Monday , September 24 2018
Home / سیاسیات / صدرجمہوریہ پارلیمنٹ میں مناسب بحث کے خواہاں

صدرجمہوریہ پارلیمنٹ میں مناسب بحث کے خواہاں

نئی دہلی۔27 اکٹوبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ میں اہم قانون سازی کی کارروائیوں کی زیادہ بحث کے بغیر منظوری پر اظہارتشویش کرتے ہوئے صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے آج اسپیکر لوک سبھا سے خواہش کی کہ وہ فینانس بل جیسے مسودات قانون پر بحث کے لئے زیادہ وقت مختص کرنے کے طریقے دریافت کریں۔ انھوں نے کہا کہ قانون سازیوں کیلئے زیادہ وقت مختص کیا جا

نئی دہلی۔27 اکٹوبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ میں اہم قانون سازی کی کارروائیوں کی زیادہ بحث کے بغیر منظوری پر اظہارتشویش کرتے ہوئے صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے آج اسپیکر لوک سبھا سے خواہش کی کہ وہ فینانس بل جیسے مسودات قانون پر بحث کے لئے زیادہ وقت مختص کرنے کے طریقے دریافت کریں۔ انھوں نے کہا کہ قانون سازیوں کیلئے زیادہ وقت مختص کیا جائے اور اُس کے بعد ہی رقم کی منظوری دی جائے ۔ صدرجمہوریہ نے کہا کہ پارلیمنٹ خود کئی تحقیقات کرچکی ہے اور سابقہ پارلیمنٹ اہم معاشی معاملات پر ہمیشہ کھل کر بحث کرتی رہی ہے ، اس لئے اُن کی خواہش ہے کہ اب بھی مناسب بحث کے بغیر معاشی مسودات قانون کو منظوری نہ دی جائے ۔ انھوں نے کہا کہ گزشتہ 65 سال سے سی اے جی کا تقرر ایکزیکٹیوز کرتے رہے ہیں

لیکن آڈٹ کے ادارے اچھی حکمرانی اور جمہوری کارکردگی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ تینوں قانون ساز کمیٹیوں اور اُن سے قریبی تعلق رکھنے والے اداروں کو موثر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا چاہئے ۔ پرنب مکرجی نے کہاکہ ’’ڈیجیٹل انڈیا‘‘ حکومت کی کارکردگی کی ریڑھ کی ہڈی بن گیا ہے ، اس کیلئے آڈٹ کے روایتی طریقوں میں انقلابی تبدیلی ضروری ہے ۔ اسپیکر لوک سبھا سمترا مہاجن نے اپنی تقریر میں کہا کہ اصلاح اور ایجادات کی حوصلہ افزائی کی جانی چاہئے ۔ سی اے جی کی رپورٹس کو بہترین عمل اور کسی بھی تنظیم کے نمایاں کارناموں کو اُجاگر کرنا چاہئے ۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں صرف تنقید نہیں کرنی چاہئے بلکہ ستائش بھی کرنی چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT