Tuesday , September 25 2018
Home / ہندوستان / صرف سیمینار اور سمپوزیم سے اردو کی ترقی ممکن نہیں : ضیاء الرحمان غوثی

صرف سیمینار اور سمپوزیم سے اردو کی ترقی ممکن نہیں : ضیاء الرحمان غوثی

پٹنہ ، 14فروری (سیاست ڈاٹ کام) صرف سیمینار اور سمپوزیم سے اردو کی ترقی ممکن نہیں ہے جب تک کہ اسکول کی سطح پر اردو کی تعلیم نہ دی جائے ۔یہ بات دہلی حکومت کے سابق ڈپٹی ڈائرکٹر اور ماہنامہ دہلی کے مدیر سید ضیاء الرحمان غوثی نے علمیمجلس بہار کے زیر اہتمام ان کے اعزاز میں منعقدہ نششت میں کہی۔انہوں نے اپنے تجربات بیان کرتے ہوئے کہاکہ میں اکثر جب اپنے گاؤں جاتا ہوں تو اپنے علاقے کے اردو اسکول جاتا ہوں اور وہاں پوچھتا ہوں کہ یہاں اردو کی پڑھائی کیسی ہے تو جواب یہ ملتا ہے کہ اردو کے استاد تو ہیں اردو کی تعلیم نہیں ہوتی ہے جب تک اردو کے قاری کو پیدا کرنے کی کوشش نہیں ہوگی تب تک اردو کا مستقبل روشن نہیں کہا جاسکتا ہے ۔معروف صحافی و بچوں کے رسالہ مسرت کے مدیر سید ضیاء لرحمٰن غوثی نے اپنے جذباتی خطاب میں ماضی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ مجھے اس عظیم آباد نے انسان بنایا ہے اور میں کہیں بھی رہوں عظیم آباد میرے دل میں بستا ہے ۔حالانکہ میرا تعلق دربھنگہ اور دلسنگھ سرائے سے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میرے والد کا دبھنگہ میں پریس تھا اور وہ جنگ آزادی میں حصہ لیتے تھے اور انگریزوں کے خلاف پوسٹر وغیرہ شائع کرتے ۔ انہوں نے کہا کہ جیسے ہی اسکی اطلاع انگریزوں کو ہوئی وہ ان کے خلاف وارنٹ جاری کردیا اور آخر میں انکو کلکتہ جانا پڑا۔ انکے ساتھ حسن امام درد بھی کلکتہ گئے اور وہاں وہ عکاس اخبار میں کام کرنے لگے ۔

TOPPOPULARRECENT