طالب علم کے ساتھ مارپیٹ کے الزام میں ٹیچر پر مقدمہ درج

اشوک نگر،7دسمبر(سیاست ڈاٹ کام )مدھیہ پردیش کے اشوک نگر ضلع کے منگاولی قصبے میں واقع سینٹرل اسکول میں ایک ٹیچر کے 13طالب علم کے ساتھ وحشیانہ طریقے سے مارپیٹ کرنے کا معاملہ سامنے آیا ہے ۔طالب علم کی شکایت پر ملزم ٹیچر کے خلاف معاملہ درج کرلیا گیا ہے ۔پولیس ذرائع کے مطابق آٹھویں جماعت میں پڑھنے والے شبھم یادو نے اپنی شکایت میں بتایا کہ کل دوپہر اسکول کی چھٹی ہونے کے بعد وہ روزانہ کی طرح اپنی کلاس میں بیگ میں کتابیں رکھ رہا تھا۔تبھی اچانک جغرافیہ پڑھانے والے ٹیچر سنجے آئے اور بغیر کسی بات کے گندی گالیاں دینے لگے ۔بچے نے گالی دینے کی وجہ پوچھی تو ٹیچر نے دھکا دے کا اسے زمین پر گرا دیا اور لات گھوسوں سے مارپیٹ کی۔اس واقعہ میں بچے کے کان پر بھی چوٹ آئی اور اس نے کہا جب اسے ٹیچر ماررہے تھے تو اس وقت اس کی کلاس کے کئی بچے وہاں موجود تھے ۔طالب علم نے جب اس کی اطلاع گھروالوں کو دی تو انہوں نے ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے پرنسیپل سے اس معاملے کی شکایت کی لیکن پرنسیپل نے جب اس پر کوئی کارروائی نہیں کی تو انہوں نے بچے کو پولیس تھانے لے جاکر ٹیچر کی شکایت کی۔دوسری جانب سینٹرل اسکول کے پرنسیپل کیبی بھارت کا کہنا ہے کہ جب انہیں اطلاع ملی تو انہوں نے بچے کے گھروالوں اور مارپیٹ کرنے والے ٹیچر کو بلاکر سمجھایا تھا اور دنوں میں تال میل بنانے کی کوشش کی تھی۔پرنسیپل کا کہنا ہے کہ بعد میں طالب علم نے معاملہ پولیس درج کرایا اس کی انہیں کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ٹیچر سنجے سینٹرل اسکول میں پرمنینٹ ٹیچر ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT