Saturday , December 16 2017
Home / ہندوستان / صلاح الدین کے فرزند این آئی اے کے ہاتھوں گرفتار

صلاح الدین کے فرزند این آئی اے کے ہاتھوں گرفتار

دہشت گردی کیلئے رقومات کی منتقلی کے چھ سال قدیم کیس میں کارروائی

نئی دہلی 24 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) حزب المجاہدین کے لیڈر دنیا بھر میں شدت سے مطلوب دہشت گرد سید صلاح الدین کے بیٹے سید شاہد یوسف کو نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) نے دہشت گردی کو فنڈس کی فراہمی سے متعلق 2011 ء کے ایک مقدمہ کے ضمن میں آج گرفتار کرلیا۔ جس پر اپنے والد سے رقومات وصول کرنے کا الزام ہے۔ این آئی اے کے ایک ترجمان نے کہاکہ 42 سالہ شاہد یوسف فی الحال حکومت جموں و کشمیر کے محکمہ زراعت میں برسر خدمت ہے جس کو این آئی اے ہیڈکوارٹرس طلب کرنے کے بعد گرفتار کرلیا گیا۔ این آئی اے نے الزام عائد کیاکہ شاہد کے کئی ہندوستانی رابطوں میں ایک اعجاز احمد بٹ بھی شامل ہے جس سے وہ بین الاقوامی رقمی منتقلی کے مختلف ذرائع سے رقومات وصول کیا کرتا تھا۔ اعجاز احمد بٹ ایک مفرور ملزم ہے جو فی الحال سعودی عرب میں مقیم ہے۔ رقومات کی وصولی کے لئے دونوں میں ٹیلی فونی رابطے تھے۔ این آئی اے نے اپریل 2011 ء میں براہ دہلی حوالہ چینلوں کے ذریعہ پاکستان سے جموں و کشمیر کو رقومات کی منتقلی کا ایک مقدمہ درج کیا تھا۔ اس رقم کو دہشت گردی اور تخریب کاری کی سرگرمیوں کے لئے استعمال کرنے کے شبہات تھے۔ این آئی اے نے یہ دعویٰ بھی کیاکہ شاہد یوسف نے آٹھ مختلف بین الاقوامی وائر ٹرانسفر کے ذریعہ تاحال 4.5 لاکھ روپئے وصول کیا تھا۔ این آئی اے اس ضمن میں چھ افراد کے خلاف دو چارج شیٹس پیش کرچکی ہے جن میں پاکستان کے حامی علیحدگی پسند کشمیری لیڈر سید علی شاہ گیلانی کے ایک قریبی مددگار جی ایم بٹ، محمد صدیق غنائی، غلام جیلانی لیلو اور فاروق احمد ڈگا بھی شامل ہیں۔ یہ تمام چار ملزمین فی الحال عدالتی تحویل میں ہیں۔ دو مفرور ملزمین مقبول پنڈت اور اعجاز بٹ کے خلاف انٹرپول کی ریڈ کارنر نوٹس جاری کی جاچکی ہے۔ شاہد کے والد محمد یوسف شاہ کو سید صلاح الدین کے نام سے جانا جاتا ہے۔ جس کو امریکی وزارت خارجہ نے اس سال جون میں خصوصی طور پر عالمی دہشت گرد قرار دیا تھا۔شاہد یوسف کے والد سید صلاح الدین پاکستانی مقبوضہ کشمیر میں متحدہ جہاد کونسل کے چیرمین ہونے کے علاوہ کشمیر میں سرگرم جنگجو تنظیم حزب المجاہدین کے سپریم کمانڈر بھی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT