Tuesday , December 12 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ضلع کے ترقیاتی کاموں پر اجلاس کا انعقاد

ضلع کے ترقیاتی کاموں پر اجلاس کا انعقاد

کونسل کے اپوزیشن لیڈر محمد علی شبیر اور ریاستی وزیر پی سرینواس میں بحث و تکرار
نظام آباد:20؍ ڈسمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)پرانہیتا چیوڑلہ آبی اسکیم کی تبدیلی پر قانون ساز کونسل کے اپوزیشن لیڈر محمد علی شبیر سخت اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے رویہ کی وجہ سے کاماریڈی، یلاریڈی کی عوام کو آبی سہولتوں سے محروم ہونا پڑرہا ہے ۔ محمد علی شبیر کے اعتراض پر وزیر زراعت پوچارام سرینواس ریڈی اس کا جواب دینے کی کوشش کرنے پر دونوں کے درمیان زبردست بحث و تکرار چلتی رہی۔ کل ضلع ترقیاتی کاموں پر کل پرگتی بھون میں ایک اجلاس منعقد ہوا۔ اس اجلاس میں قانون ساز کونسل کے اپوزیشن لیڈر محمد علی شبیر نے شرکت کی ۔ پرانہیتا چیوڑلہ ڈیزائن کی تبدیلی پر مرحلہ نمبر 22 کی تبدیلی سے کاماریڈی، یلاریڈی کی عوام کو آبی سہولتوں سے محروم ہونا پڑرہا ہے۔ جس پر وزیر زراعت پوچارام سرینواس ریڈی نے مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ پرانہیتا چیوڑلہ کے مرحلہ نمبر 20,21 جوں کا توں برقرار رکھا جارہا ہے اور لیکن 22 میں تبدیلی عمل میں لائی گئی ہے جس پر محمد علی شبیر نے ری ڈیزائن کے بارے میں سوالات کرتے ہوئے کہا کہ کالیشورم سے کسی بھی صورت میں پانی نہیں لایا جاسکتا اور یہاں سے کاماریڈی کو پانی کس طرح آئیگا۔ کالیشورم سے کاماریڈی، یلاریڈی کنالس میں پانی پہنچایا جائیگا۔ سوال کرنے پر وزیر زراعت پوچارام سرینواس ریڈی نے کالیشورم سے نظام ساگر کو، نظام ساگر سے کاماریڈی کو پانی پہنچایا جائیگا۔ جواب دینے پر دونوں کے درمیان بحث چلتی رہی اور سوال کا جواب نہ ملنے پر شبیر علی نے ناراضگی ظاہر کی اور ڈبل بیڈ روم کے تحت 500 سے زائد مکانات کاماریڈی اور یلاریڈی کیلئے علیحدہ علیحدہ مختص کرنے کا مطالبہ کیا۔ بعدازاں محمد علی شبیر نے کانگریس بھون میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ٹی آرایس حکومت عوام کو صرف گمراہ کررہی ہے۔ چیف منسٹر دن میں ایک بات اور رات میں ایک بات کرتے ہوئے عوام کو گمراہ کررہے ہیں۔ 19 ماہ کا عرصہ گذرنے کے باوجود بھی ایک بھی پراجکٹ کا کام شروع نہیں کیا گیااور 600 کروڑ روپئے کے خرچ کرتے ہوئے پرانہیتا چیوڑلہ اسکیم کو روبہ عمل میں لایا گیا تھا اس سلسلہ میں کل جماعتی اجلاس 21؍ ڈسمبر کے روز کاماریڈی میں طلب کیا جارہا ہے اور اس مسئلہ پر لائحہ عمل کو ترتیب دیتے ہوئے مرحلہ نمبر 22 کو جوں کا توں برقرار رکھنے کیلئے لائحہ عمل کو ترتیب دیتے ہوئے جدوجہد کا آغاز کیا جائیگاتاکہ کاماریڈی اور یلاریڈی کی عوام کو آبی سہولتیں فراہم ہوسکے۔

TOPPOPULARRECENT