Sunday , August 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ضلع نرمل کے سیاسی اُفق پر تین نئے چہروں کی ہلچل

ضلع نرمل کے سیاسی اُفق پر تین نئے چہروں کی ہلچل

پرکاش راتھوڑ‘ راماراؤ پٹیل اور ڈاکٹر اے سورنا ریڈی کی عوامی مقبولیت میں مسلسل اضافہ

نرمل 12؍ نومبر (جلیل ازہر کی رپورٹ) نو مولود ضلع نرمل کے سیاسی افق پر تین نئے چہروں کی سیاسی میدان میں کافی ہلچل دیکھی جا رہی ہے یہ الگ بات ہے کہ ابھی انتخابات کے لئے وقت درکار ہے تاہم عام آدمی انتخابات کابڑی بے چینی سے منتظر ہے رائے دہندوں کو قبل از وقت انتخابات کی خواہش ہے تو دوسری طرف سیاسی جماعتوں میں بھی یہ قیاس آرائیاں کافی زور پکڑ رہی ہیں کہ آئندہ سال 2018 سے کسی بھی وقت انتخابات ممکن ہے ۔ جبکہ بڑے بڑے دانشوروں کا کہنا ہے کہ ہندوستان کے سیاسی مستقبل کا فیصلہ جاریہ سال 18 ؍ ڈسمبر کو گجرات کے انتخابی نتائج کی شکل میں سامنے آئیگا ۔ متحدہ ضلع عادل آباد کی لوک سبھا نشست کے لئے موجودہ انکم ٹیکس آفیسر حیدرآباد اس وقت برسرخدمت ہے لوک سبھا عادل آباد سے انتخابات لڑنے کی تیاری میں سرگرم ہوگئے ۔ جبکہ ان کی عوامی خدمات کا تسلسل کافی دنوں سے جاری ہے ۔ بے سہارا غریب عوام بلا لحاظ مذہب و ملت فلاحی ‘ سماجی‘ تعلیمی خدمات کے ذریعہ عوام میں اپنی ایک انوکھی پہچان رکھنے والے پرکاش راتھوڑ جس سے ملاقات کے بعد کوئی یقین نہیں کرسکتا کہ اتنے بڑے عہدہ پر فائز مسٹر پرکاش راتھوڑ میں اتنی سادگی ملنساری ان کا حسن سلوک یقیناً ان کا یہ کردار سیاسی میدان میں ان کی کامیابی کی ضمانت دے گا ۔ جبکہ ان کی اپنی جانب سے کسی سیاسی جماعت کی وابستگی کا کسی کو علم نہیں ہے لیکن ان کی مقبولیت کے تناظر میں یہ کہا جاسکتا ہے کہ مسٹر پرکاش راتھوڑ کی عوامی مقبولیت کو دیکھتے ہوئے سیاسی جماعتوں کی توجہ ان کی طرف دیکھائی دیتی ہے ۔ اس کے لئے پرکاش راتھوڑ قبائیلی ہیں اور ایک متحدہ ضلع عادل آباد کی نشست قبائیلی زمرہ کے لئے مختص ہے ۔ حلقہ اسمبلی مدھول سے راماراؤ پٹیل نے تاریخی ‘ فلاحی خدمات کے ذریعہ اپنے حلقہ کے تمام طبقات میں ایک مثالی شخصیت بن کر ابھرے ہیں ہرکسی کے دکھ درد میں شریک ہوتے ہوئے بے سہارا لوگوں کی مالی مدد ‘ تعلیمی خدمات کے ذریعہ انہوں نے بہت جلد اپنے آپ کو سیاسی قائدین کی فہرست میں شامل کرلیا بلکہ چھ ماہ قبل ڈگ وجئے سنگھ کے دورہ عادل آباد کے موقع پر اپنے حامیوں کے ساتھ کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی اور بہت کم وقت میں ایک طاقتور کانگریسی قائد کہلانے لگے ۔ پارٹی حلقوں کا کہنا ہے کہ عام انتخابات راماراؤ پٹیل حلقہ مدہول سے کانگریس امیدوار ہوں گے ۔ اس طرح پر حلقہ اسمبلی نرمل میں ایک خاتون معروف ڈاکٹر اے سورنا ریڈی جو آنجہانی اے بھیم ریڈی کی دختر ہیں انہوں نے بھی اپنی فلاحی خدمات کو کافی حد تک بہتر کر دیا تاہم ابھی کسی سیاسی جماعت سے منسلک نہیں ہیں لیکن کہا جا رہا ہے کہ وہ عام انتخابات میں حلقہ اسمبلی نرمل سے انتخاب لڑنے کی تیاری کر رہی ہیں۔ ریاست کے حالات اور سیاسی سرگرمیوں کو دیکھتے ہوئے یہ اندازہ ہو رہا ہے کہ قائدین کے ساتھ ساتھ عوام بھی انتخابات کی منتظر ہے ۔ تاہم اس مرتبہ کانگریس کے حوصلے کافی بلند نظر آ رہے ہیں ہرطرف ایک ہی چرچہ ہے کہ گجرات کے انتخابات ملک کی سیاسی جماعتوں کے مقدر کا فیصلہ کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT