Monday , December 18 2017
Home / دنیا / صدر ایران حسن روحانی کی بشارالاسد کو تائید کی توثیق

صدر ایران حسن روحانی کی بشارالاسد کو تائید کی توثیق

تہران ۔ 9اپریل ( سیاست ڈاٹ کام) صدر ایران حسن روحانی نے صدر شام بشارالاسد سے ٹیلیفون پر ربط پیدا کیا اور انہیں امریکی میزائل حملہ کے پس منظر میں ایران کی تائید کی توثیق کی ۔ حسن روحانی کے دفتر سے جاری کردہ بیان میں جو صدر کی ویب سائیٹ پر بھی شائع کیا گیا ہے ‘ کہا گیا ہے کہ ایرانی قوم شامی قوم کے شانہ بہ شانہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کرتی رہے گی ۔ شام کی علاقائی سلامتی کے تحفظ کیلئے ایران ہمیشہ تیار رہے گا ۔ انہوں نے کل شام بشارالاسد سے فون پر بات کرتے ہوئے یہ تیقن دیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ مغربی ممالک کے الزامات کے بشارالاسد کی حکومت کیمیائی ہتھیاروں کے گذشتہ ہفتہ حملہ کے پس پردہ  تھی بے بنیاد ہے اور ثابت ہوتا ہے کہ امریکہ نے اسی بہانے سے شام پر حملہ کیا تھا ‘ حالانکہ اس کے ادعا ہے کہ یہ حملہ باغی گروپس کے اثر و رسوخ اور عالمی رائے عامہ کے تحت کیا گیا تھا ۔ حسن روحانی نے کہا کہ دہشت گردوں کو ایسے ہتھیار استعمال کرنے اور اس کا الزام دوسروں پر عائد کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ‘ کیونکہ اس سے بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی کی راہ ہموار ہوتی ہے ۔ بشارالاسد نے کہا کہ امریکی میزائل حملے شام کے فضائی کے اڈہ پر کئے گئے اور یہ حکومت شام کے کیمیائی ہتھیاروں کے حملہ کا ردعمل تھا ۔ امریکہ کا یہ ادعا بے بنیاد ہے اور صرف اسی نے یہ قرار دیا ہے کہ کیمیائی ہتھیاروں کا حملہ حکومت شام نے خود اپنے عوام پر کیا تھا ۔ امریکہ اس جارحیت کے ذریعہ کچھ بھی حاصل نہیں کرسکا ۔
حالانکہ اس کا مقصد دہشت گرد گروپس اور ان کے حامیوں کی حوصلہ افزائی تھی ۔ قبل ازیں شام فوج نے باغی گروپس کے خلاف نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں ۔ امریکہ حملہ کرکے باغیوںکے حوصلہ بلند کرنا اور حکومت شام کے حوصلے پسند کرنے کی کوشش کررہا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT