Tuesday , June 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ضلع محبوب نگر میں کانگریس امیدواروں کا قطعی اعلان

ضلع محبوب نگر میں کانگریس امیدواروں کا قطعی اعلان

محبوب نگر ۔8 اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) برسراقتدار کانگریس نے ضلع کے 2 لوک سبھا اور اسمبلی کی 14 نشستوں کیلئے آج امیدواروں کی قطعی فہرست کا اعلان کردیا ہے۔ اس طرح ایک ہفتہ سے پارٹی حلقوں میں جاری تجسس ختم ہوگیا ہے۔ ضلع میں 8 نوجوان چہروں کو امیدوار بنایا گیا جبکہ 2 حلقوں میں موجودہ ایم ایل ایز کو برقرار رکھا گیا ہے۔ 3حلقوں میں ایس سی امی

محبوب نگر ۔8 اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) برسراقتدار کانگریس نے ضلع کے 2 لوک سبھا اور اسمبلی کی 14 نشستوں کیلئے آج امیدواروں کی قطعی فہرست کا اعلان کردیا ہے۔ اس طرح ایک ہفتہ سے پارٹی حلقوں میں جاری تجسس ختم ہوگیا ہے۔ ضلع میں 8 نوجوان چہروں کو امیدوار بنایا گیا جبکہ 2 حلقوں میں موجودہ ایم ایل ایز کو برقرار رکھا گیا ہے۔ 3حلقوں میں ایس سی امیدوار، 2 میں بی سی امیدوار، 8 میں او سی امیدوار اور ایک حلقہ میں اقلیتی طبقہ کے امیدوار کو میدان میں اتارا گیا ہے۔ نامزدگیوں کے ادخال کی آخری تاریخ سے دو دن قبل ڈی کے ارونا زیادہ تر اپنے حامی امیدواروں کو ٹکٹ دلانے میں کامیاب ہوئی ہیں۔ سابق ایم پی محبوب نگر وٹھل راؤ کو کوڑنگل سے امیدوار بنایا گیا۔ ٹی جے اے سی کو ضلع میں ٹکٹ نہ دینے پر دلبرداشتہ جے اے سی نے حلقہ اسمبلی محبوب نگر سے اپنے صدر راجندر ریڈی کو بحیثیت آزاد امیدوار ٹھہرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ بڑی تگ ودو کے بعد حلقہ اسمبلی محبوب نگر کی نشست اقلیتی طبقہ کیلئے مختص کرتے ہوئے یہاں سے عبیداللہ کوتوال صدر ضلع کانگریس کو امیدوار بنایا گیا ہے

جبکہ شادنگر سے موجودہ ایم ایل اے پرتاب ریڈی اور گدوال سے ڈی کے ارونا کو برقرار رکھا گیا ہے۔ حلقہ اسمبلی ناگرکرنول سے کے دامودھر ریڈی سابق زیڈ پی چیرمین، ونپرتی سے ڈاکٹر جی چناریڈی، جڑچرلہ سے ڈاکٹر ملو روی، اچم پیٹ سے ومشی کرشنا، مکتھل سے چٹم رام موہن ریڈی، یوتھ کانگریس کوٹہ سے یوتھ کانگریس صدر ومشی چندر ریڈی کو کلواکرتی سے، عالمپور (محفوظ) سے سمپت کمار کو ٹکٹ دیا گیا کیونکہ موجودہ ایم ایل اے ابراہام نے ٹی ڈی پی میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔ حال ہی میں ٹی آر ایس پولیٹ بیورو ممبر سید ابراہیم نے ٹی آر ایس سے سرینواس گوڑ کو امیدوار بنائے جانے کے خلاف کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی تھی اور کانگریس کے ٹکٹ کے خواہشمند ہے لیکن ڈی سی سی نے قرارداد منظور کرتے ہوئے حال میں پارٹی میں شامل ہونے والوں کو ٹکٹ نہ دینے کا مطالبہ کیا تھا۔ نارائن پیٹ کے کانگریس امیدوار کی حیثیت سے وی کرشنا جوکہ جویلری تاجر ہیں، پہلی بار موقع دیا گیا ہے۔ حلقہ کولاپور سے اے آئی سی سی کے سکریٹری ڈاکٹر جی چناریڈی کے حامی وی ہرشا وردھن ریڈی کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔ تلگودیشم بی جے پی مفاہمت کے بعد بھی تاحال سیاسی منظر دھندلا ہوتا نظر آرہا ہے۔ پرچہ نامزدگیوں کے ادخال کے آخری تاریخ کے بعد ہی صورتحال واضح ہوگی کہ میدان میں کون کون ہیں اور کس سے کس کا مقابلہ ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT