Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / صدر بی جے پی نے ’’پریورتن یاترا‘‘ کا آغاز کیا

صدر بی جے پی نے ’’پریورتن یاترا‘‘ کا آغاز کیا

دہرہ دون میں جلسہ عام سے خطا ب ‘ نوٹ منسوخ ہونے پر ملائم اور مایا وتی کی نیندیں حرام : امیت شاہ
دہرہ دون۔13نومبر ( سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ نے آج پارٹی کی ’’پریورتن یاترا‘‘ کا جھنڈی دکھاکر آغاز کیا ۔بعدازیں انہوں نے ایک جلسہ عام سے کماؤں گڑھوال میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت اپنے تمام انتخابی تیقنات کی تکمیل کرے گی ۔ اتراکھنڈ کو منفرد ریاست قرار دیتے ہوئے انہوں نے موجودہ غیر بی جے پی ریاستی حکومت کا تقابل ایک جلے ہوئے ٹرانسفارمر سے کیا اور جو عوام کے گھروں کو روشن نہیں کرسکتا ۔ انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ موجودہ حکومت تبدیل کر کے اُس کی جگہ بی جے پی کو برسراقتدار لایا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت مرکزی حکومت کی اسکیموں کو روبہ عمل لانے سے قاصر رہی اور اُس نے گذشتہ ڈھائی سال میں مرکز کی جانب سے فراہم کردہ 60ہزار تا 65ہزار کروڑ روپئے کا مالیہ ہضم کرلیا ۔ انہوں نے کہا کہ اس کے باوجود کوئی بھی سرمایہ کاری درحقیقت نظر نہیں آتی ۔ تمام مالیہ کرپشن کی قربان گاہ پر قربان کیا جاچکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن پارٹیوں کو 500اور 1000ہزار روپئے کی تنسیخ کا خیرمقدم کرنا چاہیئے تھا کیونکہ یہ مودی حکومت کا ایک تاریخی اقدام ہے ۔ قنوج سے موصولہ اطلاع کے بموجب بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے آج کہا کہ مرکز کی جانب سے نوٹوں کی تنسیخ کے اقدام پر ہر جگہ بحث کی جارہی ہے ۔ سابق چیف منسٹر یو پی ‘ بی ایس پی کی صدر مایا وتی اور سماج وادی پارٹی کے صدر ملائم سنگھ یادو کی نیندیں حرام ہوگئی ہیں کیونکہ بلاک مارکیٹنگ کرنے والوں کا کروڑوں روپیہ مالیتی رقم ردی کاغذ بن چکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ جانتے ہیں کہ عوام کو مسائل کا سامنا ہے ‘ انہیں نوٹوں کی تبدیلی کیلئے گھنٹوں کھڑا رہنا پڑتا ہے لیکن اچھا وقت جلد ہی آجائے گا ۔ ملک کا کالا دھن باہر آجائے گا ۔ صدر بی جے پی نے ڈرامائی انداز میں نائب صدر کانگریس راہول گاندھی کے دہلی کی ایک اے ٹی ایم پر چار ہزار روپئے حاصل کرنے کیلئے چار کروڑ روپئے مالیتی کار میں آنے کا بھی مذاق اڑایا۔

TOPPOPULARRECENT