Tuesday , December 11 2018

صرف مالی امدا د سے یمن کے مسائل ختم نہیں ہونگے : گوٹیرس

اقوام متحدہ۔ 4 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس نے آج ایک بار پھر اپنی بات کو دہراتے ہوئے کہا کہ یمن کیلئے مالی امداد فراہم کرنے سے اس کے مسائل ختم نہیں ہوجائیں گے بلکہ اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ وہاں جنگ کا خاتمہ ہوجائے جس سے سب سے زیادہ نقصان بچوں کو ہورہا ہے جن کے زخمی ہونے اور ہلاکتوں کی دلدوز تصاویر ہر روز میڈیا میں دیکھی جارہی ہے۔ گوٹیرس نے البتہ اقوام متحدہ کے ایسے متعدد رکن ممالک کی ستائش بھی کی جنہوںنے یمن کیلئے تقریباً 2 بلین ڈالرس کی امدادی رقم بھیجی ہے۔ گوٹیرس نے کہا کہ اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ جنگ زدہ یمن کیلئے بین الاقوامی سطح پر کیا جانے والا اظہار یگانگت بہت زیادہ کامیاب ہے۔ یمن پر جنیوا میں ہی ایک کانفرنس میں شرکت کے بعد اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ رکن ممالک نے اس ایونٹ کے خاتمہ تک یمن کی امداد کیلئے 2 بلین ڈالرس کی امداد کا وعدہ کیا تھا جسے انہوں نے پورا کر دکھایا۔ انہوں نے کہا کہ یمن میں آج حالات اتنے سنگین ہوچکے ہیں کہ ہر 10 منٹ میں ایک بچہ ہلاک ہورہا ہے اور وہ بھی ایسے حالات میں جن کی (اگر ہم چاہیں تو) روک تھام کی جاسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT