Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / صنعتوں کے قیام میں تلنگانہ کو دوسرا مقام

صنعتوں کے قیام میں تلنگانہ کو دوسرا مقام

حیدرآباد ۔19 اگست (سیاست نیوز) بدعنوانیوں سے پاک صنعتوں کے قیام میں ریاست کیلئے سازگار ماحول فراہم کرنے کے معاملے میں پانچواں مقام حاصل ہوا ہے۔ ایف سی اے آئی آر کے سروے میں اس کا انکشاف ہوا ہے جبکہ گجرات پہلے نمبر پر ہے۔ ریاست میں ٹی ایس آئی ایس پر عمل آوری آن لائن میں منظوریوں کے نظام پر مؤثر عمل کرنے پر تلنگانہ کو یہ اعزاز حاصل ہوا ہے۔ ساتھ ہی ملک بھر میں صنعتوں کے قیام کیلئے پائے جانے والے خوشگوار سازگار ماحول میں تلنگانہ کو پانچواں مقام حاصل ہوا ہے۔ بنیادی سہولتوں کی فراہمی میں تلنگانہ کو گذشتہ سال 13 واں مقام حاصل ہوا تھا۔ جاریہ سال اس میں بہتری کرتے ہوئے پانچویں مقام پر پہنچ گیا ہے۔ نیشنل کونسل آف اپلایڈ اکنامک ریسرچ (این سی اے آئی آر) کی جانب سے گذشتہ ماہ تیار کردہ انویسمنٹ پوٹنشیل انڈیکس میں اس کا انکشاف ہوا ہے۔ صنعتوں کے قیام کیلئے اراضیات کی حوالگی، برقی کی مؤثر سربراہی، منظوریوں میں شفافیت، بنیادی سہولتوں کی فراہمی، لاء اینڈ آرڈر کے علاوہ دوسرے امور پر سروے کا اہتمام کیا گیا۔ ملک کے 29 کے منجملہ 21 ریاستوں میں سروے کیا گیا۔ 1030 صنعتکاروں نے اپنی رائے دی، جس کے بعد تمام پہلوؤں کا جائزہ لیتے ہوئے رپورٹ تیار کی گئی، جس میں اراضیات کی دستیابی کے معاملے میں بھی تلنگانہ کو دوسرا، پیشہ وارانہ مزدوروں کی دستیابی میں تیسرا مقام حاصل ہوا۔ معاشی استحکام میں چھٹواں، برقی سربراہی میں پانچوں اور سیاسی استحکام میں بھی تلنگانہ کو صدفیصد مقام حاصل ہوا ہے۔ صنعتوں کے قیام کیلئے درکار 6 موضوعات پر سروے کرتے ہوئے رینکنگ دیئے گئے ہیں۔ سروے میں اس بات کا بھی پتہ چلا ہیکہ گذشتہ سال کی بہ نسبت جاریہ سال بدعنوانیوں پر بڑی حد تک کنٹرول ہوا ہے۔ صنعتکاروں نے صنعتوں کو برقی سربراہ کرنے کے معاملے تلنگانہ کی کافی ستائش کی ہے۔ متحدہ آندھراپردیش میں صنعتوں کے قیام کی منظوریوں کیلئے سرکاری دفاتر اور عہدیداروں کے اطراف و اکناف چکر کاٹنا پڑتا تھا۔ سرکاری سطح پر مناسب تعاون نہ ملنے کی وجہ سے کئی صنعتیں پڑوسی ریاستوں کو منتقل ہوگئی تھی۔ علحدہ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد ماضی کے تلخ تجربات سے سبق حاصل کرتے ہوئے صنعتکاروں کا سرخ قالین پر استقبال کیا جارہا ہے اور سنگل ونڈو سسٹم کے تحت صنعتوں کے قیام کیلئے 15 دن میں منظوریاں دی جارہی ہیں، جس کے مثبت نتائج بھی برآمد ہورہے ہیں۔ لاء اینڈ آرڈر کے معاملے میں سروے میں حصہ لینے والے 98.5 فیصد صنعتکاروں نے اپنے بھرپور اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ صنعتوں کے قیام کیلئے 40 سال کی منصوبہ بندی کرتے ہوئے اراضیات کا لنک تیار کیا گیا ہے۔ دیڑھ لاکھ ایکر اراضیات کو دستیاب رکھا گیا ہے اور اراضیات کی تمام تفصیلات ویب سائیٹ میں رکھی گئی ہیں۔
ان اراضیات سے ایرپورٹ اور ریلوے اسٹیشن کے فاصلے بھی تیار کئے گئے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT