Wednesday , June 20 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ضلع بیدر میں 15سال کے بعد بدترین خشک سالی

ضلع بیدر میں 15سال کے بعد بدترین خشک سالی

منااکھیلی ؍9جولائی(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)با رش کا مو سم شروع ہو کر ایک مہینہ ہو گیا ہے لیکن اس ایک مہینے میں با رش نہ ہو نے کی وجہ سے بیدر ضلع کے کسان بہت ہی برے حا لات سے گذر رہے ہیں ، ایسی خشک سالی 100 سال کے بعد آئی ہے اس مہینے میں با رش 150 ملی میٹر ہو نا تھا لیکن صرف 42 ملی میٹر با رش ہو ئی ہے جس کی وجہ سے کسا نوں کی بیج پیرنی رک گئی ہے ، لہذا ب

منااکھیلی ؍9جولائی(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)با رش کا مو سم شروع ہو کر ایک مہینہ ہو گیا ہے لیکن اس ایک مہینے میں با رش نہ ہو نے کی وجہ سے بیدر ضلع کے کسان بہت ہی برے حا لات سے گذر رہے ہیں ، ایسی خشک سالی 100 سال کے بعد آئی ہے اس مہینے میں با رش 150 ملی میٹر ہو نا تھا لیکن صرف 42 ملی میٹر با رش ہو ئی ہے جس کی وجہ سے کسا نوں کی بیج پیرنی رک گئی ہے ، لہذا بیدر ضلع کو خشک سا لی سے متا ثرہ ضلع قرار دیتے ہو ئے سرکار کسا نوں کو ایک ایکر کو 10 ہزار رو پیہ کا معا وضہ جا ری کرے۔یہ بات معروف سیا سی و سما جی کار کن مسٹر ڈی کے سدرام نے بتا ئی۔ وہ آج یہاں پر ایک پریس کا نفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے بتا یا کہ بیدر ضلع میں با رش نہیں ہو نے کی وجہ سے انسا ن ہی نہیں بلکہ جا نور بھی بہت ہی برے حا لات کا شکار ہو گئے ہیں عوام کو ہینے کا پا نی نہیں مل پا رہا ہے تو جا نوروں کو بھی پا نی کے سا تھ سا تھ چا رہ بھی نہیں مل پا رہا ہے ، انہیں حا لات کو دیکھتے ہو ئے سا بق وزیر و بیدر کے رکن اسمبلی و بی ڈی سی سی بنک کے صدر ڈاکٹر گرپا دپا نا گمار پلی نے کسا نوں کو مشکلات سے را حت دینے کے لئے انکے بنک سے جو ایک لا کھ 18 ہزار کسان قرض حا صل کئے تھے ان سبھی کو بنا سود کے مزید 25 فیص قرض دینے کا اعلان کیا ہے ہم اس اعلان کا خیر مقدم کر تے ہیں اور ڈاکٹر گرپا دپا نا گمار پلی سے اپیل کر تے ہیں کہ وہ اعلان کردہ قرض اندرون 15 یوم کسا نوں تک پو نچھا تے ہیں تو کسا نوں کو بڑی ر ا حت پو نچھے گی ، لیکن اسکے بعد دیتے ہیں تو کسا نوں کو اتنا فا ئدہ نہیں پہنچ پا ئیگا جو اب پہنچ سکتا ہے۔ مسٹر سدرام نے مزید بتا یا کہ کسان با رش کے موسم کے شروع ہو تے ہی با رش کے امید پر قرض لیکر بینج(تخم) اور کھاد خرید کر اپنے اپنے گھروں میں رکھ لئے ہیں لیکن با رش کے نا ہو نے سے وہ اشیاء گھر میں ہی پڑی پڑی خراب ہو رہی ہیں جسکی وجہ سے کسان بہت ہی زا دہ پریشا نی اور مسائل میں گھیر گئے ہیں۔ انہوں نے مزید بتا یا کہ ریا ست میں اسمبلی سیشن چل رہا ہے اور اس سیشن میں کو ئی بھی رکن اسمبلی یا وزیر ایک مر تبہ بھی خشک سا لی کا ذکر نہیں کر رہے ہیں حا لا نکہ دوسرے چھو ٹے سے چھو ٹے مسا ئل کو چرچہ میں لا رہے ہیں لیکن اتنے بڑے مسئلے کو چر چہ میں نہیں لا یا گیا ۔ اس لئے میری سبھی ارکان اسمبلی و وزراء سے اپیل ہیکہ وہ اس مسئلہ کو سیشن میں اٹھا تے ہو ئے کسا نوں کو را حت پو نچھا نے کی کو شیش کریں۔ انہوں نے سرکار سے اپیل کی ہیکہ اگروہ کسا نوں کو را حت پو نچھا نا چا ہتی ہے تو وہ ضلعی سطح پر یا تعلقہ سطح پر امدا جا ری نہ کریں کیو نکہ یہ امداد کسا نوں تک نہیں پہنچ پا ئیگی۔ بلکہ امدا ہو بلی سطح پر یا پھر گرام پنچایت سطح پر دی جا تی ہے تو یہ کسا نوں تک راست پہنچ پا ئیگی اورانہیں اس سے را حت مل پا ئیگی۔اور اسکے لئے ہر گرام پنچا یت کو 25 لا کھ رو پیہ جا ری کئے جا ئیں۔مسٹر دی کے سدرام نے کہا کہ اگر جلد سے جلد یہ امداد کسا نوں تک نہیں پہنچتی ہے تو آنیوا لی 22 تا ریخ کو بھا لکی میں اسی مطا لبہ کو لیکر بہت بڑا احتجاج منظم کیا جا ئیگا۔ اس مو قع پر روی پا ٹل کرنجی، شیو کمار لو کھنڈے، کے بی گنیش، با بو را ئو کرنچی، راجکمار، کے علا وہ دیگر مو جود تھے۔

TOPPOPULARRECENT