک وقت سڑک کی صفائی کا کام انجام دیتے ہوئے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں نام شامل کیا ہے ۔ گزشتہ سال گجرات میں 5058 افراد نے بیک وقت سڑک کی صفائی کے ذریعہ گنیز ریکارڈ بنایا تھا۔ کے ٹی آر نے کہا کہ ملک میں سوچھ بھارت پروگرام کے آغاز سے بہت پہلے سوچھ حیدرآباد پروگرام کی شروعات کی گئی تھی ۔ انہوں نے بتایا کہ اس پروگرام کے تحت حیدرآباد کو 400 یونٹس میں تقسیم کیا گیا ہے۔ خشک اور گیلے کچرے کو علحدہ کرنے کیلئے شہر میں 45 لاکھ کچرے دان تقسیم کئے جائیں گے ۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ اس مہم میں بلدیہ سے تعاون کریں تاکہ کچرے کو علحدہ کرنے میں مدد مل سکے ۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد کچرے سے پاک ہوگی تو یہ ہم سب کیلئے اچھا رہے گا۔ کے ٹی آر نے کہا کہ عوام کی شمولیت کے بغیر کوئی بھی کام کامیاب نہیں ہوسکتا۔ انہوں نے طلبہ سے اپیل کی کہ وہ اس مہم کے سلسلہ میں والدین پر دباؤ بنائے، تاکہ کچرے کو گھر میں دو علحدہ حصوں میں جمع کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ سوکھے کچرے کے ذریعہ توانائی تیار کی جاسکتی ہے۔ اس تقریب میں ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی ، ریاستی وزراء این نرسمہا ریڈی ، سرینواس یادو ، حکومت کے مشیر جی وویک ،کمشنر جی ایچ ایم سی جناردھن ریڈی اور مقامی عوامی نمائندوں نے شرکت کی ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ صحت و صفائی کے معاملہ میں حیدرآباد ملک کے دیگر بڑے شہروں میں سرفہرست ہے۔ 2017 ء میں کئے گئے سروے میں حیدرآباد دیگر میٹرو شہروں میں سرفہرست رہا۔ حکومت جاریہ سال سوچ حیدرآباد کے تحت مختلف پروگراموں کا منصوبہ رکھتی ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے پروگرام کا آغاز کیا تھا ۔ حیدرآباد کی آبادی ایک کروڑ سے تجاوز کرچکی ہے اور شہر کیلئے صرف 22000 کا صفائی عملہ ناکافی ہے۔ انہوں نے اس موقع پر طلبہ کو صحت و صفائی کے سلسلہ میں حلف دلایا ۔ کے ٹی آر نے طلبہ کو کھلے عام پیشاب نہ کرنے اور دوسروں کو روکنے ، پلاسٹک کا استعمال ترک کرنے ، ترکاری کیلئے پلاسٹک کیلئے جوٹ یا کپڑے کی تھیلیوں کے استعمال، کھلے عام سگریٹ نوشی نہ کرنے اور دوسروں کو روکنے کے علاوہ کھلے مقامات ، موریوں اور نالوں میں کچرا نہ ڈالنے کے سلسلہ میں حلف دلایا ۔

TOPPOPULARRECENT