Sunday , June 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ضلع نظام آباد میں بغیر چوکیدار کے ریلوے گیٹس

ضلع نظام آباد میں بغیر چوکیدار کے ریلوے گیٹس

ماسائی پیٹ حادثہ کے پیش نظر ریلوے نظام کو چوکس ہونے کی ضرورت

ماسائی پیٹ حادثہ کے پیش نظر ریلوے نظام کو چوکس ہونے کی ضرورت
نظام آباد۔ 25 جولائی ۔ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع نظام آباد میں بغیرواچمین کے لیول کراسنگ ریلوے گیٹوں کی تعداد جملہ 12ہے بغیر واچمین کے لیول کراسنگ ریلوے گیٹوں کی وجہ سے کئی حادثات پیش آئے ہیں جس پر کئی افراد پٹریوں کو عبور کرتے ہوئے ہلاک ہوگئے تو جانوروں کی تعداد بھی قابل لحاظ ہے۔ کل ضلع میدک کے ماسائی پیٹ میں ہوئے واقعہ کے بعد عوام میں تشویش پائی جارہی ہے ، بغیر واچمین کے ریلوے کراسنگ گیٹوں پر مکمل گیٹ مختص کرنے اور واچمین کا تقرر کرنے کیلئے کئی مرتبہ نمائندگی کے باوجود بھی ریلوے عہدیداروں کی جانب سے کوئی اقدامات نہیں کئے گئے۔ ضلع نظام آباد کے سکندرآباد۔ نظام آباد کے درمیان ہر روز باسر، ناندیڑ، اورنگ آباد،ممبئی، شیرڈی، پورناایکسپریس کے علاوہ پاسنجر ٹرینوں کی آمد و رفت ہے اور وجئے واڑہ، وشاکھا پٹنم ، حیدرآباد، تروپتی کے علاوہ ہر دن نظام آباد سے 24 پاسنجر اور 18 ایکسپریس ٹرینوں کی آمد و رفت ہوتی ہے ۔ ضلع نظام آباد میں جملہ 32 ریلوے گیٹس ہے ان میں 20 گیٹوں پر واچمین کو مختص کیا گیا ہے بغیر واچمین کے 12 ریلوے کراسنگ گیٹ ہے ان میں بودھن تا نظام آباد 4 ریلوے کراسنگ اور نظام آباد سے بھکنور 8 ریلوے کراسنگ گیٹ ہے ۔ ان 12 گیٹوں پر واچمین نہ ہونے کی وجہ سے کئی مرتبہ حادثات پیش آئے ہیں۔ ریلوے عہدیدار ہر روز ریلوے کراسنگ گیٹوں پر سے گذرنے والے افراد کی تعداد کو دیکھتے ہوئے ریلوے گیٹ پر واچمین مختص کرنے کا ارادہ تو ظاہر کیا لیکن ابھی تک عملی جامہ نہیں پہنایا۔ براڈ گیج کی تکمیل کے بعد ضلع میں ٹرینوں کی آمد و رفت میں زبردست اضافہ ہوااور کئی مرتبہ بغیر واچمین کے ریلوے گیٹوں کو عبور کرتے ہوئے انسانوں کے علاوہ جانور بھی موت کے گھاٹ اُتر گئے۔ ضلع مستقر سے قریب واقع بشیر فارم ،ایڑپلی اسٹیشن ،جالم، ایم ایس سی فارم کے درمیان سے پوچارام موضع کے قریب بغیر واچمین کے گیٹ واقع ہے۔نظام آباد بھکنور کے درمیان 8 ریلوے کراسنگوں میں نظام آباد، ڈچپلی کے درمیان آرے پلی اور ڈچپلی سرنا پلی کے درمیان 2، کاماریڈی تلمڈلا کے درمیان 2، تلمڈلا بھکنور کے درمیان 2بغیر واچمین کے گیٹس ہے ۔ گذشتہ4 سال قبل نظام آباد کے قریب واقع جالم ریلوے کراسنگ گیٹ پر ماروتی کار ٹرین کی زد میں آگئی تھی اور کارمیں سوار 2 افراد برسرموقع ہلاک ہوگئے ۔ آرے پلی کے قریب ہوئے واقعہ میں کئی جانور ہلاک ہوگئے تھے ۔ ضلع نظام آباد میں کئی حادثات پیش آئے ہیں۔ نوی پیٹ میں 3سال قبل 3افراد ،سداشیو نگر منڈل کے اڈلور یلاریڈی میں 4ماہ قبل ایک خاتون ٹرین کی زد میں آکر ہلاک ہوگئی تھی۔ ضلع میں ہوئے واقعات پر عوام کی جانب سے تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے تو کل ضلع میدک کے ماسائی پیٹ میں ہوئے واقعہ کے بعد خوف کا ماحول پیدا ہوگیااور جنگی خطوط پر بغیر واچمین گیٹوں پر مکمل گیٹ اور واچمین کے تقررکا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ کل ہوئے واقعہ کے بعد ناندیڑ۔حیدرآباد کے درمیان ٹرینوں کی آمد و رفت میں 8 گھنٹے تاخیر ہوئی تو چند گاڑیوں کو رد کیا گیا ۔ بودھن۔کاچی گوڑہ ریل کو معطل کردیا گیا اور دیگر ٹرین 4تا 5 گھنٹے تاخیر سے چل رہی ہے۔ کل ہوئے واقعہ کے بعد عوام کی جانب سے فوری جنگی خطوط پر اقدامات کرتے ہوئے عوام کی جان و مال کا تحفظ کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ ریلوے عہدیدار اس مسئلہ پر خاموش تماشائی رہنے کی صورت میں احتجاج بلند ہونے کے امکانات ہیں۔

TOPPOPULARRECENT