Saturday , June 23 2018
Home / کھیل کی خبریں / طاقتور ٹیموںہندوستان اور آسٹریلیامیںآج دلچسپ ٹکراؤ متوقع

طاقتور ٹیموںہندوستان اور آسٹریلیامیںآج دلچسپ ٹکراؤ متوقع

ملبورن۔17جنوری ( سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی ونڈے ورلڈ کپ 2015ء کے آغاز میں ایک ماہ سے بھی کم وقت رہ گیا ہے اور اس کی تیاری کی ضمن میں دفاعی چمپئنس ٹیم ہندوستان کیلئے رواں سہ رخی سیریز کافی اہمیت کی حامل ہے جیسا کہ وہ کل یہاں میزبان ٹیم کے خلاف اپنا پہلا مقابلہ کھیلے گی ۔ آسٹریلیا کے خلاف ٹسٹ سیریز میں 2-0 کی شکست کے بعد ورلڈ کپ سے قبل کھلاڑیوں

ملبورن۔17جنوری ( سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی ونڈے ورلڈ کپ 2015ء کے آغاز میں ایک ماہ سے بھی کم وقت رہ گیا ہے اور اس کی تیاری کی ضمن میں دفاعی چمپئنس ٹیم ہندوستان کیلئے رواں سہ رخی سیریز کافی اہمیت کی حامل ہے جیسا کہ وہ کل یہاں میزبان ٹیم کے خلاف اپنا پہلا مقابلہ کھیلے گی ۔ آسٹریلیا کے خلاف ٹسٹ سیریز میں 2-0 کی شکست کے بعد ورلڈ کپ سے قبل کھلاڑیوں کے حوصولوں کو بلند کرنے کیلئے سہ رخی سیریز میں کامیابی اہم ہے اور ساتھ ہی عالمی ایونٹ سے قبل اس سہ رخی سیریز کے دوران ہندوستانی ٹیم اپنے تمام تر تجربات کرنے کی خواہاں ہے کیونکہ ورلڈ کپ میں متوازن اور بہتر ٹیم کے ہمراہ خطاب کا دفاع کیا جاسکے ۔ ایڈیلیڈ میں پاکستان کے خلاف ورلڈ کپ کے افتتاحی مقابلے سے قبل ہندوستانی ٹیم کو اپنے کئی مسائل پر قابو پانا ہے جس میں اہم مسئلہ اوپنرس کا صحیح انتخاب اور ان کے مظاہرے ہیں کیونکہ شکھر دھون کی ٹاپ آرڈر میں ناکامی اور ٹیم کو بہتر شروعات فراہم کرنے میں ناکامی کا راست اثر مڈلآرڈر کے بیٹسمینوں پر پڑرہا ہے ۔ اوپنرس کا مسئلہ ہندوستان کیلئے کافی سنگین نوعیت کا ہوچکا ہے اور اس کا اندازہ اس حقیقت سے لگایا جاسکتا ہے کہ آسٹریلیا کے خلاف کل یہاں کھیلے جانے والے افتتاحی مقابلے کیلئے اوپننگ جوڑی کا ہنوز اعلان نہیں کیا گیا ہے ۔

شکھر دھون کے ساتھ روہت شرما یا پھر اجنکیا راہنے کو اننگز کا آغاز کا موقع فراہم کیا جاسکتا ہے تو پھر کسی نئی جوڑی کو آزمایا جائے گا ‘ اس کا بھی ہنوز علم نہ ہوسکا ۔ اوپنرس کے انتخاب میں مہیندر سنگھ دھونی کی ٹیم کو اس لئے مسائل ہیں کیونکہ دھون کے مظاہرے ناقص ہیں اور اگر دھون کے ساتھ روہت کو اننگز کے آغاز کا موقع فراہم کیا جاتا ہے تو راہنے کو نمبر 4 پر بیٹنگ کرنا پڑے گا اور وہ اس مقام پر خودکو آرام دہ محسوس نہیں کرتے اور یہ بھی ہوسکتا ہے کہ سری لنکا کے خلاف ویراٹ کوہلی نے اپنے پسندیدہ مقام کی بجائے نمبر 4پر بیٹنگ کی تھی ۔ کسی بھی بیٹسمین کے کس مقام پر بیٹنگ کرنے کا ہے اس کا فیصلہ نہ ہونے کی وجہ نیٹ پریکٹس کے دوران بھی دکھائی دی اور قومی کھلاڑیوں نے بے ترتیب بیٹنگ کی ہے جس میں امباٹی رائیڈو اور اسٹورٹ بنی بھی شامل تھے ۔ بولنگ شعبہ میں روی چندرن اشون اور اکشر پٹیل کی شمولیت یقینی دکھائی دے رہی ہے کیونکہ رویندر جڈیجہ مکمل فٹنس حاصل کرنے سے ابھی کافی دور ہیں ۔ فاسٹ بولنگ شعبہ میں ایشانت شرماپہلے ہی افتتاحی مقابلے سے باہر ہوچکے ہیں ۔جبکہ سڈنی ٹسٹ میں پہلی مرتبہ آسٹریلیا کے دورہ میں ایکشن میں نظر آئے بھونیشور کمار کی فٹنس پر ہنوز سوالیہ نشان ہے اور چونکہ موہت شرما اور دھول کلکرنی ورلڈ کپ میں محفوظ بولروں کے طور پر منتخب کئے گئے ہیں ۔

ان میں کسی بولر کو منتخب کیا جاسکتا ہے ‘ دوسری جانب آسٹریلیائی ٹیم جس نے اپنے افتتاحی مقابلے میں انگلش ٹیم کو بہ آسانی شکست دے کر بونس نشان کے ساتھ کامیابی حاصل ہے لہذا ٹسٹ سیریز اور پھر سہ رخی سیریز کے شاندار آغاز سے میزبان کھلاڑیوں کے حوصلے کافی بلند ہیں ۔ علاوہ ازیں اوپنر ڈیوڈ وارنر نے پہلے مقابلے میں سنچری اسکور کی ہے ۔ اس جارحانہ اوپنر کے علاوہ ارون فنچ‘ شین واٹسن‘ اسٹیواسمتھ اور آل راؤنڈر جیمس فالکنر کے خلاف مہمان بولروں کو سخت چیلنج درپیش رہے گا ۔ علاوہ ازیں کپتان جارج بیلی فی الحال بہتر فام میں نہیں ہیں تاہم دورہ ہند پر انہوں نے کافی شاندار مظاہرے کئے تھے ۔ بولنگ شعبے میں میچل اسٹارک اور پیٹ کمنس کی تیز روفتار گیندیں ہندوستانی بیٹنگ شعبہکیلئے مشکلات پیدا کرسکتی ہیں ۔ ہندوستانی ٹیم میں دھونی کی بین الاقوامی کرکٹ میں واپسی توجہ کا مرکز ہے ۔ مقابلہ کا آغاز ہندوستانی وقت کے مطابق 8.50 بجے صبح ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT