Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / صدر قاضی کو دوبارہ پولیس تحویل میں لیا گیا

صدر قاضی کو دوبارہ پولیس تحویل میں لیا گیا

خاتون کا پاسپورٹ اور عمانی شوہر کے ویزا کو قبضہ میں رکھنے کا مقدمہ درج
حیدرآباد ۔ /11 اکٹوبر (سیاست نیوز) صدر قاضی علی عبداللہ رفاعی عرف وولٹا قاضی کو پھر ایک مرتبہ پولیس تحویل میں لیا جائے گا ۔ چندرائن گٹہ پولیس اسٹیشن میں گزشتہ ہفتہ پرانے شہر کی خاتون کا پاسپورٹ اور اس کے عمانی شوہر کی جانب سے بھیجے گئے ویزا کو جبراً طور پر اپنے قبضے میں رکھنے کے الزام میں مقدمہ درج کیا گیا تھا ۔ کم عمر لڑکیوں کی معمر عربوں سے شادی کے ریاکٹ میں گرفتار قاضی رفاعی کو تین دن کیلئے سابق میں پولیس تحویل میں لیا گیا تھا اور اس کے دفتر پر دھاوے کے دوران خاتون کا پاسپورٹ اور بغیر خانہ پری کئے گئے نکاح نامے بھی برآمد کئے گئے تھے ۔ چندرائن گٹہ پولیس نے اسماء نامی خاتون کی شکایت پر ایک مقدمہ درج کیا تھا اور اس کیس کی تحقیقات کیلئے قاضی کو پولیس تحویل میں لینے کیلئے پولیس نامپلی میٹروپولیٹین کورٹ میں درخواست داخل کرے گی ۔ اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس فلک نما مسٹر محمد تاج الدین احمد نے بتایا کہ علی عبداللہ رفاعی نے اسماء کی عمانی باشندے سے شادی کروائی تھی جس کے عوض اس نے عمانی شہری سے لاکھوں روپئے حاصل کئے جس میں محض 50 ہزار روپئے خاتون کے حوالے کئے گئے اور بقایا رقم کو دلالوں اور قاضی کے درمیان تقسیم کردیا گیا ۔ خاتون نے چندرائن گٹہ پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی شکایت میں یہ الزام عائد کیا کہ قاضی عبداللہ رفاعی نے اس کا پاسپورٹ اور ویزا اپنے قبضے میں رکھ لیا ہے ۔ پولیس قاضی کے قبضہ سے پاسپورٹ برآمد کرنے میں کامیاب ہوگئی لیکن ویزا کو ضبط نہ کرسکی ۔ اس کیس میں تفصیلی تحقیقات کو مکمل کرنے اور ویزا برآمد کرنے کیلئے چندرائن گٹہ پولیس تین دن کیلئے والٹا قاضی کو اپنی تحویل میں لے گی ۔ مسٹر تاج الدین نے بتایا کہ سپریم کورٹ نے آج ایک فیصلہ سنایا جس میں کم عمر بیوی سے جسمانی تعلقات پر عصمت ریزی کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا اور اس فیصلے کے پیش نظر عمانی باشندوں جنہوں نے کم عمر لڑکیوں سے شادی کی ہے کے خلاف بھی مزید دفعات عائد کئے جائیں گے اور دفعات کی ترمیم کیلئے عدالت میں درخواست داخل کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT