Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / صدر تلنگانہ پی سی سی پنالہ لکشمیا کو مستعفی ہونے کا مشورہ

صدر تلنگانہ پی سی سی پنالہ لکشمیا کو مستعفی ہونے کا مشورہ

شکست کو بھی قبول کیا جائے، جاناریڈی پر ہائی کمان کو گمراہ کرنے کا الزام، پی گوردھن ریڈی

شکست کو بھی قبول کیا جائے، جاناریڈی پر ہائی کمان کو گمراہ کرنے کا الزام، پی گوردھن ریڈی

حیدرآباد ۔ 17 مئی (سیاست نیوز) کانگریس کے سینئر قائد و رکن راجیہ سبھا مسٹر پی گوردھن ریڈی نے شکست کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے پارٹی قیادت سے معذرت خواہی کرنے اور صدارت سے مستعفی ہوجانے کا صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر پنالہ لکشمیا سے مطالبہ بصورت دیگر پنالہ لکشمیا اور ڈگ وجئے سنگھ کو عہدوں سے بیدخل کردینے کا کانگریس ہائی کمان سے مطالبہ ٹی آر ایس سے اتحاد کے خلاف پارٹی صدر مسز سونیا گاندھی کو گمراہ کرنے کا جاناریڈی پر الزام عائد کیا۔ مسٹر پنالہ لکشمیا کو پارٹی صدارت کیلئے نااہل قرار دیا اور ذمہ داریوں سے غافل رہنے والے مسٹر ڈگ وجئے سنگھ کو بھی پارٹی انچارج کے عہدے سے ہٹادینے پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی قائدین میں تال میل کا فقدان تھا جس کی وجہ سے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دینے کے باوجود پارٹی کو نقصان پہنچا ہے۔ چیف منسٹر کی دعویداری میں شامل رہنے والے بیشتر قائدین کو شکست ہوگئی ہے۔ مسٹر گوردھن ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ کے بیشتر قائدین بشمول جاناریڈی نے سونیا گاندھی اور کانگریس ہائی کمان کو گمراہ کرتے ہوئے ٹی آر ایس سے اتحاد ہونے نہیں دیا۔ انہوں نے ریاست کی تقسیم کے باوجود ڈاکٹر کے وی پی رامچندر راؤ کی تلنگانہ میں مداخلت اور ڈگ وجئے سنگھ کی جانب سے ان کی رائے کو ہی ترجیح دینے کا الزام عائد کیا۔ کانگریس پارٹی کی غلطیوں اور اختلافات کی وجہ سے تلگودیشم کو چند حلقوں پرکامیابی ملنے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہاکہ انہوں نے تلنگانہ بل کی تیاری میں سربراہ ٹی آر ایس مسٹر کے چندرشیکھر راؤ کو اعتماد میں لینے کا مشورہ دیا تھا جس کو ڈگ وجئے سنگھ نے مسترد کردیا اور کہا کہ ریاست کی تقسیم کے باوجود تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کی تشکیل میں ڈگ وجئے سنگھ نے تاخیر کردی۔ سچ کہا جائے تو ڈاکٹر کے وی پی رامچندر راؤ نے ڈگ وجئے سنگھ کو پوری طرح یرغمال بنا لیا تھا۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس پارٹی قائدین اور کیڈر سے تال میل پیدا کرنے میں مسٹر پنالہ لکشمیاپوری طرح ناکام ہوگئے۔

TOPPOPULARRECENT