صدارتی انتخابات کے پیش نظر افغانستان، ہندوستان سے مؤثر تعاون کا خواہاں

نئی دہلی ۔ 4 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اب جبکہ افغانستان میں تاریخی صدارتی انتخابات ہونے والے ہیں تو اس نے ہندوستان سے خصوصی طور پر یہ خواہش کی ہیکہ سیکوریٹی اور استحکام جیسے حساس معاملات پر وہ افغانستان کے ساتھ مزید تعاون کرے۔ ایسا تعاون جو انتہائی فعال اور مؤثر ہوتا کہ سرحدوں کے قریب سرگرم دہشت گرد انفراسٹرکچر کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ کر

نئی دہلی ۔ 4 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اب جبکہ افغانستان میں تاریخی صدارتی انتخابات ہونے والے ہیں تو اس نے ہندوستان سے خصوصی طور پر یہ خواہش کی ہیکہ سیکوریٹی اور استحکام جیسے حساس معاملات پر وہ افغانستان کے ساتھ مزید تعاون کرے۔ ایسا تعاون جو انتہائی فعال اور مؤثر ہوتا کہ سرحدوں کے قریب سرگرم دہشت گرد انفراسٹرکچر کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ کردیا جائے کیونکہ یہی ایک طریقہ ہے جس سے اس خطہ میں دیرپا امن کو یقینی بنایا جاسکتا ہے۔

دریں اثناء افغانی سفیر شیدا محمد ابدالی نے کہا کہ ان کے ملک نے گذشتہ 13 سالوں کے دوران ایک طویل سفر طئے کیا ہے اور کئی نشیب و فراز دیکھے اور صدارتی انتخابات کا انعقاد کروا کر ملک اب خوشحالی اور استحکام کی جانب گامزن ہوگا۔ میڈیا کو ایک انٹرویو کے دوران انہوں نے کہا کہ صدارتی انتخابات کا انعقاد یقیناً ایک سنگ میل ہے کیونکہ اس کے بعد ملک میں اقتدار کی جمہوری طریقے سے منتقلی عمل میں آئے گی اور ملک کیلئے یقیناً ایک عظیم کارنامہ ہے۔ اب تک ملک میں عوام نے خونریزی دیکھی، تباہی و بربادی دیکھی اور اب وقت آ گیا ہیکہ ملک میں دیرپا امن کا قیام ہو جس کیلئے ہمیں ہندوستان کے تعاون کی اشد ضرورت ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT