Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ضلع ورنگل میں چیف منسٹر کے ہاتھوں گراما جیوتی پروگرام کا آغاز

ضلع ورنگل میں چیف منسٹر کے ہاتھوں گراما جیوتی پروگرام کا آغاز

لوک سبھا حلقہ ورنگل کے ضمنی انتخاب کی انتخابی مہم کا عملاًآغاز ، بہت جلد اعلامیہ کی اجرائی متوقع
حیدرآباد ۔ 17 ۔ اگست (سیاست  نیوز) ورنگل لوک سبھا حلقہ کے ضمنی چناؤ کے سلسلہ میں بہت جلد الیکشن کمیشن سے اعلامیہ کی اجرائی کا امکان ہے ۔ تمام سیاسی جماعتوں نے اس حلقہ کے ضمنی چناؤ پر اپنی توجہ مرکوز کردی ہے۔ الیکشن کمیشن سے جلد اعلامیہ کی اجرائی کی اطلاع پر چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ورنگل کا دو روزہ دورہ مقرر کیا جس کا آج سے آغاز ہوگیا۔ گرام جیوتی پروگرام کا چیف منسٹر نے ورنگل ضلع میں افتتاح کیا۔ اس طرح چیف منسٹر اپنے دورہ کے ذریعہ پارٹی کی انتخابی مہم کا عملاً آغاز کرچکے ہیں۔ انہوں نے ورنگل میں وزراء اور ضلع کے عوامی نمائندوں اور قائدین کو ہدایت دی ہے کہ ابھی سے ضمنی انتخابات کیلئے تیار ہوجائیں۔ ٹی آر ایس اس حلقہ سے کامیابی کیلئے اپنی ساری طاقت جھونک دے گی۔ چیف منسٹر خود پارٹی کی انتخابی مہم میں حصہ لیں گے ۔ تاہم ٹی آر ایس امیدوار کے انتخاب کے مسئلہ پر تعطل برقرار ہے۔ اس حلقہ کیلئے کئی سینئر قائدین نے اپنی دعویداری پیش کی ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری کو انتخابی مہم کی مکمل ذمہ داری دیئے جانے کا امکان ہے۔ بتایا جاتاہے کہ چیف منسٹر نے امیدوار کے انتخاب کے سلسلہ میں بعض دیگر پارٹیوں کے قائدین سے بھی بات چیت کی ہے۔ کانگریس اور تلگو دیشم سے تعلق رکھنے والے بعض قائدین نے ٹی آر ایس میں شمولیت کی مشروط پیشکش کی ہے۔ تاہم پارٹی میں اس مسئلہ پر اختلاف رائے کو دیکھتے ہوئے چیف منسٹر دیگر جماعتوں کے قائدین کی شمولیت یا پھر انہیں ٹکٹ دینے کیلئے تیار نہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ سابق صدر پردیش کانگریس اور ایک سابق مرکزی وزیر نے کے سی آر کو پیشکش کی کہ اگر انہیں ورنگل لوک سبھا حلقہ کا امیدوار بنایا جائے تو وہ ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرسکتے ہیں۔ ورنگل ضلع کے عوامی نمائندے کسی بیرونی شخص کو پارٹی ٹکٹ دیئے جانے کے سخت خلاف ہیں۔ اسی دوران کانگریس اور تلگو دیشم نے بھی ورنگل لوک سبھا حلقہ کے چناؤ پر اپنی توجہ مرکوز کردی ہے۔ گزشتہ 15 ماہ کے دوران ٹی آر ایس حکومت کی کارکردگی اور وعدوں کی عدم تکمیل کے موضوع پر اپوزیشن جماعتیں عوامی تائید حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔ کانگریس کے علاوہ ٹی آر ایس اور بی جے پی اتحاد کے قائدین اندرونی طور پر عوام سے ملاقاتیں کر رہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ عوام میں پائی جانے والی ناراضگی اور ٹی آر ایس قائدین کے داخلی اختلافات سے پارٹی کے امکانات پر اثر پڑسکتا ہے۔ سابق ڈپٹی چیف منسٹر ڈاکٹر راجیا جنہیں حال ہی میں اچانک وزارت سے برطرف کردیا گیا۔ وہ لوک سبھا حلقہ ورنگل کی امیدواری کے اہم دعویدار ہیں۔ واضح رہے کہ کڈیم سری ہری کو ریاستی کابینہ میں شامل کرنے اور قانون ساز کونسل میں منتخب کئے جانے کے بعد انہوں نے لوک سبھا کی رکنیت سے استعفیٰ دیدیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT